உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جھارکھنڈ : مدرسہ و سنسکرت اسکول اساتذہ کی پنشن پر فیصلہ جلد ، ہیمنت سورین کی یقین دہانی

    جھارکھنڈ : مدرسہ و سنسکرت اسکول اساتذہ کی پنشن پر فیصلہ جلد ، ہیمنت سورین کی یقین دہانی

    جھارکھنڈ : مدرسہ و سنسکرت اسکول اساتذہ کی پنشن پر فیصلہ جلد ، ہیمنت سورین کی یقین دہانی

    جھارکھنڈ کے وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین نے مدرسہ و سنسکرت اسکولوں کے اساتذہ کے وفد کو پینش کے فائدے فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ وزیر اعلیٰ سے ملاقات کے دوران وفد نے واضح کیا کہ سابقہ بی جے پی حکومت کے ذریعہ 186 مدارس ملحقہ اور 12 سنسکرت اسکولوں کے سبکدوش ملازمین کو پینشن و گریچیوٹی دئے جانے کے تعلق سے فیصلے کو رد کر دیا گیا تھا ۔

    • Share this:
    رانچی : جھارکھنڈ کے وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین نے مدرسہ و سنسکرت اسکولوں کے اساتذہ کے وفد کو پینش کے فائدے فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ وزیر اعلیٰ سے ملاقات کے دوران وفد نے واضح کیا کہ سابقہ بی جے پی حکومت کے ذریعہ 186 مدارس ملحقہ اور 12 سنسکرت اسکولوں کے سبکدوش ملازمین کو پینشن و گریچیوٹی دئے جانے کے تعلق سے فیصلے کو رد کر دیا گیا تھا ۔ وفد نے وزیر اعلیٰ سے اس متعلق سے جاری کئے گئے نوٹیفکیشن کو بحال کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے پنشن نہ ملنے کے سبب مذکورہ تعلیم گاہوں کے ریٹائر شدہ اساتذہ و ملازمین کو لاحق شدید پریشانیوں سے انہیں واقف کرایا۔

    حامد غازی نے وزیر اعلیٰ کو بتایا کہ آپ کے عہد حکومت میں مدرسہ وسنسکرت اسکولوں کے اساتذہ وملازمین کو بھی پنشن دینے کا نوٹیفکیشن جاری ہوا تھا۔ جس کی وجہ سے ریاست بھر کے مدرسہ وسنسکرت اسکولوں کے اساتذہ میں خوشی کی لہر دوڑ گئی تھی۔ لیکن یہ خوشی اس وقت غم و مایوسی میں تبدیل ہو گئی جب گزشتہ رگھوور سرکار نے اس نوٹیفکیشن کو غیر قانونی طور پر رد کر دیا اور جب پھر سے ریاست میں آپ کی سرکار کا قیام عمل میں آیا ہے تو ایک بار پھر اساتذہ میں خوشی کا ماحول ہے اور ایک بار پھر وہ پرامید نظر آرہے ہیں۔

    وزیر اعلیٰ نے وفد کی باتوں کو غور اور سنجیدگی کے ساتھ سنا اور کہا کہ گزشتہ کل ہی اس موضوع پر ہم نے بات کی ہے۔ سرکار مدرسہ و سنسکرت اسکولوں کے اساتذہ کے پنشن سے متعلق معاملے میں مثبت انداز میں غوروفکر کر رہی ہے۔ واضح رہے کہ مذکورہ وفد نے دو روز قبل اس موضوع پر وزیر دیہی ترقیات عالمگیر عالم سے تفصیلی بات چیت کی تھی اور انہیں میمورنڈم دیا تھا۔ وزیر عالمگیر عالم نے بھی وفد کو یقین دہانی کرائی تھی اور اس سلسلے میں ہر ممکن جدوجہد کرنے کا اظہار کیا تھا۔

    وفد میں محمد حماد قاسمی، شرف الدین رشیدی، شہاب الدین، شاہجہاں، وحید الزماں، ماسٹر جرجیس، جتیندر پانڈے، سریندر جھا، بدرالدجیٰ وغیرہ شامل تھے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: