உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    MP News: ادب کے میدان میں پرواز کیلئے ملا نیا آسمان، تلاش جوہر پروگرام کے تحت ادبی سلسلہ شروع

    MP News: ادب کے میدان میں پرواز کیلئے ملا نیا آسمان، تلاش جوہر پروگرام کے تحت ادبی سلسلہ شروع

    MP News: ادب کے میدان میں پرواز کیلئے ملا نیا آسمان، تلاش جوہر پروگرام کے تحت ادبی سلسلہ شروع

    Madhya Pradesh Urdu Academy: راجدھانی بھوپال سے تلاش جوہر کے عنوان سے شروع کئے گئے ادبی کارواں کو اردو کے نئے فنکاروں نے وقت کی بڑی ضرورت سے تعبیر کیا ہے ۔

    • Share this:
      بھوپال : اردو کے نئے فنکاروں کو اسٹیج فراہم کرنے اور ان کی صلاحیتوں کو منطر عام پر لانے کی باتیں توملک میں بہت کی جاتی ہیں، لیکن مدھیہ پردیش اردو اکادمی ان معنوں میں منفرد ہے کہ اس نے صوبہ کے اردو کے نئے فنکاروں کی صلاحیت کو منظر عام  پر لانے کے لئے ریاست گیر سطح پر تلاش جوہر پروگرام کے تحت ادبی سلسلہ شروع کیا ہے۔ راجدھانی بھوپال سے تلاش جوہر کے عنوان سے شروع کئے گئے اس ادبی کارواں کو اردو کے نئے فنکاروں نے وقت کی بڑی ضرورت سے تعبیر کیا ہے ۔

    واضح رہے کہ مدھیہ پردیش اردو اکادمی نے اردو کے نئے فنکاروں کو اسٹیج فراہم کرنے اور ان کی پوشیدہ صلاحیت کو منطر عام پر لانے کے لئے ریاست گیر سطح پر ادبی تحریک شروع کی ہے ۔ اس کے تحت بھوپال کے ساتھ ، ستنا، جبلپور اور گوالیار میں بھی نئے فنکاروں کے لئے ادبی پروگرام کے انعقاد کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے۔ بھوپال سوراج بھون میں تلاش جوہر پروگرام کے تحت منعقدہ پروگرام میں نہ صرف بھوپال بلکہ بھوپال ڈویزن کے ساتھ نرمدا پورم ڈویزن کے اردو فنکار نے حصہ لیا اور اپنی صلاحیت کا ایسا مظاہرہ کیا کہ لوگ محو حیرت رہ گئے ۔

    مدھیہ پردیش اردو اکادمی کی ڈائریکٹر نصرت مہدی نے نیوز 18 اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ تلاش جوہر پروگرام کو لیکر اردو کے نئے فنکاروں سے جو امید کی گئی تھی اردو کے نئے فنکاروں نے اس سے کہیں بہتر اپنے فن کا مظاہرہ کیا ہے ۔ ہمارے اردو کے فنکاروں میں بے پناہ صلاحیت ہے ، بس ضرورت انہیں پلیٹ فارم دینے کی ہے ۔ اسی لئے اکادمی نے ریاست گیر سطح پر اس پروگرام کے انعقاد کا سلسلہ شروع کیا ہے تاکہ ریاست کے سبھی حصوں کے اردو کے نئے فنکاروں کو یکساں مواقع حاصل ہو سکے ۔

    تلاش جوہر پروگرام میں اول مقام حاصل کرنے والی اپرنا پاٹیکر کہتی ہیں کہ اکادمی نے نئے فنکاروں کی صلاحیت کو جج کرنے کے لئے فی البدیہہ مشاعرہ کا انعقاد کیا تھا۔ آج کے مقابلے میں میر اور غالب کے مصرعے دئے گئے تھے۔ ہم نے بھی طبع آزمائی کی ، ہماری کوشش کو پسند کیا گیا ۔ ہمارے لئے خوشی اس بات کی ہے کہ ہمیں اپنے سینئر اور اساتدہ فن کے سامنے کلام پیش کرنے اور ان سے سیکھنے کا موقعہ ملا۔ ہم نئے فنکاروں کے لئے یہ بہت بڑا اسٹیج ہے اور اس پروگرام کو چلتے رہنا چاہئے۔

    وہیں چندیری سے پروگرام میں شرکت کرنے آئے اردو کے نئے فنکار مشغول مہربانی کہتے ہیں کہ اردو کی انجمنوں کے ذریعہ اس طرح کے پروگرام تو عام بات ہے لیکن خوشی اس بات کی ہے کہ سرکاری طور پر ایم پی اردو اکادمی نے یہ سلسلہ شروع کیا ہے۔ ادب کے میدان میں جب اس طرح سے سرپرستی ہوتی ہے تو ہم نئے لکھنے والوں کو  پرواز کے لئے بڑا آسمان ملتا ہے ۔ میں آج کتنا خوش ہوں اس کا اظہار کرنے کے لئے میرے لئے الفاظ نہیں ہیں۔

    پرشست وشال نے نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام میں شرکت کے لئے ہم نے خوب تیاری کی۔ میرؔ، غالب، مومن، مصحفی، داغ، جاں نثار اختر وغیرہ کو ہم نے خوب پڑھا تو تاکہ تلاش جوہر میں اپنے جوہر کا مظاہرہ کرسکوں۔ نئے فنکاروں میں صلاحیت کی کمی نہیں ہے بس انہیں سرپرستی کی ضرورت ہے اور جس طرح سے اردو اکادمی نے سرپرستی شروع کی ہے اگر یہ سلسلہ جاری رہا ہے تو آنے والوں سالوں میں مدھیہ پردیش سے اردو کے نئے فنکاروں کی جو کہکشاں سامنے آئے گی، وہ اردو کے کارواں کو آگے بڑھانے میں مدد گار ثابت ہوگی۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: