ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

شرمناک! اس وجہ سے دو لاکھ روپے میں بیچی گئی لڑکی ، پارسل کی طرح یہاں سے وہاں گھومتی رہی

نابالغ لڑکی کو اس کی دوست نے ہی اپنی بہن کے پاس بھیجا تھا ۔ خاتون لڑکی کو لے کر رتلام آگئی اور اس کو کسی پوجا کو بیچ دیا ۔ پھر پوجا نے اس کو مہیش کو فروخت کردیا ۔

  • Share this:
شرمناک! اس وجہ سے دو لاکھ روپے میں بیچی گئی لڑکی ، پارسل کی طرح یہاں سے وہاں گھومتی رہی
شرمناک! اس وجہ سے دو لاکھ روپے میں بیچی گئی لڑکی ، پارسل کی طرح یہاں سے وہاں گھومتی رہی

بھوپال : نشاط پورہ علاقہ کی 10 ویں کی ایک طالبہ کو بیوٹی پارلر چلانے والی اور اس کے ساتھیوں نے رتلام لا کر دو لاکھ روپے میں بیچ دیا ۔ پولیس نے نابالغ کو برآمد کرکے اس کو خریدنے والے نوجوان اور دو بہنوں کو گرفتار کیا ہے جبکہ ایک خاتون اور ایک کار ڈرائیور کی تلاش کی جارہی ہے ۔ ایس پی زون چار دنیش کمار کیلاش کے مطابق علاقہ میں رہنے والی 15 سال کی نابالغ لڑکی دسویں جماعت میں پڑھتی ہے ۔ گزشتہ 22 دسمبر کو وہ گھر سے بتائے بغیر کہیں چلی گئی ۔ تلاش کرنے کے بعد بھی جب اس کا کچھ پتہ نہیں چلا تو بھائی نے 27 دسمبر کو رپورٹ درج کروائی ۔


پولیس نے نامعلوم افراد کے خلاف اغوا کا کیس درج کرکے جانچ شروع کردی ۔ جانچ کے دوران پتہ چلا کہ نابالغ لڑکی کا ایک بیوٹی پارلر میں آنا جانا تھا اور اس کی مالکن سونا سے اس کی دوستی بھی تھی ۔ پولیس نے بیوٹی پارلر چلانے والی خاتون سے پوچھ گچھ کی تو اس نے بتایا کہ نابالغ لڑکی کو گاندھی نگر میں رہنے والی اپنی بہن مونا کے پاس بھیجا تھا ۔ جانکاری کے مطابق مونا اس کو کسی کار ڈرائیور ارجن کے ساتھ رتلام لے کر گئی اور پوجا کے حوالے کردیا ۔ پوجا نے دو لاکھ روپے میں اس کو مہیش راٹھور کو فروخت کردیا تھا ۔


ادھر پولیس نے رتلام کے مہیش راٹھور کے گھر سے نابالغ لڑکی کو برآمد کرلیا ۔ پوچھ گچھ میں مہیش نے اعتراف کیا کہ اس نے پوجا سے دو لاکھ روپے میں شادی کیلئے نابالغ لڑکی خریدی ہے ۔


پولیس نے مہیش راٹھور ، مونا اور سونا کو گرفتار کرلیا ہے ۔ رتلام کی پوجا اور ڈرائیور ارجن کی تلاش کی جاری ہے ۔ دونوں کی تلاش کیلئے کئی جگہ پولیس نے دبش دی ہے ۔ تاہم فی الحال کچھ پتہ نہیں چل سکا ہے ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ہوسکتا ہے کہ دونوں انڈرگراونڈ ہوگئے ہوں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jan 03, 2021 03:45 PM IST