بھوپال میں وزیر اعلی نکاح یوجنا کے تحت اجتماعی طور پر 172جوڑوں کا ہوا نکاح

وزیر اعلی نکاح یوجنا سماج کے پسماندہ لوگوں کے لئے وقت کی بڑی ضرورت

وزیر اعلی نکاح یوجنا سماج کے پسماندہ لوگوں کے لئے وقت کی بڑی ضرورت

Mukhyamantri Kanya Vivah Yojana: سماج کے پسماندہ طبقہ کے لوگوں کے ساتھ مسلم دانشوروں نے بھی نکاح اسکیم کو وقت کی بڑی ضرورت سے تعبیر کرتے ہوئے وزیر اعلی شیوراج سنگھ کے اقدام کی ستائش کی۔

  • News18 Urdu
  • Last Updated :
  • Bhopal, India
  • Share this:
وزیر اعلی نکاح یوجنا کا مدھیہ پردیش کے مسلم سماج کے ذریعہ بڑے پیمانے پر خیر مقدم کیا جارہا ہے ۔ وزیر اعلی نکاح یوجنا کے تحت بھوپال سینٹرل لائبریری گراؤنڈ میں اجتماعی نکاح تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ اجتماعی نکاح میں وزیر اعلی نکاح اسکیم کے تحت دولہا دلہن کا نہ صرف نکاح پڑھایا گیا بلکہ رشتہ ازدواج سے منسلک ہونے والے نئے جوڑوں کو وزیر اعلی نکاح یوجنا کے تحت تحائف بھی پیش کئے گئے۔ سماج کے پسماندہ طبقہ کے لوگوں کے ساتھ مسلم دانشوروں نے بھی نکاح اسکیم کو وقت کی بڑی ضرورت سے تعبیر کرتے ہوئے وزیر اعلی شیوراج سنگھ کے اقدام کی ستائش کی۔
عالم دین اور نکاح یوجنا میں نکاح پڑھانے والے حافظ محمد جنید نے نیوز 18 اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اسلام میں شادی کو بہت آسان طریقے سے سادگی سے کرنے کے لئے بتایا گیا ہے لیکن دوسری سماج کی طرح مسلم سماج میں بھی جہیز کی لعنت آگئی ہے۔ امیر انسان تو اپنے بیٹوں اور بیٹیوں کی شادی کہیں بھی کر لیتا ہے اور بڑے بجٹ سے شادی کرتا ہے لیکن غریب انسان کہاں جائے ۔ وزیر اعلی نکاح یوجنا ایسے میں سماج کے ان غریب لوگوں کے لوگوں کے لئے امید کی کرن ہے جن کی بیٹیوں بڑی ہوگئی ہیں اور وہ چاہتے ہوئے بھی اپنی نور نظر کو رشتہ ازدواج میں منسلک کرنے سے قاصر ہیں۔

وزیر اعلی نکاح اسکیم کے تحت ایک ساتھ ایک سو بہتر 172 جوڑوں کا نکاح پڑھایا گیا ہے اور اسکیم کے تحت انہیں تحائف بھی پیش کئے گئے ہیں ۔ اسی کے ساتھ میں یہ بھی بتانا چاہتا ہوں کہ ابھی دو روز قبل ہی وزیر اعلی شیوراج سنگھ نے نکاح یوجنا کے تحت رقم کو بچیوں کے اکاؤنٹ میں ٹرانسفر کرنے کا حکام دیا ہے ۔ اس اقدام کی جتنی بھی ستائش کی جائے وہ کم ہے۔

وزیر اعلی نکاح یوجنا کے تحت رشتہ ازدواج میں منسلک ہونے والے گلفام خان نے نیوز ایٹین اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک بہترین یوجنا ہے اور اس کا نفاذ مستقل طور پر کیا جانا چاہئے جبکہ وزیر اعلی نکاح یوجنا کے تحت نکاح کرنے والی انشا کہتی ہیں کہ میرے والدین میری شادی کو لیکر کئی سال سے پریشان تھے۔ ان کی پریشانی کا ذکر لفظوں میں نہیں کیا جاسکتا ہے۔ وزیر اعلی نکاح اسکیم کے تحت میرا نکاح اس شخص سے ہوا ہے جس کو میرے والدین نے میرے لئے پسند کیا ہے۔ میری خوشیوں کو بتانے کے لئے میری آنکھوں کے ہی نہیں میری ماں کے آنسو کافی ہیں۔

 

مافیا عتیق احمد کی بیوی شائستہ پروین ہوں گی بے پردہ، پولیس جارے کرے گی پوسٹر

امرت پال سنگھ سندھو کا انکاؤنٹر کر سکتی ہے پولیس، وارث پنجاب دے کے وکیل کا دعویٰ
مزمل کہتی ہیں کہ غریب ہونا سماج کے لئے سب سے بڑا عذاب ہوتا ہے ۔مجھے خوشی ہے کہ آج وزیر اعلی نکاح یوجنا سے میرے والدین کے سر سے بڑا بوجھ اتر گیا ہے ۔ میری شادی میں دعائیں دینے کے لئے ہزاروں ہاتھ اٹھ رہے ہیں۔ میں خوش نصیب ہوں کہ میرا نکاح اس مقام پر پڑھایا گیا ہے جہاں ایک ساتھ ایک سو بہتر بہنیں رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئیں ہیں۔
Published by:Sana Naeem
First published: