ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

مدھیہ پردیش: اردو کی ترسیل اور نئی نسل کی ذہن سازی کا ہوگا کام

مدھیہ پردیش اردو اکادمی کو خدا خدا کر کےنصرت مہدی کی شکل میں نیا ڈائریکٹرمل گیا ہے۔نصرت مہدی اس سے قبل بھی دو بار مدھیہ پردیش اردو اکادمی کے سکریٹری کے عہدے پر اپنی خدمات انجام دے چکی ہیں ۔دوہزار اٹھارہ میں نصرت مہدی کا اردو اکادمی کے سکریٹری کے عہدے سے محکمہ مذہبی امور میں تبادلہ کیاگیا۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش: اردو کی ترسیل اور نئی نسل کی ذہن سازی کا ہوگا کام
مدھیہ پردیش اردو اکادمی کو خدا خدا کر کےنصرت مہدی کی شکل میں نیا ڈائریکٹرمل گیا ہے۔نصرت مہدی اس سے قبل بھی دو بار مدھیہ پردیش اردو اکادمی کے سکریٹری کے عہدے پر اپنی خدمات انجام دے چکی ہیں ۔دوہزار اٹھارہ میں نصرت مہدی کا اردو اکادمی کے سکریٹری کے عہدے سے محکمہ مذہبی امور میں تبادلہ کیاگیا۔

مدھیہ پردیش اردو اکادمی کو خدا خدا کر کےنصرت مہدی کی شکل میں نیا ڈائریکٹرمل گیا ہے۔نصرت مہدی اس سے قبل بھی دو بار مدھیہ پردیش اردو اکادمی کے سکریٹری کے عہدے پر اپنی خدمات انجام دے چکی ہیں ۔دوہزار اٹھارہ میں نصرت مہدی کا اردو اکادمی کے سکریٹری کے عہدے سے محکمہ مذہبی امور میں تبادلہ کیاگیا۔ اس کے بعد ایم پی میں اردو اکادمی میں ڈاکٹر حسام الدین فاروقی کی سکریٹری کے عہدے پر تقرری ہوئی ۔ حسام الدین فاروقی سے اہل اردو کو بہت سی امیدیں تھیں مگر وہ اپنی انا اور اقربا پروری سے باہر نہیں نکل سکے۔ مارچ دوہزار بیس جب ریاست میں اقتدار کی منتقلی ہوئی اور کمل ناتھ حکومت کے جانے کے بعد شیوراج سنگھ مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی  بنے تو اردو اکادمی میں بھی تبدیلی عمل میں آئی ۔ اکادمی کے چیرمین ڈاکٹر عزیز قریشی کے ساتھ اکادمی کے سکریٹری ڈاکٹر حسام الدین فاروقی کو بھی حکومت نے برطرف کردیا۔اکادمی کی کارگزارڈپٹی ڈائریکٹر وندنا پاندے نے نہ صرف پروگرام کے انعقاد کا سلسلہ منقطع کیا بلکہ سابق چیرمین ڈاکٹر عزیز قریشی کی کمیٹی کے ذریعہ اردو کے ادیبوں اور شاعروں کو جو ایوارڈ کا اعلان کیاگیاتھا اس پر بھی روک لگا دی گئی ۔

کورونا قہر میں مدھیہ پردیش کے دوسرے ثقافتی ادروں میں آن لائن لٹریری پروگرام کا انعقاد کثرت سے کیاگیا مگر اردو اکادمی یہاں بھی تنگ نظری کا شکار رہی ۔جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ اکادمی کا بجٹ بھی محدود ہوگیا۔

اردو اکادمی کی نئی ڈائریکٹر نصرت مہدی کہتی ہیں کہ اردو کے نئے قاری پیدا کرنا اور اردو زبان کی ترسیل کے ساتھ اردو زبان کے نئے فنکاروں کو مواقع فراہم کرنا ترجیحات میں شامل ہیں ۔ تلاش جوہر کے تحت پروگرام کے انعقاد کاسلسلہ شروع کیاجائے گا ساتھ ہی اردو کے نئے قاری ٖییدا کرنے کے لئے ریاست کے سبھی اضلاع میں اردو کی کلاسوں کااہتمام ہوگا ۔


اردو اکادمی کی نئی ڈائریکٹر نے ریاست میں اردو کی ترویج و اشاعت کا خاکہ تو تیارکیا ہے مگر یہ کام ان کے لئے کسی جوئے شیر لانے سے کم نہیں ہے ۔ کیونکہ سابقہ کارگزار ڈائریکٹر کے ذریعہ گزشتہ سال اردو کے نام پرنہ تو تقریب کا انعقاد کیاگیا اور نہ ہی ایوارڈ تقسیم کئے گئےجس کے سبب اکادمی کا بجٹ لیپس ہوگیا۔ اب اکادمی کی نئی ڈائریکٹر بجٹ کو لانے اور پروگرام کے انعقاد کے ساتھ ارد و شاعروں و ادیبوں کو ایوارڈ دینے میں کہاں تک کامیاب ہوتی ہیں یہ آنے والا وقت بتائے گا۔

Published by: Sana Naeem
First published: Feb 06, 2021 10:54 PM IST