ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

جھارکھنڈ: کزن بہنوں نے مندر میں رچائی شادی، کہا، ہم جنس پرست جوڑے کہلانے میں کیسی شرم

جھارکھنڈ کے کوڈرما میں شیو کے مندر میں شادی رچانے کے بعد دو ہم جنس کزن بہنیں اپنی شناخت چھپا رہی ہیں۔ ہم جنس پرست جوڑے کو اب قانون سے تحفظ کی توقع ہے ۔ ہم جنس پرست جوڑوں کا کہنا ہے کہ ہم جنس پرست تعلقات کی وجہ سے انہیں کوئی شرمندگی نہیں ہے۔

  • Share this:
جھارکھنڈ: کزن بہنوں نے مندر میں رچائی شادی، کہا، ہم جنس پرست جوڑے کہلانے میں کیسی شرم
جھارکھنڈ: کزن بہنوں نے مندر میں رچائی شادی، کہا، ہم جنس پرست جوڑے کہلانے میں کیسی شرم

رانچی۔ جھارکھنڈ کے کوڈرما میں شیو کے مندر میں شادی رچانے کے بعد دو ہم جنس کزن بہنیں اپنی شناخت چھپا رہی ہیں۔ ہم جنس پرست جوڑے کو اب قانون سے تحفظ کی توقع ہے ۔ ہم جنس پرست جوڑوں کا کہنا ہے کہ ہم جنس پرست تعلقات کی وجہ سے انہیں کوئی شرمندگی نہیں ہے۔


کہا جاتا ہے کہ جب محبت بلند ہو جائے تو ذات ، مذہب ، امتیاز ، سب کچھ ختم ہوجاتا ہے۔ اسی طرح کا معاملہ جھارکھنڈ کے کوڈرما میں بھی منظرعام پر آیا ہے ، جہاں دو کزن بہنیں ایک مندر میں شادی کرکے اپنے خاندان سے علیحدہ زندگی گزار رہی ہیں ۔ ہم جنس پرست جوڑے میں ایک کی عمر 24 سال اور دوسرے کی عمر 20 سال ہے ، ایک نے گریجویشن مکمل کیا ہے وہیں دوسرے نے انٹرمیڈیٹ مکمل کیا ہے۔


تاہم آج دونوں بہنیں کنبہ اور معاشرے کے خوف سے الگ ہوکر چھپ رہی ہیں۔ ہم جنس پرست جوڑے کہتے ہیں کہ اب ان کی ایک دوسرے کی حمایت ہے اور آخری سانس تک ایک دوسرے کے ساتھ رہیں گے۔ ہم جنس پرست جوڑے نے کہا کہ جو بھی مشکلات آئیں  وہ ہمیشہ ساتھ رہیں گے۔


رشتے میں دونوں چچیری بہنیں کوڈرما کے جھمری تلیہ کی رہنے والی ہیں۔ دونوں کے گھر آس پاس ہیں۔ دونوں نے گزشتہ ماہ ٨ نومبر کو شیو مندر میں شادی کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ہم جنس پرست جوڑے کہلانے میں انہیں کوئی شرم محسوس نہیں ہوتی۔ انہوں نے کہا کہ وہ دونوں اچھی طرح جانتے ہیں کہ ہم جنس پرست تعلقات کو قانونی تحفظ حاصل ہے۔ یہ دونوں  نیویارک کی انجلی چکرورتی اور صوفی سینڈل لاسن کے جوڑے سے متاثر ہوکر اپنے پیار کو سچ کرنے کے لئے پرعزم ہیں۔

دوسری جانب قانون کے ماہرین کا کہنا ہے کہ ہم جنس پرستی کو غیر فطری جرم قرار دینے والے سیکشن میں ترمیم کرکے سپریم کورٹ نے ہم جنس پرست تعلقات کو تسلیم کیا ہے۔ ایڈوکیٹ شیلندر کمار نے کہا کہ اگر ہم جنس پرستوں کے جوڑے کو کوئی پریشانی ہو تو وہ ضلع انتظامیہ کی سرپرستی میں جاسکتے ہیں۔

کوڈرما ضلع کا یہ پہلا واقعہ ہے جس میں ہم جنس پرست تعلقات میں شامل ہیں۔ تاہم جب گھر والوں کو ان دونوں کزن کے مابین ہم جنس پرست تعلقات کے بارے میں پتہ چلا تو اہل خانہ کی جانب سے اس کی وضاحت کرنے کی کوشش کی گئی ، جس کے بعد گھر والوں کے دباؤ کی وجہ سے دونوں بہنیں کنبے سے دور رہنے لگیں۔ حالانکہ دونوں کے اہل خانہ انہیں سمجھانے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن دونوں اپنی اس محبت کو انجام تک پہنچانے کے عزم کا اظہار کر رہی ہیں۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Dec 07, 2020 12:20 PM IST