اپنا ضلع منتخب کریں۔

    مدھیہ پردیش: اردو اساتذہ کی تقرری اور اردو طلبا کو کتابوں کی فراہمی کو لیکر تحریک رہے گی جاری: بزم ضیا

    مدھیہ پردیش: اردو اساتذہ کی تقرری اور اردو طلبا کو کتابوں کی فراہمی کو لیکر تحریک رہے گی جاری: بزم ضیا

    مدھیہ پردیش: اردو اساتذہ کی تقرری اور اردو طلبا کو کتابوں کی فراہمی کو لیکر تحریک رہے گی جاری: بزم ضیا

    Bhopal News: بزم ضیا کے صدر فرمان ضیائی نے نیوز18 اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم واضح کردینا چاہتے ہیں کہ ہم لوگ ریزرویشن کے خلاف نہیں ہیں بلکہ اس سسٹم کے خلاف ہیں جس کے سبب اہل اردو کو گزشتہ تین دہائیوں سے نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh | Bhopal
    • Share this:
    بھوپال : دو ہزار تیئس کا سال مدھیہ پردیش میں اردو والوں کے لئے ایسا ہی ہے جیسے صحرا میں بارش کی چند بوندیں پڑنے کے بعد حالات پیدا ہوتے ہیں۔ شیوراج سنگھ سرکار کے ذریعہ  انیس سال بعد کالج کی سطح پر انیس لیکچرار اور اسکول کی سطح پر ستر اردو اساتذہ کی تقرری کا نوٹیفکیشن توجاری کیا ہے، لیکن اس میں سے نصف سے زیادہ سیٹیں ایس سی ایس ٹی کے لئے ریزرو کردی گئی ہیں۔ اردو تنظیموں کے ذمہ داران کے ذریعہ گورنر ہاؤس میں نہ صرف اس میں اضافہ کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے، بلکہ نئی تعلیمی پالیسی کے مطابق عمل کرتے ہوئے روسٹر کو تبدیل کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

    بزم ضیا کے صدر فرمان ضیائی نے نیوز18 اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم واضح کردینا چاہتے ہیں کہ ہم لوگ ریزرویشن کے خلاف نہیں ہیں بلکہ اس سسٹم کے خلاف ہیں جس کے سبب اہل اردو کو گزشتہ تین دہائیوں سے نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ ضابطہ کے مطابق اگر تین بار کے نوٹیفکیشن میں ریزرو کیٹگری کے امیدوار نہیں آتے ہیں تو روسٹر کو تبدیل کیا جائے گا، لیکن حکومت کے ذریعہ روسٹر کو تبدیل نہیں کیا جا رہا ہے، جس کے سبب اردو طلبہ اور اساتذہ دونوں کا نقصان ہو رہا ہے۔

    انہوں نے مزید بتایا کہ حکومت کے ذریعہ انیس لیکچرار کی ویکنسی نکالی گئی ہے جس میں سے سولہ کو ایس سی ایس ٹی کے لئے مخصوص کردیا گیا ہے۔ اوبی سی اور جنرل کیٹگری کے جو اردو کے امیدوار ہیں وہ بتائیں کہا جائیں ۔ تو ہم نے راج بھون میں میمورنڈم دیکر گورنر صاحب سے مطالبہ کیا ہے کہ اس جانب توجہ کی جائے  اور اس میں اضافہ کرتے ہوئے روسٹر کو تبدیل کیا جائے ۔ جب تک اہل اردو کو اس کا حق نہیں ملتا ہے، ہماری تحریک جاری رہے گی ۔

    وہیں شکیل منصوری نے نیوز18 اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہ نیٹ کا امتحان پاس کرنے اور پی ایچ ڈی کرنے کےبعد بھی اوبی سی طلبہ کے لئے اردو میں کوئی جگہ نہیں ہے۔ حکومت کی جانب سے جو نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے، اس میں اردو کی سیٹوں کو صرف ایس سی ایس ٹی کے لئے مخصوص کیا گیا ہے۔

    یہ بھی پڑھئے: مدھیہ پردیش:ہندوستان کی تعمیر وترقی کی عبارت سے اردو صحافت کی روشن تاریخ کے اوراق ہیں مزین


    یہ بھی پڑھئے : مدھیہ پردیش : خواتین اہل قلم کے ذکر کے بغیر نہیں لکھی جا سکتی ہے اردو ادب کی تاریخ


    انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ یہ ہے کہ پچھلے تیس سالوں میں بہت بار حکومت کی جانب سے اردو اساتذہ کی تقرری کو لے کر نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے، لیکن اب تک ایک بار بھی اردو اساتذہ کی تقرری کے لئے ایک بھی ایس سی ایس ٹی امیدوار کی جانب سے درحواست نہیں دی گئی ہے ۔ اگر کسی ریزروکیٹگری سے لوگ نہیں آتے ہیں تو اس کا روسٹر تبدیل کیا جائے ۔ تاکہ دوسرے لوگوں کو موقع مل سکے۔

    جبکہ محمد واجد کا کہنا ہے کہ دوہزار دو کے بعد اب حکومت کے ذریعہ اردو لیکچرار کی تقرری کے لئے نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے۔ صوبہ میں پانچ سو بیس کالج ہیں اور یوجی سی گائیڈ لائن کے مطابق ہر کالج میں اردو اساتذہ کی تقرری ہونا چاہئے، مگر ایسا نہیں کیا جارہا ہے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ حکومت یوجی سی اور نئی تعلیم پالیسی کے مطابق اردو کے معاملات میں محبت کی نظر سے دیکھے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: