உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : اندور میں بڑے آن لائن سیکس ریکیٹ کا پردہ فاش، کئی نامی لوگ ہیں اس کے گراہک!

    اندور میں بڑے آن لائن سیکس ریکیٹ کا پردہ فاش، کئی نامی لوگ ہیں اس کے گراہک!

    اندور میں بڑے آن لائن سیکس ریکیٹ کا پردہ فاش، کئی نامی لوگ ہیں اس کے گراہک!

    Sex Racket in Indore : جسم فروشی کے تمام معاملات آن لائن ہو رہے تھے۔ پولیس نے 5 نوجوانوں اور دو لڑکیوں کو گرفتار کیا ہے۔ جائے واقعہ سے بھاری مقدار میں قابل اعتراض اشیا برآمد کی گئی ہیں ۔

    • Share this:
      اندور : اندور میں ایک بڑے سیکس ریکیٹ کا پردہ فاش ہوا ہے ۔ پتہ چلا ہے کہ کئی مشہور لوگ اس گروہ کے گراہک ہیں۔ جسم فروشی کے تمام معاملات آن لائن ہو رہے تھے۔ پولیس نے 5 نوجوانوں اور دو لڑکیوں کو گرفتار کیا ہے۔ جائے واقعہ سے بھاری مقدار میں قابل اعتراض اشیا برآمد کی گئی ہیں ۔

      اندور کی وجے نگر پولیس نے کچھ عرصہ قبل جسم فروشی کے گروہ کا پردہ فاش کیا تھا۔ اس میں بنگلہ دیشی لڑکیوں کو زبردستی اندور لا کر جسم فروشی کا دھندہ کروانے کا معاملہ سامنے آیا تھا۔ ان سبھی لڑکیوں کو بیرون ممالک سے بھی غیر قانونی طور پر ہندوستان لایا گیا تھا ۔ ایک بڑی سیکورٹی ایجنسی اس معاملہ کی جانچ کر رہی ہے ۔ اس کے بعد بھی شہر میں جسم فروشی کا دھندہ تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے ۔

      اس مرتبہ لسوڑیا علاقہ میں سیکس ریکیٹ کا پردہ فاش ہوا ہے ۔ پولیس نے ایک مکان پر چھاپہ مار کر بھاری مقدار میں قابل اعتراض اشیا قبضے میں لی ہے ۔ ساتھ ہی مشتبہ سرگرمیوں کی بنیاد پر کل سات افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ، جس میں دو لڑکیاں بھی شامل ہیں ۔ ایک لڑکی ہریانہ کی ہے اور دوسری مدھیہ پردیش کی ہے۔ لسوڑیا تھانہ پولیس کو اپنے علاقہ میں غیر اخلاقی سرگرمیوں کی شکایت موصول ہوئی تھی ۔ اس کی بنیاد پر پولیس نے جال بچھا چکی تھی، لیکن اکثر وہ خالی ہاتھ ہی رہی تھی، کیونکہ گروہ کی لیڈر لڑکی بہت شاطر ہے ۔

      یہ گروہ ہائی ٹیک ہے ۔ جسم فروشی کے تمام معاملات آن لائن کررہا تھا ۔ گروہ کی سرغنہ لڑکی نے ایک ویب سائٹ تیار کروائی تھی اور اس پر سرچ کرتے ہی آن لائن میٹنگ طے ہوتی تھی ۔ پھر ویب سائٹ کے ذریعہ ہی ملنے کی جگہ طے کی جاتی تھی ۔ گروہ کی سرغنہ ، گراہک کے ذریعہ بتائے گئے جگہ پر کال گرل کو بھیج دیتی تھی ، جس کی وجہ سے پولیس کیلئے گراہک اور گروہ کو پکڑنا ایک چیلنج بن گیا تھا ۔

      اس وجہ سے پولیس نے بھی تکنیک کا استعمال کیا اور جال بچھاکر علاقہ سے ہی سات لوگوں کو گرفتار کرلیا ۔ گرفتار نوجوان اجین ، راجستھان اور اندور کے رہنے والے ہیں ۔ پتہ چلا ہے کہ ہریانہ کی لڑکی کچھ وقت پہلے ہی اندور آئی تھی اور اس گروہ کے رابطے میں تھی ۔

      پولیس نے ملزمین کو گرفتار کرکے جائے واقعہ سے کئی قابل اعتراض اشیا ، موبائل ، نقدی اور دیگر چیزیں برآمد کی ہیں ۔ ابتدائی پوچھ گچھ میں ملزمین نے کئی راز کھولے ہیں ، جس سے ثابت ہوگا ہے کہ اس گروہ سے کئی بڑے لوگ بھی وابستہ ہیں ۔ پولیس جلد ہی ان سے بھی پوچھ گچھ کرسکتی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: