ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : کورونا قہر میں تعلیمی ادارے کا وجود خطرے میں، مالی مشکلات سے دوچار

بھوپال میں منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کا قیام اسی کی دہائی میں مسلم طلبہ کو ٹیکنکل تعلیم فراہم کرنے کی غرض سے مسلم ویلفیئر سوسائٹی کے زیر اہتمام عمل میں آیا تھا ۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش : کورونا قہر میں تعلیمی ادارے کا وجود خطرے میں، مالی مشکلات سے دوچار
مدھیہ پردیش : کورونا قہر میں تعلیمی ادارے کا وجود خطرے میں، مالی مشکلات سے دوچار

بھوپال : کورونا قہر اور لاک ڈاؤن نے صرف انسانی زندگیوں کو ہی بے رنگ نہیں بنایا ہے ، بلکہ بہت سے خود کفیل تعلیمی ادارے بھی مالی مشکلات سے دو چار ہوگئے ہیں ۔ بھوپال منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کا شمار نہ صرف خود کفیل تعلیمی اداروں میں ہوتا تھا بلکہ یہ مدھیہ پردیش کا سب سے بڑا پرائیویٹ آئی ٹی آئی تھا ۔ گزشتہ دیڑھ سالوں میں مسلسل تعلیمی نظام مفلوج رہنے اور ادارے میں طلبہ کا داخلہ نہیں ہونے سے ادارے کے سامنے مالی مشکلات کا پہاڑ کھڑا ہوگیا ہے۔


واضح رہے کہ بھوپال میں منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کا قیام اسی کی دہائی میں مسلم طلبہ کو ٹیکنکل تعلیم فراہم کرنے کی غرض سے مسلم ویلفیئر سوسائٹی کے زیر اہتمام عمل میں آیا تھا ۔ ادارے نے اپنا تعلیمی سفر دو ٹریڈ سے شروع کیا تھا اور موجودہ میں ادارے کے تحت بارہ ٹریڈ میں تعیلیم دینے کے ساتھ مفت کمپیوٹر تعلیم اور خواتین کو فیشن ڈیزائننگ، فوڈ اینڈ ویجٹیبل ، ذری ذردوزی کی مفت تعلیم دی جاتی تھی ، لیکن جب سے کورونا کا قہر شروع ہوا ہے ، سبھی نظام مفلوج ہوکر رہ گئے ہیں ۔


منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کے چیئرمین  ڈاکٹر سید افتخارعلی کہتے ہیں کہ گزشتہ سال بھی کورونا کے سبب ادارے میں طلبہ کے داخلہ نہیں ہوسکے تھے اور امسال کے حالات بھی آپ کے سامنے ہیں ۔ ادارے میں طلبہ آئیں یا نہ آئیں ، لیکن ادارے کے اسٹاف کو پابندی سے ہر ماہ تنخواہ ادا کرنا ہماری مجبوری ہے ۔ یہ ادارہ جو کبھی خود کفیل تھا ، اب اس کے سامنے مالی مشکلات اس قدر ہیں کہ ادارے کے وجود کو سنبھالنا ہی مشکل ہو رہا ہے ۔


تعلیمی سلسلہ کب شروع ہوگا ، بچوں کو داخلہ دینے کی اجازت کب ملے گی ، طلبہ کے امتحانات کب ہوں گے اور ان کے نتائج کا اعلان کب ہوگا ، اس کا جواب ہمارے پاس نہیں ہے ۔ ادارے کو اہل خیر حضرات نے کھڑا کیا تھا ، اب انہیں پھر اس کی سرپرستی کی ضرورت ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 09, 2021 09:20 PM IST