உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شوہر بنا لڑکی، بیوی کے کہنے پر کیا Gender Change، پھر بولی تم کسی کام کے نہیں رہے، اب طلاق دو

     اب بیوی شوہر کی جنس تبدیل کرنے کی بنیاد پر طلاق مانگ رہی ہے۔ وہ اپنے شوہر سے کہتی ہے- تم مجھے بچہ اور ازدواجی خوشی (sex) نہیں دے سکتے، یہ میرے کسی کام کے نہیں ہو…. جبکہ بیوی کے کہنے پرہی شوہر نے جینڈر تبدیل کروا تھا۔

    اب بیوی شوہر کی جنس تبدیل کرنے کی بنیاد پر طلاق مانگ رہی ہے۔ وہ اپنے شوہر سے کہتی ہے- تم مجھے بچہ اور ازدواجی خوشی (sex) نہیں دے سکتے، یہ میرے کسی کام کے نہیں ہو…. جبکہ بیوی کے کہنے پرہی شوہر نے جینڈر تبدیل کروا تھا۔

    اب بیوی شوہر کی جنس تبدیل کرنے کی بنیاد پر طلاق مانگ رہی ہے۔ وہ اپنے شوہر سے کہتی ہے- تم مجھے بچہ اور ازدواجی خوشی (sex) نہیں دے سکتے، یہ میرے کسی کام کے نہیں ہو…. جبکہ بیوی کے کہنے پرہی شوہر نے جینڈر تبدیل کروا تھا۔

    • Share this:
      بھوپال کے ایک سینئر وکیل اور کونسلر کا ایک چونکا دینے والا معاملہ سامنے آیا ہے۔ یہ کہانی ایک جوڑے کی ہے۔ دونوں کو کالج کے زمانے میں پیار ہو گیا، بھاگ کر شادی کر لی۔ دونوں دہلی میں اچھی نوکری کرنے لگے، زندگی خوش گوار تھی۔ خیر، یہاں کہانی میں موڑ آتا ہے۔ ایک دن بیوی نے مذاق میں اپنے شوہر سے جنس تبدیل (change the gender) کرنے کو کہا۔ اس پر شوہر بھی راضی ہو گیا۔

      بیوی نے اسے اپنے کپڑے لڑکی کی طرح پہنائے اور بازار لے جانے لگی۔ ایک سال کے علاج کے بعد جب شوہر مکمل لڑکی بن گیا تو یہی تبدیلی دونوں کے درمیان درار کی وجہ بن گئی۔ بات طلاق تک آ گئی ہے۔ اب بیوی شوہر کی جنس تبدیل کرنے کی بنیاد پر طلاق مانگ رہی ہے۔ وہ اپنے شوہر سے کہتی ہے- تم مجھے بچہ اور ازدواجی خوشی (sex) نہیں دے سکتے، یہ میرے کسی کام کے نہیں ہو…. جبکہ بیوی کے کہنے پرہی شوہر نے جینڈر تبدیل کروا تھا۔

      بھوپال کی کونسلر سریتا راجانی 8 ماہ سے جوڑے کی کونسلنگ کر رہی ہیں۔ شخص کے والدین نے بھی ان سے رابطہ کیا اور بیٹے کے خاندان کو ٹوٹنے سے بچانے کو کہا۔ کونسلر سریتا نے بتایا کہ مذاق میں اٹھائے گئے ایک قدم کی وجہ
      سے دو خاندانوں کی زندگیاں تباہی کے دہانے پر ہیں۔

      بغیر کسی ہارمونل علامات (without any hormonal symptoms) کے جینڈر تبدیلی کروانا ایک خوش حال خاندان کو زندگی بھر کا درد دے گیا ہے۔ اب سمجھانے کے بعد بھی بیوی سمجھنے کو تیار نہیں اور نہ ہی شوہر کے ساتھ رہنا چاہتی ہے۔ جبکہ شوہر اس کے ساتھ رہنا چاہتا ہے۔

      اچھی نوکری، خوش حال خاندان، پھر ایک فیصلے نے بدل دی زندگی ۔

      ساحل (نام بدلا ہوا ہے) اور مانسی (نام بدلا ہوا ہے) کالج کے زمانے سے ہی پیار میں تھے۔ گریجویشن کے بعد دونوں نے گھر والوں کو بتائے بغیر آریہ سماج مندر میں شادی کر لی تھی۔ پروفیشنل کورس کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد دونوں نے دہلی میں کام کرنا شروع کیا۔ جب دونوں اچھی طرح سیٹل ہو گئے تو بعد میں دونوں کے اہل خانہ بھی راضی ہوگئے۔

      ساحل کے آفس میں ایک لڑکی تھی جس سے اس کی اچھی دوستی تھی۔ کافی وقت بعد اسے معلوم ہوا کہ یہ لڑکی پہلے لڑکا تھی۔ یہ لڑکی جینڈر بدل کر لڑکی بن گئی ہے۔ اس نے بیوی مانسی کو جنس تبدیل کرنے والی لڑکی سے بھی ملوایا اور بتایا کہ اسے دیکھ کر کوئی نہیں کہہ سکتا کہ یہ لڑکا رہاہوگی۔ آہستہ آہستہ اس لڑکی کا ساحل مانسی کے گھر آنا جانا ہونے لگا اور اچھی دوست بن گئی۔ میاں بیوی دونوں کے درمیان اکثر اس کی باتیں ہونے لگیں۔

      ساحل ہمیشہ مانسی کا بہت خیال رکھتا، اسے فون کرتا اور گھر آنے میں دیر ہونے پر پوچھتا۔ مانسی نے ایک دن ساحل سے کہا کہ تم ایک عورت کی طرح میرا خیال رکھتے ہو، بہت سارے سوال کرتے رہتے ہو، تمہیں اپنا جینڈ بھی بدل لینا چاہیے۔ بیوی نے ساحل سے کہا کہ تم بھی ایسا کرو اور دیکھو، کیا احساس ہوتا  ہے، کیسا لگتا ہے۔

      دونوں مذاق میں کہی گئی باتوں کے لیے تیار ہو گئے اور جنس تبدیل کرنے والے ڈاکٹر کے پاس پہنچ گئے۔ بیوی خود اپنے شوہر کے ساتھ ڈاکٹر کے پاس گئی۔ بغیر کسی کاؤنسلنگ یا گائیڈ کے ڈاکٹر نے ساحل کا جینڈر تبدیل کرنے کا عمل شروع کر دیا۔

      جینڈر کی تبدیلی کا عمل ایک سال تک جاری رہا۔ جب علاج شروع کیا گیا تو ساحل کی عمر 25 سال اور مانسی کی عمر 23-24 کے درمیان ہوگی۔ ابتدائی عمل میں ہارمونل تبدیلیوں سے متعلق دوائیں ڈاکٹر نے چند ماہ تک دی تھیں۔ یہ تھیریپی چند ماہ تک جاری رہی اور آخر کارسرجری  کا عمل کیا گیا۔

      ہارمونل ادویات لینے کے بعد ساحل نے اپنے جسم میں کچھ تبدیلیاں محسوس کرنا شروع کر دیں۔ میاں بیوی مذاق میں جنس کی تبدیلی کے عمل سے لطف اندوز ہونے لگے۔ مانسی نے اپنے شوہر کو اپنے کپڑے پہنانے شروع کر دیے اور خود بھی اسے ایک عورت کی طرح تیار کرنے لگی ۔ وہ اسے اپنے ساتھ بازار لے جاتی اور دوسرے سے کہتی کہ وہ میری دوست ہے۔ کوئی پہچان بھی نہیں سکتا کہ یہ اس کا شوہر ساحل ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: