உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ویلنٹائن ڈے پر پرپوز ، پھر نشیلی چیز پلا کر آبروریزی ، لڑکی نے بتائی ایم ایل اے کے بیٹے کی یہ کہانی

    ویلنٹائن ڈے پر پرپوز ، پھر نشیلی چیز پلا کر آبروریزی ، لڑکی نے بتائی ایم ایل اے کے بیٹے کی یہ کہانی

    ویلنٹائن ڈے پر پرپوز ، پھر نشیلی چیز پلا کر آبروریزی ، لڑکی نے بتائی ایم ایل اے کے بیٹے کی یہ کہانی

    اندور کی لڑکی سیاست سے وابستہ ہے ۔ اس کی ملاقات کانگریس ممبر اسمبلی کے بیٹے سے ہوئی ۔ اس نے اس کو اہل خانہ سے بھی ملوایا ۔ ویلنٹائن ڈے پر پرپوز بھی کیا ۔ اب لڑکی نے اس پر آبروریزی کا الزام لگایا ہے۔

    • Share this:
      اندور : بڑنگر اسمبلی سیٹ ( اجین کے ) سے کانگریس ممبر اسمبلی موروال کے بیٹے کرن موروال پر اندور کی ایک لڑکی نے آبروریزی کا الزام لگایا ہے ۔ لڑکی نے پولیس کو شکایت میں بتایا ہے کہ کرن نے ویلنٹائن ڈے پر اندور بائی پاس پر واقع ایک ہوٹل میں پرپوز کیا اور شادی کرنے کا جھانسہ دیا ۔ اس نے نشیلی چیز پلا کر گھر لے جاکر اس کی آبروریزی کی ۔

      لڑکی نے پولیس کو بتایا کہ وہ بھی سیاست سے وابستہ ہے ، جس کی وجہ سے ممبر اسمبلی کے بیٹے کے رابطے میں آئی اور پھر ان کی دوستی ہوگئی ۔ لڑکی نے الزام لگایا کہ وہ ڈیڑھ مہینے سے شادی کیلئے کہہ رہی ہے ، لیکن کرن موروال اس سے نہ صرف دوری بنا رہا ہے بلکہ دھمکی بھی دے رہا ہے ۔ ایک گینگسٹر سے بھی اس نے مجھے اور میرے کنبہ کو مروانے کی سپاری دینے کی بات کہی تھی ۔ بعد میں اس نے پولیس میں شکایت کی بات کہی تو روپے لے کر معاملہ ختم کرنے کیلئے دباو بنانے لگا ۔

      اس سلسلہ میں خاتون تھانہ انچارج جیوتی شرما نے معاملہ درج کرنے کی تصدیق کی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اندور کی لڑکی 28 سال کی ہے اور اس نے کرن موروال کے خلاف آبروریزی اور دھمکی دینے کی دفعات کے تحت کیس درج کرایا ہے ۔ ملزم کرن موروال کے والد بڑنگر اسمبلی سیٹ سے کانگریس ممبر اسمبلی ہیں ۔ لڑکی نے پولیس کو بتایا کہ میری کرن سے ملاقات دسمبر 2020 میں ایک سیاسی پروگرام میں ہوئی تھی ۔ اسی دوران اس نے دوستی کی اور پھر مجھ سے بات چیت بڑھانے لگا ۔

      لڑکی نے مزید بتایا کہ دھیرے دھیرے وہاٹس ایپ اور موبائل پر باتیں ہونے لگیں ۔ کئی مرتبہ یہ ملنے کیلئے اندور بھی آیا ۔ اس نے شادی کا جھانسہ دے کر مجھے اس کے بھائی اور بہن سے بھی ملوایا ۔ اس کے دوست بھی مجھے بھابھی بلانے لگے تھے ۔ بعد میں اندور میں کھجرانا مندر میں شادی کا وعدہ کیا اور پھر اس کے ساتھ میں متھرا بھی گئی ۔ وہاں سے آنے کے بعد قربت بڑھنے لگی تو اس نے 14 فروری کو نشیلی اشیا پلا کر آبروریزی کی ۔ واقعہ کے بعد اس نے مجھ سے دوری بنانی شروع کردی ۔ میں نے کئی مرتبہ شادی کیلئے کہا تو وہ مجھے دھمکی اور گالیاں دینے لگا ۔ اس کی سب ریکارڈنگ میرے پاس ہے ۔

      ادھر دوسری جانب ممبر اسمبلی مرلی موروال نے اندور ڈی آئی جی سے ملاقات کی ۔ موروال کا کہنا ہے کہ لڑکی بیٹے کو بلیک میل کررہی ہے ۔ وہ رپورٹ درج ہونے سے دو دن پہلے ہی اندور ڈی آئی جی کو درخواست دے کر پورے واقعہ سے واقف کروا چکے تھے ۔ ڈی آئی جی کو بتایا تھا کہ لڑکی سے بیٹے کی ملاقات تقریبا تین سال پہلے کانگریس کی میٹنگ میں ہوئی تھی ۔ اس کے بعد دوستی رہی ، لیکن لڑکی نے بیٹے سے شادی کیلئے دباو بنایا ۔ اسی کو لے کر وہ بلیک میل کررہی تھی اور دھمکی دے رہی تھی شادی نہیں کی تو آبروریزی کے کیس میں پھنسا دے گی ۔

      ممبر اسمبلی نے کہا کہ میں نے بھی اندور ڈی آئی جی سے سچائی پتہ کرنے کیلئے جانچ کا مطالبہ کیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: