ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : رام بھروسے ہوئی کانگریس ، نئے پوسٹر پر گرمائی سیاست

20 اگست کو سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی کی جینتی پر کانگریس کے ذریعہ جاری کئے گئے پوسٹر سے کانگریس نے ایک بار پھر جہاں اپنے ہندتو چہرے کو نمایاں کرنے کی کوشش کی ، وہیں اس نے اپنے پوسٹر سے یہ بھی بتادیا کہ اب صوبہ کی سیاست رام نام کے بغیر ادھوری ہے ۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش : رام بھروسے ہوئی کانگریس ، نئے پوسٹر پر گرمائی سیاست
مدھیہ پردیش : رام بھروسے ہوئی کانگریس ، نئے پوسٹر پر گرمائی سیاست

مدھیہ پردیش کے عوامی مسائل سے ان دنوں سیاسی پارٹیوں کے ایجنڈے سے دور ہوتے جا رہے ہیں ۔ کورونا قہر میں عوام کی مشکلات کو دورکرنے ، یوتھ کو روزگار دینے ، تعلیمی مسائل کو حل کرنے ، کسانوں کے لئے زندگی کی مشکلات کو ختم کرنے کی باتیں چھوڑ کر اس وقت کانگریس اور بی جے پی کی پوری سیاست رام کے نام کے ارد گرد گھوم رہی ہے ۔ رام مندر کا سنگ بنیاد رکھے جانے کے بعد سمھجا جا رہا تھا کہ اب شاید سیاسی پارٹیاں عوامی مفادات اور ترقیاتی موضوعات کو محور بناکر اپنی سیاست کا رخ بدلیں گی ، مگر یہ باتیں ایک خواب ہی دکھائی دے رہی ہیں ۔


بیس اگست کو سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی کی جینتی پر کانگریس کے ذریعہ جاری کئے گئے پوسٹر سے کانگریس نے ایک بار پھر جہاں اپنے ہندتو چہرے کو نمایاں کرنے کی کوشش کی ، وہیں اس نے اپنے پوسٹر سے یہ بھی بتادیا کہ اب صوبہ کی سیاست رام نام کے بغیر ادھوری ہے ۔ راجیو گاندھی کی جینتی پر جاری کئے گئے کانگریس کے پوسٹر میں بتایا گیا ہے کہ رام راجیہ کی راہ راجیو گاندھی نے ہی ہموار کی تھی ۔ بلکہ اس سے آگے یہ بھی لکھا گیا ہے کہ راجیو گاندھی نے جدید ہندستان کی تعمیر کے ساتھ  رام مندر کی بھی بنیاد رکھی تھی ۔


کانگریس کے پوسٹر پر بی جے پی نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ یہ وہی لوگ ہیں جو کل تک رام  کے وجود پر ہی سوال اٹھاتے تھے اور اب الیکشن نزدیک آگیا ہے ، تو ان کی عقیدت رام میں دکھائی دیتی ہے ۔ مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا کانگریس کے پوسٹر پر طنز کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ اگر رام ہمارے ہیں ، تو شک کیسا اور اگر رام ہمارے نہیں ہے تو حق کیسا ۔ یہ لوگ کبھی رام کے نام پر ، کبھی کسان کے نام پر اور کبھی روزگار کے نام پر عوام کو گمراہ کرتے ہیں ، لیکن عوام سب جانتے ہیں کہ انہوں نے اپنے پندرہ مہینے کی سرکار میں کسی کو روزگار دینے کا کام نہیں کیا ۔ انتخابی منشور میں وعدہ کرنے کے بعد بھی کسی یوتھ کو بے روزگاری بھتہ نہیں دیا اور جب ہم روزگار کے لئے اشتہار جاری کرتے ہیں اور یوتھ کو روزگار دینے کا کام کرتے ہیں ، تو انہیں تکلیف ہوتی ہے ۔


سابق وزیر اعلی و ایم پی پی سی سی کے چیف کمل ناتھ کہتے ہیں کہ جب راجیو گاندھی نی رام راجیہ کا خاکہ تیار کیا تھا ، تب تو ان لوگوں کا کہیں وجود ہی نہیں تھا ۔
سابق وزیر اعلی و ایم پی پی سی سی کے چیف کمل ناتھ کہتے ہیں کہ جب راجیو گاندھی نی رام راجیہ کا خاکہ تیار کیا تھا ، تب تو ان لوگوں کا کہیں وجود ہی نہیں تھا ۔


وہیں مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلی و ایم پی پی سی سی کے چیف کمل ناتھ کہتے ہیں کہ جب راجیو گاندھی نی رام راجیہ کا خاکہ تیار کیا تھا ، تب تو ان لوگوں کا کہیں وجود ہی نہیں تھا ۔ راجیو گاندھی نہ صرف جدید ہندستان کے معمار ہیں ، بلکہ انہوں نے ہی رام مندر کی بنیاد رکھنے کا کام کیا تھا ۔ یہ لوگ جو آج دعویدار بنے ہوئے ہیں ، ان میں سے کسی کا اس وقت وجود نہیں تھا ۔ دراصل بی جے پی اعلانات کرنے میں ماہر ہے اور انتخابات تک یہ روزآنہ کوئی نہ کوئی نیا اعلان کرتے رہیں گے ۔ پندرہ سال کی سرکار میں انہوں نے کسی کو روزگار دینے کا کام کیا ہوتو بتائیں ۔ اس کا یہ لوگ جواب نہیں دیتے ہیں ۔

وہیں ڈاکٹر اے پی جے کلام ایجوکیشن سینٹر کے ڈائریکٹر جاوید بیگ کہتے ہیں کہ ہندستان کو مندر اور مسجد کی نہیں ، بلکہ تعلیم کی ضرورت ہے ۔ تعلیم کے تاج محل بنانے کی ضرورت ہے ۔ تاکہ ہماری نسلیں تعلیم کے میدان میں آگے آسکیں ۔ سیاسی پارٹیوں کو چاہئے کہ مندرمسجد کی باتیں مذہب کے ماننے والوں پر چھوڑ دیں اور ایسا کام کریں ، جس سے ملک کی ہمہ جہت ترقی ہوسکے ۔ جب ملک کے نوجوان پڑھے لکھیں ہوں گے ، ان کے ہاتھوں میں روزگار ہوگا ، کسان خود خوشحال ہوگا ، جرائم کا خاتمہ ہوگا تو عوام اپنے مندر مسجد خود بنالیں گے ۔ در اصل یہ سیاسی پارٹیاں عوام کو گمراہ کر کے مذہبی جذبات کے نام پر ووٹ لینے اور خستہ حالی تک محدود رکھنا چاہتی ہیں ۔ انہیں معلوم ہے کہ اگر عوام پڑھ لکھ لیں گے تو یہ جہالت کی ساری دکانیں بند ہو جائیں گی اور سیاسی پارٹیوں کو یہی بات منظور نہیں ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 20, 2020 08:32 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading