ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ کا بے تکا بیان ، خراب فصل سے نہیں ، بھوت پریت کی وجہ سے خود کشی کر رہے ہیں کسان

کانگریس کے ممبر اسمبلی شیلندر پٹیل نے سيهور ضلع میں کسانوں کی خودکشی کے حوالے سے سوال کیا۔سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ نے بتایا کہ گزشتہ تین سال میں ضلع میں 418 کسانوں نے خود کشی کی ہیں ۔

  • ETV
  • Last Updated: Jul 20, 2016 05:50 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ کا بے تکا بیان ، خراب فصل سے نہیں ، بھوت پریت کی وجہ سے خود کشی کر رہے ہیں کسان
کانگریس کے ممبر اسمبلی شیلندر پٹیل نے سيهور ضلع میں کسانوں کی خودکشی کے حوالے سے سوال کیا۔سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ نے بتایا کہ گزشتہ تین سال میں ضلع میں 418 کسانوں نے خود کشی کی ہیں ۔

بھوپال : مدھیہ پردیش اسمبلی کے مانسون اجلاس کے دوسرے دن کسانوں کی خودکشی کا معاملہ چھایا رہا۔ کانگریس ممبر اسمبلی کے کسانوں کی خود کشی سے وابستہ سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ بھوپندر سنگھ نے کہا کہ کسان فصل خراب ہونے کی وجہ سے نہیں بلکہ بھوت پریت کی وجہ سے خود کشی کر رہے ہیں۔

مانسون اجلاس کے دوسرے دن ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی کانگریس کے ممبر اسمبلی شیلندر پٹیل نے سيهور ضلع میں کسانوں کی خودکشی کے حوالے سے سوال کیا۔سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ نے بتایا کہ گزشتہ تین سال میں ضلع میں 418 کسانوں نے خود کشی کی ہیں ۔ تاہم انہوں نے کہا کہ فصل خراب ہونے کی وجہ سے کسی کسان نے خودکشی نہیں کی۔ کچھ معاملات میں کسانوں کی خود کشی کے پیچھے بھوت پریت کو وجہ بتایا گیا۔

وزیر داخلہ کے اس جواب کے بعد کانگریس کے ممبران اسمبلی نے ایوان میں ہنگامہ شروع کر دیا۔ہنگامہ کے درمیان شیلندر پٹیل نے پوچھا کہ 'کیا حکومت بھوت پریت پر یقین رکھتی ہے ۔ کانگریسی لیڈروں نے الزام لگایا کہ کسانوں کی خود کشی جیسے مسئلے پر بھی حکومت سنجیدہ نہیں ہے۔

First published: Jul 20, 2016 05:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading