உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پریدش : پاکستانی کنکشن رکھنے والوں کے موبائل کی ہوگی فارینسک جانچ

    مدھیہ پریدش : پاکستانی کنکشن رکھنے والوں کے موبائل کی ہوگی فارینسک جانچ

    مدھیہ پریدش : پاکستانی کنکشن رکھنے والوں کے موبائل کی ہوگی فارینسک جانچ

    پولیس نے تھانہ کا گھیراؤ کرنے والوں میں چار ایسے لوگوں کو گزشتہ سنیچر کو گرفتار کیا ہے جو موبائل سے نہ صرف قابل اعتراض مواد پولیس کو ملے ہیں ، بلکہ پولیس نے ان کے پاکستانی کنکشن کا بھی دعوی کیا ہے۔

    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش کے اندور میں چوڑی والا کے ساتھ پیٹائی کئے جانے کے معاملے کو لیکر تھانہ بان گنگا کا گھیراؤ کرنے والوں میں پاکستانی کنکشن رکھنے والے چار ملزمان کے موبائل کی فارینسک جانچ کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اندور بان گنگا کے گووند نگر علاقہ میں بائیس اگست کو  اترپردیش کے ہردوئی سے تعلق رکھنے والے تسلیم کے ساتھ مارپیٹ کا واقعہ پیش آیا تھا۔ چوڑی والا کے ساتھ مار پیٹ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرنے کے مطالبہ کو لیکر اندور کے مقامی لوگوں کے ذریعہ تھانہ کا گھیراؤ کرکے شرپسند عناصر کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

    پولیس نے تھانہ کا گھیراؤ کرنے والوں میں چار ایسے لوگوں کو گزشتہ سنیچر کو گرفتار کیا ہے جو موبائل سے نہ صرف قابل اعتراض مواد پولیس کو ملے ہیں ، بلکہ پولیس نے ان کے پاکستانی کنکشن کا بھی دعوی کیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ چاروں نے اپنے موبائل سے بہت سے میسیج کو ڈیلٹ کردیا ہے ، جس کو ریکورکرنے کے لئے نہ صرف کوشش کی جائیگی بلکہ ان کے موبائل کی فارینسک جانچ بھی کی جائے گی ۔

    اندورمیں بان گنگا تھانہ کے گووند نگر علاقہ میں بائیس اگست کو چوڑی والا کے ساتھ کی گئی مار پیٹ اور تھانہ کا گھیراؤ کرنے کے معاملے میں اندور کے تھانہ کھجرانہ کی پولیس نے عرفان ، التمش ، سید اور جاوید نامی چارلوگوں کو گرفتار کیا ہے ۔ اندور ایس پی آشوتوش باگری کہتے ہیں کہ اب تک پاکستانی کنکشن کے معاملہ میں چار لوگوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے ۔ ان کے موبائل سے قابل اعتراض مواد، ویڈیو کے ساتھ ان کی موبائل پر ہوئی بات چیت کے لنک ملے ہیں ۔

    بہت سے میسیج ان لوگوں نے ڈیلیٹ بھی کر دیئے ہیں ، جس کو ریکور کرنے لئے ان کے موبائل کی فارینسک جانچ کرائی جانچ کرائی جائے گی۔ گرفتار کئے گئے لوگوں سے تفتیش جاری ہے اور آنے والے دنوں میں کچھ اور لوگوں کی گرفتاری کے ساتھ کچھ بڑے انکشاف بھی ہو سکتے ہیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: