ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش: حکومت کے رویہ سے ناراض کسانوں نے کنود میں ہائی وے کیا جام

مدھیہ پردیش میں کسانوں کے مسائل کو حل کرنے کو لیکر صوبائی حکومت بھلے ہی بڑے بڑے دعوے کر رہی ہو لیکن زمینی حقیقت کچھ اور ہے۔ دیواس کنود میں کسانوں کے ذریعہ کیاگیا ہائی وے پر چکہ جام اس کی واضح مثال ہے۔ مدھیہ پردیش حکومت کے ذریعہ کسانوں سے حکومت کی مقررہ شرح پر گیہوں،اور چنے کی خریداری کا عمل جاری ہے

  • Share this:
مدھیہ پردیش: حکومت کے رویہ سے ناراض کسانوں نے کنود میں ہائی وے کیا جام
مدھیہ پردیش میں کسانوں کے مسائل کو حل کرنے کو لیکر صوبائی حکومت بھلے ہی بڑے بڑے دعوے کر رہی ہو لیکن زمینی حقیقت کچھ اور ہے۔ دیواس کنود میں کسانوں کے ذریعہ کیاگیا ہائی وے پر چکہ جام اس کی واضح مثال ہے۔ مدھیہ پردیش حکومت کے ذریعہ کسانوں سے حکومت کی مقررہ شرح پر گیہوں،اور چنے کی خریداری کا عمل جاری ہے

مدھیہ پردیش میں کسانوں کے مسائل کو حل کرنے کو لیکر صوبائی حکومت بھلے ہی بڑے بڑے دعوے کر رہی ہو لیکن زمینی حقیقت کچھ اور ہے۔ دیواس کنود میں کسانوں کے ذریعہ کیاگیا ہائی وے پر چکہ جام اس کی واضح مثال ہے۔ مدھیہ پردیش حکومت کے ذریعہ کسانوں سے حکومت کی مقررہ شرح پر گیہوں،اور چنے کی خریداری کا عمل جاری ہے۔


کسانوں سے ان کا اناج خریدنے کے لئے حکومت کے ذریعہ ایس ایم ایس سے میسج بھیجنے کا انتظام کیاگیا ہے ۔اور جب کسی کسا ن کے پاس میسج آتا ہے تبھی کسان اپنے اناج کو ٹریکٹر ٹرالی میں رکھ کرمنڈی تک لے جاتا ہے۔کسانوں کی ناراضگی اس بات کی ہے کہ حکومت کے خریدی سینٹر سے میسیج آنے کے بعد بھی انہیں منڈی میں چار سے پانچ دن انتظار کرنا پڑتا ہے  تب جا کر ان کے اناج کی تلائی ہوتی ہے۔

کسانوں کی ناراضگی اس بات کی بھی ہے کہ منڈی میں کسانوں کے بیٹھنے اور پانی پینے تک کا کوئی بھی انتظام نہیں ہے۔ ایسے میں کئی کئی دن تک انتظار کرنے سے ان پر کرایہ کی ٹریکٹر ٹرالی کا بھی اضٓافی خرچ بڑھ جاتا ہے۔

چار دن سے اپنی باری کا انتظار کر رہے کسانوں نے کرشی اپج منڈی کنود نے اندور بیتول ہائی وے اور کھنڈوا بھوپال ہائی وے کے بیچنگر پنچایت چوراہے پرسخت گرمی میں ایم ایل اے کی رہائش گاہ کے سامنے سڑک پر بیٹھ گئے۔کسانوں کے سڑک پر بیٹپنے سے کئی کلومیٹر تک ہائی وے پر جام لگنے کے بعد مقامی ایم ایل اے،ضلع انتظامیہ اور ایس ڈی ایم نے ناراض کسانوں سے بات کی  اور انہیں ان کے مسائل کا حل کا یقین دلایا تب جا کر کسانوں نے چکہ جام ختم کیا۔

کنود میں کسانوں نے اپنا چکہ جام بھلے ہی ختم کردیا ہو وہیں دوسری جانب ایم پی کی دو سو انسٹھ منڈیوں میں آج سے افسران اور ملازمین نے منڈی ماڈل ایکٹ کے خلاف غیر معینہ مدت کے لئے اپنی ہڑتال شروع کردی ہے۔
First published: May 28, 2020 05:24 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading