உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : شیوراج حکومت کی ناکامی کے خلاف بھوپال میں منایا گیا یوم سیاہ

    مدھیہ پردیش : شیوراج حکومت کی ناکامی کے خلاف بھوپال میں منایا گیا یوم سیاہ

    مدھیہ پردیش : شیوراج حکومت کی ناکامی کے خلاف بھوپال میں منایا گیا یوم سیاہ

    عارف مسعود کی کال پر نہ صرف کانگریس کارکنان بلکہ عام لوگوں نے بھی بڑی تعداد میں اپنے گھروں کے باہر چھتوں پر کالے جھنڈے لگائے تھے ۔ پولیس اور نگر نگم کے ملازمین دن بھر کالے جھنڈے نکالتے رہے اور کانگریس کارکنان کے ساتھ عام لوگ بھی کالے جھنڈے لگاکر حکومت کے خلاف اپنا احتجاج بلند کرتے رہے۔

    • Share this:
    بھوپال : کورونا قہر اور لاک ڈاؤن کے بیچ ایم پی کے اسپتالوں میں طبی سہولیات کے فقدان اور دواؤں کی ہونے والی کالا بازاری کو لیکرصرف سیاسی پارٹیوں کے درمیان ہی سیاست جاری نہیں ہے ۔ بلکہ عوام بھی حکومت کے جھوٹے وعدے سے اب بیزار ہونے لگے ہیں ۔ کورونا قہر میں حکومت کی ناکامی ،اسپتالوں میں طبی سہولیات کے فقدان، دواؤں کی کالا بازاری کو لیکر بھوپال ایم ایل اے عارف مسعود کے ذریعہ  بھوپال میں یوم سیاہ منانے کا اعلان کیا گیا تھا۔ عارف مسعود کی کال پر نہ صرف کانگریس کارکنان بلکہ عام لوگوں نے بھی بڑی تعداد میں اپنے گھروں کے باہر چھتوں پر کالے جھنڈے لگائے تھے ۔ پولیس اور نگر نگم کے ملازمین دن بھر کالے جھنڈے نکالتے رہے اور کانگریس کارکنان کے ساتھ عام لوگ بھی کالے جھنڈے لگاکر حکومت کے خلاف اپنا احتجاج بلند کرتے رہے۔

    بھوپال شاہجہانہ آباد کے امت کمار کہتے ہیں کہ سیاست کی بات تو سیاست کے لوگ جانیں ، میں تو صرف اتنا جانتا ہوں کہ میرے رشتہ دار بھوپال حمیدیہ اسپتال میں داخل ہیں ۔ انہیں پہلے کورونا انفیکشن ہوا اور ابھی ٹھیک بھی نہیں ہوئے تھے کہ انہیں بلیک فنگس ہوگیا ہے۔ اسپتال میں ایڈوانس پیسہ جمع کرنے کے بعد بھی انجیکشن نہیں مل رہا ہے ۔ صرف میں ہی نہیں بلکہ بھوپال میں دیڑھ سو سے زیادہ لوگ انجیکشن کے لئے بھٹک رہے ہیں اور حکومت میں کوئی جواب دینے والا نہیں ہے ۔

    بھوپال کانگریس ایم ایل اے عارف مسعود کہتے ہیں کہ کورونا قہرعام انسانوں کے لئے تو ایک عذاب ہے ، لیکن بی جے پی کے لوگوں کے لئے پیسہ کمانے کا ذریعہ ہے ۔ پولیس تفتیش میں وزیر اور ان کے گھروالوں کے نام  انجیکشن کی کالا بازاری میں سامنے آرہے ہیں ، لیکن حکومت کے ذریعہ کسی کے خلاف کارروائی نہیں کی جا رہی ہے ۔ کورونا قہر میں اسپتالوں میں بیڈ نہیں ہے، انجیکشن کی سپلائی نہیں ، دواؤں اور انجیکشن کی کالابازاری کے ساتھ مہنگائی اپنے عروج پر ہے ، ان تمام باتوں کو لیکر ہم نے کالے جھنڈے لگاکر احتجاج کرنے کا اعلان کیا تھا۔ مجھے خوشی ہے کہ عوام نے اپنا درد سمجھتے ہوئے احتجاج میں حصہ لیا ہے ، مگر افسوس ہے کہ پولیس نے کالے جھنڈے لگانے والوں پر جبر کر کے اسے روکا اور نگر نگم کے لوگ کالے جھنڈے دن بھر نکالتے رہے ۔

    انہوں نے کہا کہ شیوراج سنگھ کو یہ معلوم ہوگیا کہ کالے جھنڈے لگانے میں صرف کانگریس کے کارکنان ہی نہیں بلکہ عام شہری شامل ہوں گے اور جب اس کی خبر دہلی تک پہنچے گی تو ان کی کرسی کو خطرہ ہوگا ، اس لئے پولیس اور نگرنگم کا استعمال کیا گیا۔ حکومت ہر محاذ پر ناکام ہے ۔ موتوں کے اعداد و شمار چھپائے جا رہے ہیں ۔ اب تک مدھیہ پردیش میں اخباروں کی رپورٹ کے مطابق چھبیس ہزار سے زیادہ لوگوں کی موت ہوچکی ہے ۔ اس نکمی سرکار کو عوام کبھی معاف نہیں کریں گے ۔

    وہیں مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ کالے جھنڈے لگا کر کانگریس نے عوام کے سامنے اپنا کالا چہرہ پیش کیا ہے۔ کوروناقہر میں کانگریس کے لوگ بڑے سے چھوٹے کہیں بھی خدمت کرتے نظر نہیں آئے ۔ اس لئے عوام کے بیچ کیا منھ لیکر جائیں گے ۔ اپنی ناکامی چھپانے کے لئے اب عوام کو گمراہ کر رہے ہیں ۔ ساری دنیا جانتی ہے کہ کورونا قہر میں مریضوں کو بہتر طبی خدمات دینے میں مدھیہ پردیش نے ماڈل کردار ادا کیا ہے ۔ مدھیہ پردیش کے ماڈل کو دوسری ریاستوں کے لوگ اپنا رہے ہیں ۔

    راجدھانی بھوپال میں کورونا کرفیو کا نفاذ ہونے کے سبب لوگ باہر تو نکل نہیں سکتے تھے ، اس لئے بھوپال ایم ایل اے عارف مسعود کی اپیل پر کانگریس کارکنان کے ساتھ عام لوگوں نے اپنی گھر پر کالا جھنڈا لگا کر احتجاج کیا ۔ احتجاج کرنے والوں میں مردوں کے ساتھ خواتین بھی بڑی تعداد میں شامل تھیں۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: