ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : کورونا ٹیکہ کاری مہا ابھیان میں ویکسین کی کمی سے عوام مایوس ، سیاست تیز

راجدھانی بھوپال سمیت بہت سے شہروں میں کورونا ٹیکہ کاری کے لئے نہ صرف بد نظمی دیکھنے کو ملی ، بلکہ کھلے عام سوشل ڈسٹنسنگ کی دھجیاں بھی اڑتی دیکھی گئیں ۔ کورونا ٹیکہ کاری سینٹر پر ٹیکہ لگوانے والوں کی امڈتی بھیڑ کو حکومت جہاں عوامی بیداری سے تعبیر کر رہی ہے تو وہیں کانگریس نے اسے حکومت کی ناکامی سے تعبیر کیا ہے ۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش : کورونا ٹیکہ کاری مہا ابھیان میں ویکسین کی کمی سے عوام مایوس ، سیاست تیز
مدھیہ پردیش : کورونا ٹیکہ کاری مہا ابھیان میں ویکسین کی کمی سے عوام مایوس ، سیاست تیز

بھوپال : مدھیہ پردیش حکومت کے ذریعہ ریاست سے کورونا کی وبائی بیماری کا خاتمہ کرنے کے لئے ریاستی سطح پر مہا ابھیان کے دوسرے مرحلے کا اعلان تو کیا گیا تھا ، مگر مہا ابھیان کے دوسرے مرحلے میں ویکسین کی کمی کے سبب بیشتر مقامات پر عوام کو گھنٹوں دھوپ میں کھڑے رہنے کے بعد مایوس گھر واپس لوٹنا پڑا۔ راجدھانی بھوپال سمیت بہت سے شہروں میں کورونا ٹیکہ کاری کے لئے نہ صرف بد نظمی دیکھنے کو ملی ، بلکہ کھلے عام سوشل ڈسٹنسنگ کی دھجیاں بھی اڑتی دیکھی گئیں ۔ کورونا ٹیکہ کاری سینٹر پر ٹیکہ لگوانے والوں کی امڈتی بھیڑ کو حکومت جہاں عوامی بیداری سے تعبیر کر رہی ہے تو وہیں کانگریس نے اسے حکومت کی ناکامی سے تعبیر کیا ہے ۔


واضح رہے کہ مدھیہ پردیش میں کورونا ٹیکہ کاری کا مہا ابھیان شیوراج سنگھ حکومت کے ذریعہ اکیس جون کو منعقد کیا گیا تھا ۔ مہان ابھیان کے پہلے مرحلے میں مدھیہ پردیش کے سات ہزار مراکز پر دس لاکھ لوگوں کو ویکسین لگانے کا ہدف رکھا گیا تھا اور عوام نے اپنی جس بیداری کا مظاہرہ کیا تھا ، اس سے مدھیہ پردیش حکومت نے کورونا ٹیکہ کاری میں ورلڈ بک میں ریکاڈ درج کیا تھا ۔ مدھیہ پردیش میں کورونا ٹیکہ کاری مہا ابھیان کے پہلے مرحلے میں سولہ لاکھ پچانوے ہزار پانچ سو بانوے لوگوں نے ٹیکہ لگوایا تھا ۔ وہیں دوسرے مرحلے میں حکومت اپنے ہدف کے قریب نہیں پہنچ سکی ۔ حکومت کی جانب سے دوسرے مرحلے کے مہا ابھیان کے لئے دس لاکھ لوگوں کو ٹیکہ لگانے کا ہدف تو مقرر کیا گیا ہے ، مگر آٹھ لاکھ چونتیس ہزار ایک سو ترپن لوگوں کو ہی ٹیکہ لگایا جا سکا ۔ عوام کو یہ امید تھی کہ پہلے مرحلے کی طرح دوسرے مرحلے میں حکومت کی جانب سے وہی انتظامات ملیں گے ، مگر جب عوام ٹیکہ لگوانے کے لئے باہر نکلے تو انہیں بیشتر ٹیکہ کاری سینٹر پر ویکسین کی کمی کے چلتے مایوسی کا سامنا کرنا پڑا ۔


خانوگاؤں ٹیکہ کاری سینٹر پر قطار میں کھڑے دلیپ کمار کہتے ہیں کہ سخت دھوپ میں ٹیکہ لگوانے کے لئے یہاں آیا تھا ، دو گھنٹے کے بعد ہمیں یہ بتایا گیا کہ ویکسین ختم ہو گئی ہے ۔ اب بتائیے ہماری چھٹی بھی خراب ہوئی اور گھنٹوں کھڑے رہنے کے بعد ویکسین بھی نہیں لگ پائی ۔اب ایسے میں ہم کیا کریں ۔


وہیں جاوید خان کہتے ہیں کہ ہم نے بائیس جون کو ٹیکہ تو لگوا لیا ، مگر ہمارے پاس جو میسیج آیا ہے اس میں نہ صرف ہمارا نام بدل گیا ہے ۔ بلکہ ہمارا جینڈر بھی تبدیل ہو گیا ہے ۔ اس کو درست کروانے کو لے کر نو دن سے بھٹک رہے ہیں ، لیکن ابھی تک کہیں سے بھی درست نہیں ہوسکا ۔

فہیم الدین چودھری کہتے ہیں کہ آج ہمیں بڑی شرمندگی کاسامنا کرنا پڑا ہے ۔ کورونا ٹیکہ کاری کو لیکر سوشل میڈیا پر میسیج چلانے کے ساتھ محلے بھر میں لوگوں سے جا کر ملاقات کی ۔ عوام کو بیداری کیا اور جب لوگ گھروں سے نکل کر ویکسین لگوانے کے لئے آئے ، تو انہیں مایوس ہونا پڑا رہا ہے ۔ ہمارے سینٹر پر کل سو ویکسین کو الاٹ کیا گیا ہے جبکہ بھیڑ آپ حود یکھ رہے ہیں کہ تین سو سے زیادہ لوگوں کی ہے ۔ اب جن کے رجسٹریشن ہو چکے ہیں اور انہیں ویکسین نہیں لگ رہی ہے تو ہمیں ہی نہیں سینٹر پر موجود سبھی لوگوں کو بھلا برا کہہ رہے ہیں ۔

مدھیہ پردیش کانگریس میڈیا سیل کے نائب صدر بھوپیندر گپتا کہتے ہیں کہ مہا ابھیان کے نام پر سرکاری ڈرامہ کر رہی ہے ۔ عوام ویکسین کےلئے در در کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں اور سرکار کو اس کی فکر نہیں ہے بلکہ وہ اخبار کی سرخیوں میں بنے رہنے کے لئے صرف بڑے بڑے اشتہار جاری کرتی ہے ۔ جتنے پیسے سرکار اشتہار میں برباد کر رہی ہے ، اس سے مدھیہ پردیش میں لاکھوں لوگوں کی ویکسین کاانتظام ہو جاتا ۔ یہی نہیں اس سے پہلے بھی سرکار نے فرضی اعداد و شمار پیش کرکے ویکسین کا ریکارڈ بنایا تھا ۔ آج جس طرح سے ویکسین کے نام پر سوشل ڈسٹنسنگ کی دھجیاں اڑی ہیں ، اس سے مدھیہ پردیش میں کورونا کے بڑھنے کا اور امکان بڑھ گیا ہے ۔

وہیں مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ کورونا کے تئیں عوام میں بیداری بڑھ رہی ہے اور یہ اسی بیداری کا ثبوت ہے کہ لوگ ویکسین کو لگوانے کے لئے بڑی تعداد میں باہر نکل رہے ہیں ۔ عوام کو کانگریس کے بہکاوے میں نہیں آنا چاہئے ، بلکہ انتظار کرنا چاہئے ۔ ہماری سرکار اپنے عہد کی پابند ہے کہ سب کو ویکسین اور مفت ویکسین لگائی جائے گی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 01, 2021 10:14 PM IST