உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : جمعیت علما نے منتخب اساتذہ کے ساتھ اردو اساتذہ کی تقرری کا کیا مطالبہ

    مدھیہ پردیش : جمعیت علما نے منتخب اساتذہ کے ساتھ اردو اساتذہ کی تقرری کا کیا مطالبہ

    مدھیہ پردیش : جمعیت علما نے منتخب اساتذہ کے ساتھ اردو اساتذہ کی تقرری کا کیا مطالبہ

    مدھیہ پردیش جمعیت علما اور سدبھاؤنا منچ کے زیر اہتمام بھوپال میں اردو اساتذہ کی تقرری کو لے کر میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ میٹنگ میں ریاست گیر سطح پر اردو اساتذہ کی تقرری کو لے کر تحریک چلانے اور گورنر کے ساتھ وزیر اعلی سے بھی ملاقات کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش میں تین سال سے بھٹک رہے منتخب اساتذہ کو تقرری دینے کا  شیوراج سنگھ حکومت نے فیصلہ کیا ہے ۔ بھوپال منترالیہ میں سرکاری ملازمین کی تقرری کے ساتھ ملازمین کو پروموشن کو لے کر منعقدہ گروپ آف منسٹرس کی  میٹنگ میں تین سال سے التوا میں پڑے منتخب اساتذہ کی تقرری کو لے کر غور کیا گیا۔ گروپ آف منسٹرس کی تجویز پر حکومت نے محکمہ تعلیم سے ریاست کے اسکولوں کی فہرست طلب کی ہے ، جہاں پر اساتذہ کی ضرورت ہے ۔ اسکولوں میں اساتذہ کی ضرورت کے مطابق انہیں تقرری لیٹر جاری کیا جائے گا۔

    واضح رہے کہ مدھیہ پردیش میں اٹھارہ سمتبر دوہزار اٹھارہ کو اساتذہ کی تقرری کو لے کر اشتہار جاری کیا گیا تھا۔ چھبیس ہزار چھ سو بہتر اساتذہ کی تقرری کے لئے مدھیہ پردیش کے علاوہ دوسری ریاستوں سے پانچ لاکھ سے زیادہ لوگوں نے درخواست کی تھی۔ جنوری دوہزار انیس میں اساتذہ کی لیاقت کا ٹیسٹ منعقد کیا گیا اور پاس ہونے والے طلبہ کے دستاویز کی تصدیق بھی کی گئی ، لیکن ان منتخب اساتذہ کو آج تک تقرری نہیں دی گئی ۔ منتخب اساتذہ نے پہلے کمل ناتھ حکومت میں اپنی تقرری کو لے کر احتجاج کیا اور میمورنڈم دیا اور جب مارچ دوہزار بیس میں شیوراج سنگھ کی قیادت میں ریاست میں بی جے پی کی پھر سرکار بنی اس کے بعد وزرا سے ملاقات کے علاوہ بی جے پی دفتر کا بھی گھیراؤ کرکے تقرری کا مطالبہ کیا گیا۔

    منتخب اساتذہ کے ذریعہ ابتک اٹھائیس بار تقرری احکام جاری کرنے کو لے کر میمورنڈم پیش کیا جا چکا ہے ۔ نیوز 18 اردو کی تفصیلی رپورٹ کے بعد آج منترالیہ میں گروپ آف منسٹرس کی میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ میٹنگ میں سرکاری ملازمین کی تقرری ، پروموشن کے ساتھ منتخب اساتذہ کی تقرری پر بھی غور کیا گیا۔

    مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ کمل ناتھ حکومت میں منتخب اساتذہ کے ساتھ دھوکہ کیا گیا تھا ، مگر شیوراج سنگھ حکومت اپنے وعدہ پر پابند ہے۔ منتخب اساتذہ کی تقرری کو لے کر کام جاری ہے ۔ محکمہ تعلیم سے تفصیلی رپورٹ طلب کی گئی ہے ۔ محکمہ تعلیم سے رپورٹ آنے کے بعد جہاں پر جیسے اساتذہ کی تقرری کی ضرورت ہوگی ہے ، انہیں تقرر کیا جائے گا۔

    مدھیہ پردیش جمعیت علما اور سدبھاؤنا منچ کے زیر اہتمام بھوپال میں اردو اساتذہ کی تقرری کو لے کر میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ میٹنگ میں ریاست گیر سطح پر اردو اساتذہ کی تقرری کو لے کر تحریک چلانے اور گورنر کے ساتھ وزیر اعلی سے بھی ملاقات کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ مدھیہ پردیش جمعیت علما کے صدر حاجی محمد ہارون کہتے ہیں کہ حکومت نے منتخب اساتذہ کو تین سال بعد تقرری دینے کا فیصلہ کیاہے ، ہم اس کا خیر مقدم کرتے ہیں اور اسی کے ساتھ ہم حکومت سے اردو اساتذہ کی تقرری کے لئے بھی قدم اٹھانے کا مطالبہ کرتے ہیں ۔ نئی ایجوکیشن پالیسی کے تحت آرٹس کے علاوہ سائنس اور کامرس کے طلبہ کو بھی اردو مضمون پڑھنے کی  پہل تو کی گئی ہے ، مگر جب اسکولوں میں اساتذہ ہی نہیں ہیں تو طلبہ کیسے اردو کی تعلیم حاصل کریں گے ۔

    رائے عامہ کو ہموار کرنے کے ساتھ جمعیت علما اور سد بھاؤنا منچ کے بینر تلے مشترکہ طور پر ریاست گیر سطح پر اردو اساتذہ کی تقرری کو لے کر تحریک چلائی جائے گی ۔ ساتھ  ہی گورنر اور وزیر اعلی سے بھی اس سلسلہ میں اعلی سطحی وفد ملاقات کرے گا۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: