ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : گنج باسودہ حادثہ کے مہلوکین کو حکومت کے ذریعہ دئے گئے چیک ہوئے باؤنس، سیاست تیز

مدھیہ پردیش کے گنج باسودہ کے لال پٹھار میں پندرہ جولائی کی شام کو کنواں دھسنے سے گیارہ لوگوں کی موت ہوگئی تھی اور حکومت کے ذریعہ چھبیس گھنٹے کے ریسکیو آپریشن کے بعد انیس لوگوں کو محفوظ نکالا گیا تھا۔ حکومت نے مہلوکین کے ورثہ کو فوری طور پر پانچ پانچ لاکھ روپے کی مالی مدد دینے کے ساتھ حادثہ میں زخمی ہوئے لوگوں کو پچاس پچاس ہزار کی مالی مدد کا چیک تقسیم کیا تھا۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش : گنج باسودہ حادثہ کے مہلوکین کو حکومت کے ذریعہ دئے گئے چیک ہوئے باؤنس، سیاست تیز
مدھیہ پردیش : گنج باسودہ حادثہ کے مہلوکین کو حکومت کے ذریعہ دئے گئے چیک ہوئے باؤنس، سیاست تیز

بھوپال : مدھیہ پردیش گنج باسودہ کے لال پٹھار میں پیش آئے حادثہ کے مہلوکین کے ورثہ کو حکومت کے ذریعہ دیئے گئے چیک باؤنس ہونے سے مدھیہ پردیش میں سیاست شروع ہوگئی ہے۔ کانگریس نے چیک باؤنس کے معاملہ کو لے کر نہ صرف شیوراج سنگھ حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے بلکہ اسے مہلوکین کے ورثہ کے زخموں پر نمک پاشی کرنے سے تعبیر کرتے ہوئے حکومت کے فریب کی انتہا قرار دیا ہے۔ وہیں حکومت نے چیک باؤنس اور نام پر غلطی کے معاملہ کو انسانی بھول اور ٹیکنکل وجوہات سے تعبیر کرتے ہوئے جلد سے جلد معاملے کو حل کرنے کی بات کہی ہے ۔


واضح رہے کہ مدھیہ پردیش کے گنج باسودہ کے لال پٹھار میں پندرہ جولائی کی شام کو کنواں دھسنے سے گیارہ لوگوں کی موت ہوگئی تھی اور حکومت کے ذریعہ چھبیس گھنٹے کے ریسکیو آپریشن کے بعد انیس لوگوں کو محفوظ نکالا گیا تھا۔ حکومت نے مہلوکین کے ورثہ کو فوری طور پر پانچ پانچ لاکھ روپے کی مالی مدد دینے کے ساتھ حادثہ میں زخمی ہوئے لوگوں کو پچاس پچاس ہزار کی مالی مدد کا چیک تقسیم کیا تھا۔


کانگریس کا الزام ہے کہ حکومت نے مہلوکین کے ورثہ کو چیک تقسیم کیا تھا ، جب وہ اپنا چیک لے کر بینک میں کیش کرانے گئے تو بینک نے انہیں کراس کر کے واپس کردیا ہے ۔ حکومت کا جو قدم ہے ، اس سے متاثرین کو رسوا کرنے کا کام کیا گیا ہے۔ یہ افسوس ناک ہے اور حکومت کو اس سنجیدگی سے لیتے ہوئے متعلقہ افسران کے خلاف سخت کارروائی کرنا چاہئے ۔


وہیں انچارج وزیر وشواس سارنگ نے کانگریس کے الزام کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے سستی شہرت حاصل کرنے سے تعبیر کیا ہے ۔ انچارج وزیر وشواس سارنگ کا کہنا ہے کہ حکوم نے مہلوکین کے ورثہ کو جو چیک تقسیم کیا تھا ، وہ ساگر ضلع کے منڈی بامورا کی ایک چھوٹی برانچ کا جاری کیا گیا تھا ۔ چھوٹی برانچ میں ہائی ویلیو چیک کیش نہیں ہوتے ہیں ۔ چونکہ یہ چیک پانچ لاکھ کے تھے ، اور وہاں اس بینک کو دولاکھ روپے تک چیک کیش کرنے کی اجازت ہے۔ اس لئے ویریفکیشن میں بینک کو اس میں کچھ غلطی نظر آئی تھی ، اس لئے بینک نے چیک کو واپس کردیا تھا اور دوسرا زخمیوں کے پچاس ہزار کے چیک کا جو معاملہ ہے ، اس میں نام کی غلطی تھی جسے ٹھیک کردیا گیا ہے ۔ پیر تک سبھی لوگوں کے پیسے ان کے اکاؤنٹ میں آجائیں گے ۔

انہوں نے کہا کہ کانگریس کے لوگ جو حادثہ میں کہیں نظر نہیں آئے ، وہ صرف عوام کو گمراہ کرنے کا کام کر تے ہیں ۔ عوام سب جانتے ہیں اور کانگریس کے بہکاوے میں نہیں آنے والے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 24, 2021 07:28 PM IST