ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

بھوپال: لاک ڈاؤن میں عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ، ضروری اشیا کے لئے لوگ نکلے سڑکوں پر

مدھیہ پردیش میں کورونا وائرس کے مریضوں کی مجموعی تعداد بڑھ کر چھ سو پندرہ ہو گئی ہے۔ صوبہ میں کورونا وائرس کے اب تک چوالیس مریضوں کی موت بھی ہو چکی ہے۔

  • Share this:
بھوپال: لاک ڈاؤن میں عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ، ضروری اشیا کے لئے لوگ نکلے سڑکوں پر
بھوپال: لاک ڈاؤن میں عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ، ضروری اشیا کے لئے لوگ نکلے سڑکوں پر

بھوپال۔ مدھیہ پردیش میں کورونا وائرس کی بڑھتی تعداد کو دیکھتے ہوئے جہاں لاک ڈاؤن کو جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے وہیں ضروری اشیا کی قلت کے چلتے عوام کے صبر کا پیمانہ بھی لبریز ہوگیا ہے۔ صوبہ کے باون اضلاع میں سے چوبیس اضلاع میں کورونا وائرس دستک دے چکا ہے۔ مدھیہ پردیش میں کورونا وائرس کے مریضوں کی مجموعی تعداد بڑھ کر چھ سو پندرہ ہو گئی ہے۔ صوبہ میں کورونا وائرس کے اب تک چوالیس مریضوں کی موت بھی ہو چکی ہے۔


صوبہ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی بڑھتی تعداد سے حکومت اور انتظامیہ کے افسران فکر مند ہیں ۔ سی ایم شیوراج سنگھ نے میٹنگ کے بعد جہاں لاک ڈاؤن کو جاری رکھنے کا واضح اشارہ دیدیا ہے وہیں انتظامیہ کی سطح پر لاک ڈاؤن میں عوام کو ضروری اشیا فراہم کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی جا رہی ہے۔  حکومت کے وعدے اور انتظامیہ کے دعوے سے الگ ہٹ کر بات کریں تو راجدھانی بھوپال میں سب کچھ ٹھیک نہیں ہے۔ اگر لاک ڈاؤن میں سب کچھ ٹھیک ہوتا اور حکومت کے وعدے و انتظامیہ کے دعوے میں صداقت ہوتی تو بھوپال کے ۸۰ فٹ روڈ، نو بہار کالونی ،گرم گڈھا اور دوسری کالونیوں میں سیکڑوں کی تعداد میں لوگ ضروری اشیا کے مطالبے کو لیکر سڑک پر نہیں آتے ۔ ان علاقوں سے سڑکوں پر نکلنے والی عوام کی شکایت ہے کہ جس دن سے لاک ڈاؤن ہوا ہے کسی نے بھی ان کی خبر نہیں لی ہے ۔ضلع کلکٹر کی ہدایت پر ایس ڈی ایم کو مقامی لوگوں نے ضروری اشیا کے سامان کی فہرست تیار کر کے دیدی تھی لیکن اب تک اس کا بھی کچھ پتہ نہیں ہے۔


صوبہ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی بڑھتی تعداد سے حکومت اور انتظامیہ کے افسران فکر مند ہیں ۔


بھوپال ضلع کلکٹر ترون پتھوڑے کا کہنا ہے کہ شہر کو چار زورن میں تقسیم کر کے ضروری اشیا کو فراہم کرنے کا کام تیزی سے کیا جا رہا ہے ۔اگر کسی علاقے میں اب تک یہ نہیں پہنچا ہے تو اس کے بارے میں معلومات کرکے اس پر فورا کارروائی کی جائے گی اور وہاں کے لوگوں کو فوری راحت دیتے ہوئے انہیں ضروری سامان پہنچایا جا ئے گا۔ جبکہ بھوپال کے آئی جی ارشاد ولی کہتے ہیں کہ ہم عوام کی مشکل اور درد کو سمجھ رہے ہیں ۔ پورے حالات پر گہری نظر رکھی جا رہی ہے۔ شہر کے عوام جن کا لاک ڈاؤن میں بھر پور تعاون مل رہا ہے ان سے اپیل ہے کہ ہم سب کی محنت پر پانی نہ پھیریں اور ان کی جو بھی ضرورت ہوگی وہ جلد سے جلد پوری کی جائے گی ۔ عوام سے اپیل ہے کہ وہ گھروں سے باہر نہ نکلیں اور قانون و انتظام کو بنائے رکھنے میں انتظامیہ کا ساتھ دیں۔

یہ بات تو سبھی جانتے ہیں کہ لاک ڈاؤن کے چلتے عوام کو مشکلات کا سامنا ہے لیکن ایسے میں اگر ضروری اشیا کی تلاش میں لوگ بڑی تعداد میں گھروں سے باہر نکلیں گے تو نہ صرف سوشل ڈسٹنسنگ کی لازمیت ختم ہو گی بلکہ اس سے کورونا وائرس کے خلاف جاری جنگ کو ختم کرنے کی حکومت اور اتنظامیہ کی جو کوشش ہے اسے بھی نقصان پہنچے گا ۔
First published: Apr 13, 2020 04:04 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading