உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    گاؤں کے لوگوں کو پیاسا نہیں دیکھ سکا چرواہا، عطیہ کردی 5 اسکوائر فٹ زمین

    تھینکو اس حوالے سے تھینکو بنواسی کا کہنا ہے کہ اپنی زمین عطیہ کرنے سے گاؤں کے لوگوں کو پانی آسانی سے مل سکے گا جس سے وہ بہت خوش ہوں گے۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ گرمی کے دنوں میں گاؤں میں پانی کا شدید بحران پیدا ہو جاتا ہے اور پھر انہیں ندی اور جھریا کا آلودہ پانی پی کر پیاس بجھانا پڑتی تھی لیکن پانی کی ٹینکی بننے کے بعد  نل واٹر سکیم کے تحت گھر گھر پانی دستیاب ہو گا۔

    تھینکو اس حوالے سے تھینکو بنواسی کا کہنا ہے کہ اپنی زمین عطیہ کرنے سے گاؤں کے لوگوں کو پانی آسانی سے مل سکے گا جس سے وہ بہت خوش ہوں گے۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ گرمی کے دنوں میں گاؤں میں پانی کا شدید بحران پیدا ہو جاتا ہے اور پھر انہیں ندی اور جھریا کا آلودہ پانی پی کر پیاس بجھانا پڑتی تھی لیکن پانی کی ٹینکی بننے کے بعد نل واٹر سکیم کے تحت گھر گھر پانی دستیاب ہو گا۔

    تھینکو اس حوالے سے تھینکو بنواسی کا کہنا ہے کہ اپنی زمین عطیہ کرنے سے گاؤں کے لوگوں کو پانی آسانی سے مل سکے گا جس سے وہ بہت خوش ہوں گے۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ گرمی کے دنوں میں گاؤں میں پانی کا شدید بحران پیدا ہو جاتا ہے اور پھر انہیں ندی اور جھریا کا آلودہ پانی پی کر پیاس بجھانا پڑتی تھی لیکن پانی کی ٹینکی بننے کے بعد نل واٹر سکیم کے تحت گھر گھر پانی دستیاب ہو گا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh | Bhopal | Delhi
    • Share this:
      ڈنڈوری کے بڑگاؤں میں ایک چرواہے نے سماج کے سامنے ایک مثال قائم کر دی ہے۔ انہوں نے پانی کا ٹینک بنانے کے لیے اپنی 5 ہزار مربع فٹ زمین حکومت کو عطیہ کردی۔ زمین نہ مل پانے کے سبب یہاں تقریباً 4 ماہ سے ٹینک کی تعمیر کا کام رکا ہوا تھا۔ حکومت نے اس ٹینک کو جل جیون مشن اسکیم کے تحت منظوری دی تھی۔ اس موقع پر گرام پنچایت اور مقامی ایم ایل اے نے بھی چرواہے کو اعزاز دینے کا یقین بھی دلایا۔ چرواہے کے اس قدم کو سوشل میڈیا پر خوب سراہا جا رہا ہے۔

      دراصل ساڑھے چار ہزار کی آبادی والے گاؤں شاہ پورہ اسمبلی میں عرصہ دراز سے پانی کا سنگین مسئلہ ہے۔ اس لیے انتظامیہ نے جل جیون مشن اسکیم کے تحت گاؤں میں نل کے پانی کی اسکیم کو منظوری دی تھی لیکن زمین کی نہ مل پانے کی وجہ سے پانی کی ٹینک کی تعمیر تقریباً چار ماہ سے رکی ہوئی تھی۔ اس کے بعد گاؤں کے بزرگ چرواہے تھینکو بنواسی آگے آئے اور اپنی باڈی کی زمین پانی کی ٹینک بنانے کے لیے عطیہ کردی، تاکہ گاؤں کے لوگوں کو پانی جیسے بنیادی مسئلے سے نجات مل سکے۔

      India Vs Pakistan میچ میں ساؤتھ سپر اسٹار بولے، وراٹ انا کی بایوپک کرنا چاہتا ہوں

      پالتو کتوں کے کاٹنے کے واقعات پر نگرنگم اور سوسائٹی سخت، بنائے جارہے ہیں یہ قوانین

      لوگوں کو پانی ملے گا، یہ سب سے بڑی خوشی ہے
      تھینکو اس حوالے سے تھینکو بنواسی کا کہنا ہے کہ اپنی زمین عطیہ کرنے سے گاؤں کے لوگوں کو پانی آسانی سے مل سکے گا جس سے وہ بہت خوش ہوں گے۔ تھینکو کے اس جذبے کی نہ صرف گاؤں والوں بلکہ گرام پنچایت کے ذمہ دار اور مقامی ایم ایل اے بھی تعریف کر رہے ہیں۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ گرمی کے دنوں میں گاؤں میں پانی کا شدید بحران پیدا ہو جاتا ہے اور پھر انہیں ندی اور جھریا کا آلودہ پانی پی کر پیاس بجھانا پڑتی تھی لیکن پانی کی ٹینکی بننے کے بعد  نل واٹر سکیم کے تحت گھر گھر پانی دستیاب ہو گا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: