ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش: شیوراج سنگھ کی حکومت میں کورونا جانباز ہوئے بھکمری کے شکار

مدھیہ پردیش میں شیوراج سنگھ حکومت کورونا قہر کو روکنے کے لئے ایک طرف جہاں بڑے بڑے دعوے کر رہی ہے وہیں دوسری جانب حکومت کی عدم توجہی سے کورونا جانباز بھکمری کا شکار ہو رہے ہیں۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش: شیوراج سنگھ کی حکومت میں کورونا جانباز ہوئے بھکمری کے شکار
مدھیہ پردیش: شیوراج سنگھ کی حکومت میں کورونا جانباز ہوئے بھکمری کے شکار

بھوپال۔ مدھیہ پردیش میں شیوراج سنگھ حکومت کورونا قہر کو روکنے کے لئے ایک طرف جہاں بڑے بڑے دعوے کر رہی ہے وہیں دوسری جانب حکومت کی عدم توجہی سے کورونا جانباز بھکمری کا شکار ہو رہے ہیں۔ مدھیہ پردیش حکومت کے دعوے کے برخلاف کورونا جانبازوں کو دو مہینے سے تنخواہوں کی ادائیگی ہی نہیں کی گئی ہے۔


مدھیہ پردیش میں جب کورونا کے قہر کو روکنے کے لئے لاک ڈاؤن فرسٹ لگایا گیا تو صوبہ میں حکومت کی جانب سے مختلف اضلاع میں کورونا جانبازوں کی سمنودا پر تقرری کی گئی ۔ این ایم کی تقرری بارہ ہزار روپیہ ماہانہ،اسٹاف نرس کی بیس ہزار روپیہ ماہانہ اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی پچیس ہزار روپیہ ماہانہ پر تقرری کی گئی ہے۔ کورونا جانبازوں نے حکومت کے ہر احکام پر مستعدی سے عمل کیا اور صوبہ سے کورونا کے خاتمے کے لئے اپنی تمام خدمات انجام دیں اور اب بھی خدمات انجام دے رہے ہیں مگر حکومت کی جانب سے دو ماہ گزرنے کے بعد بھی انہیں تنخواہوں کی ادائیگی نہیں کی گئی۔


کورونا جانباز کے طور پر تقررکئے گئے ڈاکٹر مہیش کہتے ہیں کہ کورونا مہاماری میں اپنا گھر بار سب کچھ چھوڑ کر دن رات محنت کر رہے ہیں مگر سرکار نے جب دو مہینے سے تنخواہ نہیں دی ہے تو کہاں سے کھائیں گے۔بھوکے پیٹ تو بھجن  نہیں ہوسکتا ہے ۔ سرکار کو خود سوچنا چاہیئے کہ کورونا یودھا کن سنکٹ میں اپنی ڈیوٹی دے رہے ہیں ۔ وہیں پریتی کہتی ہیں کہ ہمیں اگر ایسا پتہ ہوتا کہ ہمارے ساتھ سرکار ایسا دھوکہ کریگی تو ہم مرنا پسند کرتے ہیں۔ایک بار مرجاتے تو سکون رہتا مگر یہاں تو امیدوں پر روز مرتے ہیں ۔اے سی ایس ہیلتھ سے کئی بارتحریری طور پر درخواست کر چکے ہیں لیکن ابھی تک کوئی جواب نہیں آیا ہے۔تنخواہ ملے گی کہ نہیں اور ملے گی بھی تو کب اس کا کچھ پتہ نہیں ۔ پریوار کو کیسے چلایا جائے اور مکان مالک کو کہاں سے کرایہ دیا جائے کچھ سمجھ میں نہیں آرہا ہے۔


مدھیہ پردیش حکومت کے دعوے کے برخلاف کورونا جانبازوں کو دو مہینے سے تنخواہوں کی ادائیگی ہی نہیں کی گئی ہے۔


مدھیہ پردیش ترتیا ورگ شاسکیہ کرمچاری سنگھ کے جنرل  سکریٹری لکشمی نارائن شرما کہتے ہیں کہ سرکار کے ذریعہ کورونا یودھا کے نام پر این ایم کو بارہ ہزار روپیہ،اسٹاف نرس کوبیس ہزار روپیہ اور ڈاکٹروں کو پچیس ہزارروپیہ پرتی ماہ کے روپ میں نیوکتی دی گئی تھی ۔ ہمیں تو جان کر آشچریہ ہوا کہ سرکار کر کیا رہی ہے ۔ اے سی ایس ہیلتھ کو ہم نے پتر لکھ کر شیگھر ان کے ویتن کے بھگتان کی مانگ کی ہے۔ اگر ہفتے بھر میں انہیں ویتن کا بھگتان نہیں کیا جاتا ہے تو اس کے خلاف آندولن اپنانا ہماری مجبوری ہوگی ۔ وہیں مدھیہ پردیش کانگریس کے سینئر لیڈر وسابق وزیر قانون پی سی شرما کہتے ہیں کہ سرکار کو کورونا اور اس کے یودھا سے کوئی لینا دینا ہے۔سرکار ستا کے نشے میں مد مست ہے۔ کورونا کے معاملے روز بڑھتے جا رہے ہیں اور جو کورونا یودھا ہیں انہیں دو مہینے سے ویتن تک نہیں ملا ہے۔ سرکار کو چاہیئے کہ تتکال پربھاؤ سے کورونا یودھا کا ویتن ادا کرے ۔کانگریس ان کے آندولن میں ساتھ ہوگی۔

وہیں مدھیہ پردیش کے وزیر صحت ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ کانگریس صرف بھڑکانے کا کام کرتی ہے۔اگر کانگریس نے وقت پر کام کیا ہوتا تو آج مدھیہ پردیش میں کورونا کی ایسی صورت حال نہیں ہوتی ۔ ہمیں ایک بیمار مدھیہ پردیش ملا تھا۔ اب کورونا ریکوری ریٹ بڑھ کر  72 فیصد ہوگیا ہے۔ جلد ہی کورونا یودھا کو ان کا ویتن ملے گا۔
مدھیہ پردیش میں کورونا مریضوں کی تعداد بڑھ کر گیارہ ہزار دوسو سترہ ہوگئی ہے۔ کورونا سے ابتک چار سو سڑسٹھ لوگوں کی موت ہو چکی ہے وہیں کورونا بیماری سے ابتک آٹھ ہزار ایک سو پچاس مریض صحتیاب بھی ہو چکے ہیں۔ کورونا کی چین کو توڑنے کے لئے سرکار نے بھوپال اور اندور میں ڈور ٹوڈور سروے کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
First published: Jun 17, 2020 01:47 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading