உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بھوپال سمیت مدھیہ پردیش کی مساجد میں نہیں ادا کی گئی جمعہ کی نماز، علمائے کرام کی اپیل کا ہوا اثر

    بھوپال سمیت مدھیہ پردیش کی مساجد میں نہیں ادا کی گئی جمعہ کی نماز

    بھوپال سمیت مدھیہ پردیش کی مساجد میں نہیں ادا کی گئی جمعہ کی نماز

    نماز جمعہ کو لےکرکل ہی بھوپال، اندور، اجین، گوالیار، جبل پوراوردوسرے شہروں کے شہر قاضی اور علمائے دین نے شریعت میں گجنائش کا حوالہ دیتے ہوئے اپیل کی تھی کہ مساجد میں بھیڑ جمع نہ کی جائے۔

    • Share this:
    بھوپال: کورونا وائرس کے بڑھتے خطرات اور لاک ڈاؤن کے سبب راجدھانی بھوپال سمیت مدھیہ پردیش کے سبھی اضلاع میں جمعہ کی نماز نہیں ادا کی گئی۔ مساجد کے شہر بھوپال میں بھی علمائے دین اور شہر قاضی کی اپیل پر مساجد کو قائم رکھنے کےلئے چار سے پانچ لوگوں نے نماز ادا کی اور بڑی تعداد میں فرزندان توحید نےگھروں میں ظہر کی نماز ادا کی۔ لاک ڈاؤن اور کورونا وائرس کے بڑھتے خطرات کے پیش مدھیہ پردیش میں یہ دوسرا جمعہ تھا جسے نہیں ادا کیاگیا۔
    نماز جمعہ کو لےکرکل ہی بھوپال، اندور، اجین، گوالیار، جبل پوراوردوسرے شہروں کے شہر قاضی اور علمائے دین نے شریعت میں گجنائش کا حوالہ دیتے ہوئے اپیل کی تھی کہ مساجد میں بھیڑ جمع نہ کی جائے۔ جو لوگ مساجد میں ہیں وہی اذان دینے اور مساجد میں نماز ادا کرنےکا کام کریں، باقی لوگ اپنے گھروں میں نمازکی ادائیگی کریں۔

    نماز جمعہ کو لےکرکل ہی شہرقاضی اور علمائے دین نے شریعت میں گجنائش کا حوالہ دیتے ہوئے اپیل کی تھی کہ مساجد میں بھیڑ جمع نہ کی جائے۔
    نماز جمعہ کو لےکرکل ہی شہرقاضی اور علمائے دین نے شریعت میں گجنائش کا حوالہ دیتے ہوئے اپیل کی تھی کہ مساجد میں بھیڑ جمع نہ کی جائے۔


    بھوپال شہر قاضی سید مشتاق علی ندوی کہتے ہیں کہ کورونا وائرس انسانی وجود کےلئے خطرہ بنا ہوا ہے اور اس وقت صرف ہندوستان ہی نہیں بلکہ دنیا کے بیشتر ممالک اس کی زد میں ہیں۔ ایسے میں ضروری ہےکہ محکمہ صحت کے احکام پر عمل کریں اوراجتماعی نماز کو وقت طور پر ادا کرنے سے گریز کریں۔ مساجدکو قائم رکھنےکےلئے چار سے پانچ لوگ مساجد میں جائیں اور احتیاط کے ساتھ نماز ادا کریں۔

    کورونا وائرس کو دیکھتے ہوئے پورے ملک میں 21 دنوں کا لاک ڈاون ہے۔
    کورونا وائرس کو دیکھتے ہوئے پورے ملک میں 21 دنوں کا لاک ڈاون ہے۔


    وہیں اندور شہر قاضی ڈاکٹر عشرت علی کہتے ہیں کہ یہ وقت اللہ کو راضی کرنےکا ہے تاکہ اس وبائی بیماری سے نجات مل سکے۔ مسجدوں میں بھیڑ نہ کی جائے۔ کچھ لوگ مساجد میں نماز ادا کریں تاکہ مساجد قائم رہ سکیں اور باقی لوگ گھروں میں نماز ادا کریں۔ یہ وقت خود کو بچانے اور انسانیت کو بچانےکا ہے۔
    مدھیہ پردیش میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ جاری ہے۔ پورے صوبہ میں مجموعی طور پرکورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 127 ہو چکی ہے جبکہ صرف اندور میں مریضوں کی تعداد 96 ہے۔ دوسری جانب مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں بھی کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 9 ہو گئی ہے۔ کورونا وائرس کے مریضوں کی بڑھتی تعداد کے پیش نظرلاک ڈاؤن کو سخت کردیا گیا ہے۔وہیں سی ایم شیوراج سنگھ نے صوبہ میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے خطرات کو لےکر سھی مذاہب کے رہنماؤں سے بات کی اور اپنے اپنے سماج میں کورونا وائرس کو لےکربیداری پیدا کرنےکی بات کہی۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: