ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : شیوراج حکومت کے حکم کو اسپتالوں نے ماننے کیا انکار ، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

مدھیہ پردیش میں کورونا کے بڑھتے مریضوں کو دیکھتے ہوئے ریاستی حکومت نے سات مئی کو آیوشمان بھارت یوجنا کے کارڈ ہولڈروں کو ریاست کے اسپتالوں میں کورونا کی وبائی بیماری کا مفت علاج دینے کا اعلان کیا تھا۔ ی

  • Share this:
مدھیہ پردیش : شیوراج حکومت کے حکم کو اسپتالوں نے ماننے کیا انکار ، جانئے کیا ہے پورا معاملہ
مدھیہ پردیش : شیوراج حکومت کے حکم کو اسپتالوں نے ماننے کیا انکار ، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

بھوپال : مدھیہ پردیش حکومت نے ریاست کے کورونا مریضوں کو آیوشمان بھارت یوجنا کے تحت مفت علاج دینے کا اعلان بھلے کیا ہو ، لیکن ریاست کے بہت سے اضلاع کے اسپتالوں نے آیوشمان کارڈ ہولڈروں کو اسپتالوں میں مفت علاج دینے سے انکار کردیا ہے ۔ حکومت کے احکام کر سرد بستے میں ڈالنے والے اسپتال صرف دور دراز کے علاقوں میں ہی نہیں ہیں بلکہ راجدھانی بھوپال کے چرایو اسپتال نے بھی کورونا مریض کو آیوشمان کارڈ پر علاج دینے سے انکار کردیا ہے ۔ نیوز 18 اردو پر خبر نشر کئے جانے کے بعد نہ صرف بھوپال بلکہ جبلپور اور دوسرے شہروں کے اسپتالوں کو انتظامیہ نے نوٹس جاری کیا ہے۔


واضح رہے کہ مدھیہ پردیش میں کورونا کے بڑھتے مریضوں کو دیکھتے ہوئے ریاستی حکومت نے سات مئی کو آیوشمان بھارت یوجنا کے کارڈ ہولڈروں کو ریاست کے اسپتالوں میں کورونا کی وبائی بیماری کا مفت علاج دینے کا اعلان کیا تھا۔ یہ اعلان ریاست کے کسی وزیر کے ذریعہ نہیں کیا گیا تھا بلکہ ریاست کے سربراہ یعنی وزیر اعلی شیوراج سنگھ کے ذریعہ کیا گیا تھا۔ وزیر اعلی کے اعلان کے بعد ریاست کے بہت سے اسپتالوں کے ذریعہ احکام کو نہ مانتے ہوئے مریضوں سے موٹی رقم وصول کی جا رہی تھی جس کو لیکر کانگریس نے حکومت کو تنقید کانشانہ بنایا تھا مگر حکومت خواب غفلت سے بیدار ہونے کو تیار نہیں تھی ۔ اس معاملے میں نیوز 18  کے ذریعہ خبر دکھائے جانے کے بعد نہ صرف بھوپال کے چرایو اسپتال بلکہ جبلپور کے چھ اسپتال اور اندور کے دو اسپتالوں کو نوٹس جاری کیا گیا ہے۔


راجدھانی بھوپال بھوپال کے چرایو اسپتال میں کورونا مریض کو آیوشمان یوجنا کے کارڈ پر مفت علاج دینے سے انکار کرنے اور مریض کے ساتھ اسپتال انتظامیہ کے ذریعہ بدسلوکی کئے جانے کو لیکر بھوپال میں سنت گئو رکشا اتھان سمتی کے کارکنان کے ذریعہ احتجاجی مظاہرہ بھی کیا گیا ۔ سنت گئو رکشا اتھان سمتی کے صدر پنڈٹ یوگیش شرما کہتے ہیں کہ کورونا قہر میں ایسے اسپتالوں کی من مانی کو برداشت نہیں کیاجاسکتا ہے ، جو لوگوں کی مشکلات میں بھی پیسہ بنانے کا مختلف طریقوں سے کام کرتے ہیں ۔


ان کا کہنا تھا کہ بھوپال کے چرایو اسپتال مینجمنٹ نے نہ صرف حکومت کے احکام کو ماننے سے انکار کیا ہے ، بلکہ مریض اور اس کے اہل خانہ کے ساتھ بھی بدتمیزی کی ہے ۔ ہم نے ایس ڈی ایم بیرگڑھ کے توسط سے وزیر اعلی کو میمورنڈم پیش کیاہے اور اگر ایک ہفتے میں کارروائی نہیں ہوتی ہے ، تو یہ آندولن ریاستی سطح پر ان سبھی اسپتالوں کے خلاف کیا جائے گا جو کورونا قہر میں حکومت کے احکام کو نہیں مان رہے ہیں اور مریضوں کو پریشان کر رہے ہیں ۔

وہیں سینئر کانگریس لیڈر پی سی شرما کہتے ہیں کہ ہم تو پہلے دن سے کہہ رہے ہیں کہ حکومت صرف اعلان کرتی ہے ، اس کے بعد بھول جاتی ہے ۔ حکومت نے بڑی مشکل سے آیوشمان یوجنا کے کارڈ ہولڈروں کو مفت علاج دینے کا اعلان تو کیا ، مگر اسپتال اسے مان نہیں رہے ہیں ۔ بہت سے اسپتال بیک ڈیٹ میں مریضوں کو موٹا موٹا بل دے رہے ہیں ۔ کورونا قہر میں مریض کہاں سے لاکھوں روپے کا بل ادا کریں گے ۔ ہمارا تو مطالبہ ہے کہ آیوشمان یوجنا کے کارڈ ہولڈر ہی نہیں سبھی کورونا مریضوں کا مفت علاج کیا جائے اور جن کورونا مریضوں کے بڑے بڑے بل اسپتال والوں نے دئے ہیں اس کی ادائیگی حکومت کی سطح پر کی جائے ۔

مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ آیوشمان یوجنا کے کارڈ ہولڈروں کو علاج دینے سے جن اسپتالوں نے انکار کیا ہے ہے ، ان کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے ۔ جبلپور کے چھ اسپتالوں پر کارروائی کی گئی ہے ۔ چرایو اسپتال بھوپال کو بھی نوٹس جاری کیا گیا ہے ۔ حکومت کے احکام کو جو بھی نہیں مانے گا اس کے خلاف کارروائی ہوگی ۔ کانگریس تو لاشوں پر سیاست کرتی ہے ۔ کورونا قہر میں کانگریس کا بڑا لیڈر ہو یا چھوٹا اگر کہیں عوام کے بیچ کام کرتا نظر آیا ہو تو بتائیں ۔ حکومت کورونا مریضوں کا آیوشمابھارت یوجنا کے کارڈ کے تحت مفت علاج دینے کے اپنے عہد کی پابند ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 18, 2021 09:04 PM IST