உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جمعیت علما نے مدھیہ پردیش میں مکمل شراب بندی کا کیا مطالبہ، ریاست گیر تحریک چلانے کا اعلان

    جمعیت علما نے مدھیہ پردیش میں مکمل شراب بندی کا کیا مطالبہ، ریاست گیر تحریک چلانے کا اعلان

    مدھیہ پردیش کے وزیرداخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ غیر قانونی شراب کا کاروبار کرنے والوں کو کسی قیمت پرنہیں بخشا جائے گا ۔ حکومت شراب کا غیر قانونی کاروبار کرنے والوں کے خلاف سخت قانون بناتے ہوئے عمرقید کی سزا دینے پر کام کر رہی ہے ۔

    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش میں شراب کی غیر قانونی فروخت کرنے والوں کے خلاف حکومت نے سخت قانون بنا کر عمر قید کی سزا دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ حکومت کے موقف پر عمل کرتے ہوئے آج شیوراج کابینہ میٹنگ میں شراب کا غیر قانونی کاروبار کرنے والوں کو عمر قید کی سزا دینے کی تجویز پر غور کیا گیا ۔ وہیں مدھیہ پردیش جمعیت علما نے سماجی برائی کا خاتمہ کرنے کے لئے شیوراج سنگھ حکومت کے اقدام کو ناکافی بتاتے ہوئے مدھیہ پردیش میں شراب پر مکمل پابندی کا مطالبہ کیا ہے ۔

    واضح رہے کہ مدھیہ پردیش میں شراب کا غیرقانونی کاروبار کرنے والوں کے خلاف دس سال کی سزا کا انتظام قانون میں پہلے سے موجود ہے ، لیکن حالیہ تین مہینوں میں ریاست میں زہریلی شراب پینے سے جس طرح  مختلف شہروں میں تین درجن لوگوں کی موت ہوئی ہے ، اس کو دیکھتے ہوئے اب حکومت نے شراب کا غیر قانونی کاروبار کرنے والوں کے خلاف سخت قانون بناتے ہوئے عمر قید کی سزا دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔

    مدھیہ پردیش کے وزیرداخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ غیر قانونی شراب کا کاروبار کرنے والوں کو کسی قیمت پرنہیں بخشا جائے گا ۔ حکومت  شراب کا غیر قانونی کاروبار کرنے والوں کے خلاف سخت قانون بناتے ہوئے عمرقید کی سزا دینے پر کام کر رہی ہے ۔

    وہیں مدھیہ پردیش جمعیت علما کے صدر حاجی محمد ہارون کہتے ہیں کہ سبھی لوگ جانتے ہیں کہ شراب ام الخبائث ہے ۔ سبھی سماجی برائیوں کی جڑ شراب سے ملتی ہے ۔ حکومت نے غیر قانونی طور پر شراب کا کاروبار کرنے والوں کے خلاف پہلے بھی قانون بنایا تھا ۔ پہلے بھی ایک دو نہیں بلکہ دس سال کی سزا کا قانون میں انتظام تھا ، مگر شراب کا غیر قانونی کاروبار رکا نہیں ، بلکہ بڑھتا جا رہا ہے ۔ حکومت  جب تک مکمل طور پر شراب کی فروخت پر پابندی نہیں لگائے گی ، سماجی برائیوں کا خاتمہ نہیں ہوگا اور زہریلی شراب کا کاروبار جاری رہے گا ۔ گزشتہ تین چار مہینوں میں کتنے لوگ زہریلی شراب پینے سے مر گئے ہیں ۔ اگر حکومت نے شراب پر مکمل پابندی لگائی ہوتی تو ان کے گھر برباد نہیں ہوتے ۔

    انہوں نے کہا کہ حکومت کو اپنے مالی وسائل کے لئے شراب کو چھوڑ کر دوسرے متبادل پر غور کرنا چاہئے ۔ اگر حکومت ٹیکس میں اضافہ کرتی ہے اور شراب کو مکمل طور پر بند کرتی ہے ، تو ریاست کے سبھی شہری اس کا استقبال کریں گے ۔ جمعیت شراب پر مکمل پابندی کو لے کر ریاست گیر سطح پر تحریک چلائے گی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: