ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

دبنگوں نے روکا دلت خاتون کی آخری رسوم کا راستہ، پولیس کو کرنی پڑی مداخلت

مدھیہ پردیش کے کھنڈوا ضلع میں ایک دلت خاتون کی موت کے بعد گاؤں کے دبنگوں نے اس کی آخری رسوم کا راستہ روک دیا۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Sep 24, 2016 12:16 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
دبنگوں نے روکا دلت خاتون کی آخری رسوم کا راستہ، پولیس کو کرنی پڑی مداخلت
مدھیہ پردیش کے کھنڈوا ضلع میں ایک دلت خاتون کی موت کے بعد گاؤں کے دبنگوں نے اس کی آخری رسوم کا راستہ روک دیا۔

بھوپال۔ مدھیہ پردیش کے کھنڈوا ضلع میں ایک دلت خاتون کی موت کے بعد گاؤں کے دبنگوں نے اس کی آخری رسوم کا راستہ روک دیا۔ تقریبا دو گھنٹے تک چلے تنازعہ کے بعد پولیس کی موجودگی میں خاتون کی آخری رسوم ادا کی گئی۔ اطلاع کے مطابق، دھنگاوں تھانہ علاقے کے ڈونگرگاوں میں ایک دلت خاتون میدابائی (70) کا طویل علالت کے بعد انتقال ہو گیا۔


لواحقین کاویری ندی پر بنے گو گھاٹ پر خاتون کی آخری رسوم ادا کرنا چاہتے تھے۔ گو گھاٹ پر جانے کا راستہ گاؤں کے دبنگ خاندان سندرلال گوجر کے کھیت سے ہو کر جاتا ہے۔ الزام ہے کہ سندرلال کے بیٹے اور خاندان کی دو خواتین ارکان نے آخری رسوم کا راستہ روک دیا اور میدابائی کے اہل خانہ کو اپنے کھیت سے گزرنے نہیں دیا۔


بتاتے ہیں کہ دلت خاندان کے فریاد لگانے کے باوجود گوجر خاندان راستہ نہ دینے کی بات پر اڑا رہا، جس کے بعد لاش کو کھیت میں ہی رکھ کر لواحقین دھرنے پر بیٹھ گئے۔ اطلاع ملنے پر دھنگاوں پولیس موقع پر پہنچی۔ تقریبا ایک درجن سے زیادہ پولیس اہلکاروں کے سائے میں دلت خاتون کی آخری رسوم نکالی گئی۔ وہیں، متوفیہ کے اہل خانہ کی شکایت پر گوجر خاندان کے ارکان کے خلاف ایس سی-ایس ٹی ایکٹ کے تحت اجاک تھانے میں مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

First published: Sep 24, 2016 12:16 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading