اپنا ضلع منتخب کریں۔

    Big News: مدھیہ پردیش میں بھی نیشنل ہیرالڈ کی جائیداد کی ہوگی جانچ، سرکار نے دیا حکم

    Big News: مدھیہ پردیش میں بھی نیشنل ہیرالڈ کی جائیداد کی کی ہوگی جانچ، سرکار نے دیا حکم

    Big News: مدھیہ پردیش میں بھی نیشنل ہیرالڈ کی جائیداد کی کی ہوگی جانچ، سرکار نے دیا حکم

    National Herald Case : نیشنل ہیرالڈ کیس کو لے کر دہلی سے بھوپال تک ہنگامہ مچا ہوا ہے۔ دہلی میں نیشنل ہیرالڈ سے وابستہ ینگ انڈین کا دفتر سیل ہونے کے بعد مدھیہ پردیش کی شیوراج حکومت بھی حرکت میں آگئی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Bhopal | Bhopal | Madhya Pradesh
    • Share this:
      بھوپال : نیشنل ہیرالڈ کیس کو لے کر دہلی سے بھوپال تک ہنگامہ مچا ہوا ہے۔ دہلی میں نیشنل ہیرالڈ سے وابستہ ینگ انڈین کا دفتر سیل ہونے کے بعد مدھیہ پردیش کی شیوراج حکومت بھی حرکت میں آگئی ہے۔ وزیر بھوپیندر سنگھ نے بھوپال کے ایم پی نگر زون ون میں نیشنل ہیرالڈ کو زمین الاٹ کرنے کی از سر نو جانچ کا حکم دیا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے: مونکی پاکس کی وجہ سے سفر کرنےکولےکرہورہی ہےپریشانی؟ یہ ہے وضاحت!


      وزیر بھوپیندر سنگھ نے کہا کہ جس مقصد کیلئے یہ زمین دی گئی تھی، اس سے الگ اس زمین کا استعمال کیا گیا ۔ سستے داموں پر دی گئی زمین سے کروڑوں روپے وصول کئے جا رہے ہیں۔ اس پورے معاملہ کی از سر نو جانچ کا حکم دیا گیا ہے۔ فی الحال جانکاری کے مطابق نیشنل ہیرالڈ کو الاٹ کی گئی بی ڈی اے کی زمین کی لیز کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔ معاملہ عدالت میں ہے اور اگر ضرورت پڑی تو حکومت اس کو رد کرنے کیلئے ہائی کورٹ جائے گی۔

       

      یہ بھی پڑھئے: اتر پردیش بنےگادفاعی راہداری کامرکز، 3,000 کروڑ روپےکی سرمایہ کاری کا اعلان


      کیا ہے پورا معاملہ

      2011 میں نیشنل ہیرالڈ کو دی گئی زمین کے رجسٹریشن کو ریوینیو کیا گیا ۔ تب پتہ چلا کہ جو زمین اشاعت کے لئے دی گئی تھی، اس کا استعمال کمرشیل طریقے سے کیا جارہا ہے ، جس کی وجہ سے بھوپال ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے لیز کی تجدید سے انکار کر دیا۔ بی ڈی اے نے یہ زمین نیشنل ہیرالڈ گروپ کو معمولی شرح پر الاٹ کی تھی۔ تب ایم پی نگر میں پریس کمپلیکس تیار ہو رہا تھا، لیکن زمین پر تجارتی سرگرمیوں کی وجہ سے بی ڈی اے نے کئی مرتبہ نوٹس بھیجا اور بعد میں لیز کو منسوخ کر دیا۔

      تاہم لیز کی منسوخی کے بعد معاملہ عدالت میں پہنچ گیا اور فی الحال بتایا جا رہا ہے کہ عدالت میں ہونے کی وجہ سے ابھی تک اس پر کوئی فیصلہ نہیں ہوا ہے۔ لیکن اب ریاستی حکومت اس پورے معاملہ کو ہائی کورٹ میں چیلنج کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ مطلب صاف ہے کہ دہلی سے بھوپال تک نیشنل ہیرالڈ گروپ کی جائیدادوں پر شکنجہ کستا جارہا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: