ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

جھارکھنڈ میں نکسلیوں نے ڈھایا ظلم، عدالت لگاکر ایک کو پیٹ پیٹ کر مارا، دوسرے کے اقرار جرم کا ویڈیو کیا وائرل، علاقہ میں خوف کا ماحول

تازہ معاملہ صدر تھانہ علاقہ کا ہے جہاں سے جے جے ایم پی نکسلیوں نے دیر شب دو نوجوان کو ان کے گھروں سے اٹھاکر لے گئے۔ ان نوجوانوں پر ٥ جولائی کو ایک خاتون کے قتل کا الزام لگایا گیا۔ ان نکسلیوں نے عوامی عدالت لگاکر کلٹو اراؤں نامی شخص کو خاتون کے قتل کا مجرم قرار دیتے ہوئے پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا جبکہ دوسرے نوجوان محمد امتیاز کے اقبال جرم کا ویڈیو وائرل کر دیا۔

  • Share this:
جھارکھنڈ میں نکسلیوں نے ڈھایا ظلم،  عدالت لگاکر ایک کو پیٹ پیٹ کر مارا، دوسرے کے اقرار جرم کا ویڈیو کیا وائرل، علاقہ میں خوف کا ماحول
تازہ معاملہ صدر تھانہ علاقہ کا ہے جہاں سے جے جے ایم پی نکسلیوں نے دیر شب دو نوجوان کو ان کے گھروں سے اٹھاکر لے گئے۔ ان نوجوانوں پر ٥ جولائی کو ایک خاتون کے قتل کا الزام لگایا گیا۔ ان نکسلیوں نے عوامی عدالت لگاکر کلٹو اراؤں نامی شخص کو خاتون کے قتل کا مجرم قرار دیتے ہوئے پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا جبکہ دوسرے نوجوان محمد امتیاز کے اقبال جرم کا ویڈیو وائرل کر دیا۔

جھارکھنڈ کے لاتیہار ضلع میں جے جے ایم پی نامی نکسلی تنظیم کا ظلم مسلسل جاری ہے ۔ اس تنظیم سے جڑے لوگوں کے ذریعے ظلم ڈھاے جا رہے ہیں۔ پولیس کی کارروائی کے باوجود نکسلی تنظیم اپنے منصوبے میں کامیاب ہوتے جارہے ہیں۔ تازہ معاملہ صدر تھانہ علاقہ کا ہے جہاں سے جے جے ایم پی نکسلیوں نے دیر شب دو نوجوان کو ان کے گھروں سے اٹھاکر لے گئے۔ ان نوجوانوں پر ٥ جولائی کو ایک خاتون کے قتل کا الزام لگایا گیا۔ ان نکسلیوں نے عوامی عدالت لگاکر کلٹو اراؤں نامی شخص کو خاتون کے قتل کا مجرم قرار دیتے ہوئے پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا جبکہ دوسرے نوجوان محمد امتیاز کے اقبال جرم کا ویڈیو وائرل کر دیا۔ حالانکہ پولیس نے امتیاز کو نکسلیوں کے چنگل سے چھڑا لیا اور علاج کے لیے صدر اسپتال میں داخل کرا دیا۔

مقتول کلٹو اراؤں کے اہل خانہ نے اس معاملہ پر کہا کہ ہتھیار سے لیس جے جے ایم پی کے نکسلی رات کی تاریکی میں انکے گھر پر پہنچے اور کلٹو اراؤں کو اٹھا کر اپنے ساتھ لے گئے اور جنگل میں لے جا کر پیٹ پیٹ کر کلٹو اراؤں کا قتل کر مورمو نامی مقام کی جانب جانے والے شاہراہ پر لاش کو چھوڑ کر فرار ہو گئے ۔ بعد میں پولیس کو خبر ملنے پر موقع واردات پر پہنچی۔ پولیس نے لاش کو اپنے قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کے مقصد سے اسپتال میں داخل کرایا پھر نکسلیوں کے تعاقب میں روانہ ہو گئی۔


وہیں دوسری جانب امتیاز کے اہل خانہ نے بتایا کہ مسلح افراد ان کے گھر دیر رات آیے اور امتیاز کو اپنے ساتھ لے گئے۔ صبح تک امتیاز کے متعلق کوئی خبر نہیں ملی ۔ بعد میں پولیس تھانہ کے ذریعہ انہیں خبر دی گئی کہ امتیاز انکے ساتھ ہے اور اسپتال میں امتیاز کا علاج کرا رہی ہی ۔ پولیس نے کہا کہ آپ لوگ اسپتال میں آکر امتیاز سے ملاقات کر لیں ۔ فی الحال اس معاملے پر پولیس واضح طور پر بیان دینے سے کترا رہی ہے ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ وہ نکسلیوں کے خلاف مسلسل چھاپہ ماری کر رہی ہے ۔


علاقہ میں خوف کا ماحول
اس واقعہ کے بعد لاتیہار اور لوہردگا اضلاع کے سرحدی علاقوں میں خوف کا ماحول ہے ۔ سرحدی علاقوں کے تقریباً آدھہ درجن قصبوں میں جے جے ایم پی نکسلیوں کے ذریعہ خوف و ہراس کا ماحول قائم کیا گیا ہے ۔ حالانکہ حادثے کے بعد اے ایس پی وپول پانڈے اور ڈی ایس پی وریندر رام کی قیادت میں پولیس چھاپہ ماری مہم میں لگی ہے باوجود اسکے علاقہ میں سناٹا پسرا ہوا ہے ۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jul 22, 2020 06:35 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading