உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bhopal News: شیوراج حکومت میں ائمہ وموذنین تنخواہوں سے محروم

    Bhopal News: شیوراج حکومت میں ائمہ وموذنین تنخواہوں سے محروم

    Bhopal News: شیوراج حکومت میں ائمہ وموذنین تنخواہوں سے محروم

    Bhopal News: مدھیہ پردیش میں شیوراج سنگھ حکومت کے ذریعہ سب کا ساتھ سب کا وکاس کی باتیں تو بہت زور و شور سے کی جاتی ہیں، لیکن سب کا ساتھ اور سب کا وکاس میں اقلیتی طبقہ دور دور تک کہیں نظر نہیں آتا ہے ۔

    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش میں شیوراج سنگھ حکومت کے ذریعہ سب کا ساتھ سب کا وکاس کی باتیں تو بہت زور و شور سے کی جاتی ہیں، لیکن سب کا ساتھ اور سب کا وکاس میں اقلیتی طبقہ دور دور تک کہیں نظر نہیں آتا ہے ۔ اقلیتوں سے وابستہ جتنے بھی ادارے ہیں وہ سب حکومت کی عدم توجہی کے سبب نہ صرف بیمار ہیں بلکہ برسوں سے اقلیتی اداروں میں کسی کمیٹی اور سربراہ کی تقرری نہیں ہونے سے وہاں مسائل کا انبار لگا ہوا ہے۔ خود ائمہ وموذنین کئی ماہ سے تنخواہوں سے محروم ہیں ۔ عید پر مساجد کمیٹی کی جانب سے ائمہ وموذنین کو تنخواہیں جاری نہیں کی گئی تھیں ۔ مہنگائی کے اس دور میں ائمہ وموذنین کو کئی کئی ماہ تنخواہیں نہیں ملنے سے ان کی حالت نا گفتہ بہ ہوگئی ہے۔

    واضح رہے کہ مساجد کمیٹی کے زیر انتظام آنے والی مساجد کے ائمہ وموذنین کو نذرانہ ریاست بھوپال اور انڈین یونین کے بیچ ہوئے معاہدے کی روسے ادا کیا جاتا ہے ۔ حالانکہ  نواب بھوپال حمید اللہ خان اور انڈین یونین کے بیچ آزادی کے وقت ہوئے معاہدے میں ائمہ وموذنین کو نہ صرف وقت پر نذرانہ دینے کی بات کی گئی تھی بلکہ اس میں وقت وقت پر اضافہ کرنے کا معاہدہ بھی شامل تھا مگر اس مہنگائی کے زمانے میں ائمہ وموذنین کو تین سے پانچ ہزار کے بیچ ہی تنخواہیں بیشتر مساجد میں ادا کی جاتی ہیں ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: دھار کی مسجد کمال مولا کو بھوج شالہ بتا کر گیان واپی مسجد کی طرز پر سروے کرائے جانے کا مطالبہ


    مسجد نفیسہ کے موذن چودھری فہیم الدین کہتے ہیں کہ اب تو اس بات کو کہتے ہوئے بھی شرم آتی ہے کہ معمولی سی رقم کے لئے ہم لوگوں نے دفتر کے کتنے چکر لگائے ہیں ۔ چند ماہ قبل تین ماہ کی تنخواہ ادا کی گئی تھی اس کے بعد پھر معاملہ وہی ڈھاک کے تین پات ہی ہیں ۔ حکومت کو سوچنا چاہئے کہ ائمہ وموذن سماج کا مہذب طبقہ ہوتا ہے انہیں کم سے اتنا تو نذرانہ ادا کیا جائے جو کلکٹریٹ ریٹ کا ہوتا ہے ۔

    وہیں مسجد جوڈیشیل کے امام شمس الدین کہتے ہیں کہ اس سے بڑی بد نصیبی اور کیا ہوگی جو امام مساجد میں مقتدی کو وعظ فرماتا ہے، اسے اپنی معمولی تنخواہ کے لئے در در بھٹکنا پڑتا ہے ۔ مارچ سے ابھی تک تنخواہ جاری نہیں کی گئی ہے۔ عید کے موقعہ پر بھی تنخواہ جاری نہیں ہونے سے خوشیوں کا رنگ معدوم ہوگیا تھا ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: قرعہ میں نام آنے کے بعد بھی مدھیہ پردیش کے سو سے زیادہ عازمین نے نہیں جمع کئے پاسپورٹ، جانئے کیوں


    وہیں اس سلسلہ میں نیوز 18 اردو نے جب مساجد کمیٹی کے انچارج سکریٹری یاسر عرفات سے بات کی تو انہوں نے کہا کہ ائمہ وموذنین کے نذرانہ  کو لیکر محکمہ اقلیتی فلاح وبہبود کو بجٹ بناکر بھیجا گیا ہے، جیسے ہی گرانٹ جاری ہوگی، ائمہ وموذنین کو نذرانہ  جاری کردیا جائے گا ۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ ائمہ وموذنین کو نذرانہ کب سے جاری نہیں کیا گیا ہے، تو انہوں نے بتایا کہ مارچ سے محکمہ اقلیتی فلاح و بہبود نے گرانٹ جاری نہیں کی ہے، جس کے سبب یہ مشکلات سامنے آرہی ہیں ۔

    ائمہ وموذنین کے نذرانے کے مسائل اور ان کے حتمی حل کے لئے مسلم سماجی تنظیموں نے وزیر اقلیتی فلاح و بہبود و وزیر اعلی سے ملاقات کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزیر اعلی سے وقت ملتے ہی مسلم سماجی تنظیموں کا وفد ملاقات کرکے اقلیتوں کے مسائل کو پیش کرے گا تاکہ اس کا حتمی حل نکالا جا سکے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: