உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bhopal News: نوابین بھوپال کے مقبرے خستہ حالی کا شکار، اب جمعیت علما اور سد بھاؤنا منچ نے اٹھایا یہ بڑا قدم

    Bhopal News: نوابین بھوپال کے مقبرے خستہ حالی کا شکار، اب جمعیت علما اور سد بھاؤنا منچ نے اٹھایا یہ بڑا قدم

    Bhopal News: نوابین بھوپال کے مقبرے خستہ حالی کا شکار، اب جمعیت علما اور سد بھاؤنا منچ نے اٹھایا یہ بڑا قدم

    Bhopal News: مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں وقف املاک کی نگرانی کے لئے کہنے کو وقف بورڈ، شاہی اوقاف اور کمیٹی اوقاف عامہ کے ادارے موجود ہیں۔تین اداروں کے ہونے کے باؤجود بھی نوابین بھوپال کے مقبرے خستہ حالی کا شکار ہیں ۔

    • Share this:
    بھوہال : مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں وقف املاک کی نگرانی کے لئے کہنے کو وقف بورڈ، شاہی اوقاف اور کمیٹی اوقاف عامہ کے ادارے موجود ہیں۔تین اداروں کے ہونے کے  باؤجود بھی نوابین بھوپال کے مقبرے خستہ حالی کا شکار ہیں ۔ وقف اداروں کی عدم توجہی اور بار بار کی اپیل سے مایوس ہوکر اب مدھیہ پردیش جمعیت علما اور سد بھاؤنا منچ نے عوامی تعاون سے خود ہی نوابین کے مقبرے کی تیزئین کاری کا سلسلہ شروع کیا ہے۔ بھوپال جمعیت علما  اور سدبھاؤنا منچ کے رضا کاروں نے نوابین بھوپال کے مقبروں کی تزین کاری کا کام  بھوپال کی تیسری خاتون فرمانروا نواب شاہجہاں بیگم کے مقبرہ کی تزئین کاری سے شروع کیا ہے۔ نواب شاہجہاں بیگم بھوپال کی فرمانروا ہونے کے ساتھ صاحب دیوان شاعرہ  بھی تھیں اور انہوں نے اٹھارہ سو چوراسی میں خزینۃ اللغات کے نام سے چھ زبانوں میں زخیم لغت بھی لکھی تھی۔

     

    یہ بھی پڑھئے: شیوراج حکومت میں ائمہ وموذنین تنخواہوں سے محروم


    مدھیہ پردیش جمیعت علما کے پریس سکریٹری حاجی محمد عمران کہتے ہیں کہ وقف بورڈ ، شاہی اوقاف اور کمیٹی اوقاف کے ادارے اس بات کے لئے قائم کئے گئے ہیں تاکہ وقف املاک کے تحفظ کے ساتھ واقف کی منشا کے مطابق فلاحی کام کو انجام دیا جا سکے، لیکن افسوس کہ تینوں ہی اداروں کے ذمہ داران کی نگاہ اس جانب نہیں ہے ۔ جمیعت علما کے ذریعہ وقف بورڈ، شاہی اوقاف اور کمیٹی اوقاف عامہ کے ذمہ داران کو کئی بار میمورنڈم پیش کرتے ہوئے نوابین بھوپال کے مقبروں کی تزئین کاری کا مطالبہ کیا گیا ہے، لیکن جب ہماری ساری کوششیں بے سود ہونے لگیں اور  اداروں کے ذمہ داران کی عدم توجہی مسلسل بڑھتی ہی گئی تو ہم لوگوں نے عوامی تعاون سے تزئین کاری کا سلسلہ شروع کیا ہے ۔ان شاء اللہ جہاں تک ہوسکے گا عوامی فلاح اور نوابین کے مقبروں کی تزین کاری کا کام جاری رہے گا۔ ہم لوگوں نے بھوپال کی تیسری خاتون حکمراں نواب شاہجہاں بیگم کے مقبرے سے اپنا کام شروع کیاہے۔

    وہیں سد بھاؤنا منچ بھوپال کے سکریٹری حافظ اسمعیل کہتے ہیں کہ بھوپال جب بھی کوئی آتا ہے تو اس کی نگاہ پرشکوہ تاج المساجد پر جاکر ٹھہرتی ہے ۔جس خاتون نے بھوپال میں ایشیا کی بڑی مسجد تاج المساجد کی تعمیر کروائی ، لغت لکھی اس کی قبر کی یہ خسہ حالی ہمیں بتاتی ہے کہ ہم اپنے اسلاف کی وراثت کے لئے فکر مند نہیں ہیں ۔ہم تو یہ چاہتے ہیں کہ تاج المساجد دیکھنے والوں کا سفر اس وقت تک مکمل نہ ہو جب تک وہ اس کی تعمیر کرنے والی اور ادب میں بے مثل خدمات انجام دینے والی نواب شاہجہاں بیگم کے مقبرے پر آکر فاتحہ نہ پڑھ لیں ۔ ادارے اپنا کام کر رہے ہیں اور ہم لوگوں نے عوامی تعاون سے کام شروع کیا ہے ۔اور یہ تسلسل کے ساتھ جاری رہے گا ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: قرعہ میں نام آنے کے بعد بھی مدھیہ پردیش کے سو سے زیادہ عازمین نے نہیں جمع کئے پاسپورٹ، جانئے کیوں


    وہیں اس سلسلے میں جب نیوز 18 اردو کے ذریعہ مدھیہ پردیش وقف بورڈ کے سی ای او سید شاکر علی جعفری سے بات کی گئی تو انہوں نے اس معاملے میں اپنی فکر کا اظہار کیا لیکن ساتھ میں یہ بھی بتایا کہ ابھی انہیں وقف بورڈ کا چارج لئے ہوئے چند دن ہی ہوئے ہیں ۔بورڈ کے ضابطہ کے مطابق جو بھی ہوگا اس پر کارروائی کی جائے گی ۔

    واضح رہے کہ نواب شاہجہاں بیگم نے صرف بھوپال میں ہی ایشیا کی بڑی مسجد کی تعمیر نہیں کروائی تھی بلکہ لندن میں بھی پہلی مسجد تعمیر کروانے کا سہرا بھی ان کے ہی سربندھتا ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: