உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    MP News: ممتاز ادیبہ و صحافی ڈاکٹر رضیہ حامد کو خالد عابدی قومی ایوارڈ سے کیا گیا سرفراز

    MP News: ممتاز ادیبہ و صحافی ڈاکٹر رضیہ حامد کو خالد عابدی قومی ایوارڈ سے کیا گیا سرفراز

    MP News: ممتاز ادیبہ و صحافی ڈاکٹر رضیہ حامد کو خالد عابدی قومی ایوارڈ سے کیا گیا سرفراز

    Bhopal News: بھوپال اقبال لائبریری میں منعقدہ پر وقار تقریب میں ممتاز ادیب و براڈ کاسٹر خالد عابدی کی حیات و خدمات پر تفصیل سے روشنی ڈالی گئی اور ان کے نام سے جاری کئے گئے پہلے قومی ایوارڈ سے اردو کی ممتاز ادیبہ و صحافی ڈاکٹر رضیہ حامد کو پہلے خالد عابدی قومی اعزاز سے سرفراز کیا گیا۔

    • Share this:
    بھوپال : دبستان بھوپال و مسلم وکاس پریشد مدھیہ پردیش کے مشترکہ بینرتلے راجدھانی بھوپال میں پر وقار تقریب کا انعقاد کیا گیا ۔ بھوپال اقبال لائبریری میں منعقدہ پر وقار تقریب میں ممتاز ادیب و براڈ کاسٹر خالد عابدی کی حیات و خدمات پر تفصیل سے روشنی ڈالی گئی اور ان کے نام سے جاری کئے گئے پہلے قومی ایوارڈ سے اردو کی ممتاز ادیبہ و صحافی ڈاکٹر رضیہ حامد کو پہلے خالد عابدی قومی اعزاز سے سرفراز کیا گیا۔ اس موقع پر منعقدہ تقریب میں پرچم اردو کو جاری کرنے کے ساتھ اردو ترانہ کو بھی مہشور گلو کار یعقوب ملک و ان کے ہمنوا کے ساتھ بحسن و خوبی پیش کیا گیا۔

    دبستان بھوپال کے روح رواں و مشہور ادیب و شاعر کوثر صدیقی نے نیوز 18 اردو سے خاص  بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اردو کے ادیبوں و شاعروں کو یاد کرنا اور ان کی تحریک کو آئندہ نسلوں تک پہنچانا ہماری ذمہ داری کا حصہ ہے ۔ خالد عابدی جن کا گزشتہ ماہ انتقال ہوا ہے ،آج ان کی یوم ولادت ہے ۔اس مناسبت سے ہم لوگوں نے انہیں یاد کرنے کے لئے جہاں بھوپال کے شاعروں و ادبیوں کے بیچ سیر حاصل گفتگو کی تو وہیں  ان کے نام سے قومی اعزاز بھی جاری کیا ہے۔ پہلا خالد عابدی اعزاز ممتاز ادیبہ ڈاکٹر رضیہ حامد کی ادبی خدمات کو دیکھتے ہوئے پیش کیا گیا ۔ یہ سلسلہ آئندہ بھی جاری رہے گا۔ اس موقع پر پرچم اردو کو جسے ہم نے تیار کیا تھا اسے ڈاکٹر مہتاب عالم کے ہاتھوں جاری کیا گیا۔ ملک میں اردو کی تحریک تو چلتی ہے مگر اردو کا کوئی پرچم نہیں ہے ۔ دبستان بھوپال نے یہ پہل کی ہے کہ اردو کا پرچم جاری کرکے اردو کی بقا کی تحریک چلائی جائے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: روہنگیا پناہ گزینوں کونہیں ملیں گے گھر،وزارت داخلہ نے خبروں کو بتایا غلط


    مسلم وکاس پریشدمدھیہ پردیش کے صدر حاجی محمد ماہر نے نیوز 18 اردو سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اردو کے بقا کے لئے کام کرنے کی ضرورت پہلے سے زیادہ ہے ۔ اب  جو حالات ہیں اس میں اردو کے لئے دائرہ سمٹتا جا رہا ہے اور متحد ہوکر سبھی اردو والے کام کریں گے تو اردو کو اس کا حق ضرور ملے گا ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: Indian Railway: ایک سال کے بچے کا بھی لگے گا ٹکٹ؟ جانئے وزارت ریل کا اس پر جواب


    پروگرام کے صدر و ممتاز افسانہ نگار نعیم کوثر نے نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا خالد عابدی نے سماج کی تلخیوں کو پی کر محبت کا ترانہ زمانے کو دیا تھا ۔ وہ اردو کا نہ صرف ادیب تھا بلکہ اردو اس کی روح میں شامل تھی ۔وہ خود بھوکا رہتا تھا مگر اردو کی کتابیں خرید کر اس لئے لائبریری میں رکھتا تھا تاکہ اردو کے طلبا پڑھ سکیں اور اپنی معلومات میں اضافہ کر سکیں ۔ دبستان بھوپال اور مسلم وکاس پریشد نے جو قدم اٹھایا ہے وہ قابل ستائش ہے ۔ خدا ہمیں بھی اور نئی نسل کو بھی خالد عابدی کی طرح اردو کے لئے کام کرنے کا حوصلہ عطا فرمائے ۔

    ممتاز ادیبہ و پہلے خالد عابدی اعزاز سے سرفراز ڈاکٹر رضیہ حامد نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ خالد عابدی کی زندگی کا ہر وہ عمل جو انہوں نے اردو کے لئے اٹھایا تھا وہ قابل تقلید ہے ۔ مجھے پہلے خالد عابدی قومی اعزاز سے سرفراز کیا گیا، اس کے لئے میں دبستان بھوپال اور مسلم وکاس پریشد کی ممنون ہوں ۔ اردو کی بقا کے لئے ان اداروں کے لئے جو تحریک چلائی جائے گی میں ان کے ساتھ ہوں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: