உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    MP News: بھوپال کے منصور فاروقی کے پاس محمد رفیع کے نغموں کا نایاب کلکشن موجود

    MP News: بھوپال کے منصور فاروقی کے پاس محمد رفیع کے نغموں کا نایاب کلکشن موجود

    MP News: بھوپال کے منصور فاروقی کے پاس محمد رفیع کے نغموں کا نایاب کلکشن موجود

    Bhopal News : ممتاز فلم گلوکار محمد رفیع کی برسی کے موقع پر بھوپال میں محمد رفیع میموریل فاؤنڈیشن کے ذریعہ محمد رفیع کے نغموں اور ان سے وابستہ کلیکشن کی خصوصی نمائش کا اہتمام کیا گیا ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh | Bhopal | Bhopal
    • Share this:
    بھوپال : ممتاز فلم گلوکار محمد رفیع کی برسی کے موقع پر بھوپال میں محمد رفیع میموریل فاؤنڈیشن کے ذریعہ محمد رفیع کے نغموں اور ان سے وابستہ کلیکشن کی خصوصی نمائش کا اہتمام کیا گیا ۔ بھوپال جہانگیر آباد میں واقع رفیع منسن میں لگائی گئی محمد رفیع کے کلیکشن کی خصوصی نمائش میں محمد رفیع کے تیس زبانوں میں گائے ہوئے پانچ ہزار پانچ سو باون نغموں کی نمائش کی گئی ۔ نمائش میں رفیع کے شیدائیوں نے شرکت کی اور محمد رفیع کے تعلق سے منصور فاروقی کے کلیکشن کو بے مثل قرار دیا ۔

    واضح رہے کہ بھوپال کے منصور فاروقی کو محمد رفیع سے انتہا درج کا عشق ہے ۔ منصور فاروقی کو رفیع سے یہ عشق ان کی زندگی میں نہیں ہوا بلکہ محمد رفیع کے انتقال کے بعد اس وقت ہوا جب انہیں معلوم ہوا کہ محمد رفیع نے ہندی اردو کے ساتھ تیس زبانوں میں گیت گنگنائے ہیں ۔ یہیں سے انہوں نے محمد رفیع کے نغموں کو جمع کرنے کا سلسلہ شروع کیا اور آج ان  کے کلیکشن میں سات بیرون ملک کی زبانوں کے ساتھ ہندستانی کے مختلف صوبوں میں بولی جانے والی زبانوں میں پانچ ہزار پانچ سو باون نغموں کا کلیکشن موجود ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے:  ارپتا مکھرجی کے 8 بینک کھاتوں سے 8 کروڑ کا لین دین، ای ڈی جانچ میں انکشاف


    منصور فاروقی نے نیوز 18 اردو سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آج کا دن اپنے محسن کو یاد کرنے کا ہے ۔ بھوپال دلیپ کمار سے بھی عشق کا بہت دعوی کرتا تھا اور اس بھوپال میں دلیپ کمار کا ولیمہ بھی کیاگیا تھا مگر پچھلے دنوں ان کی برسی پر خاموشی چھائی رہی ۔ محمد رفیع سے بھوپال کا عشق سر چڑھ کر بول رہا ہے ۔ محمد رفیع میموریل فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام منعقدہ نمائش میں جو لوگ آئے ہیں وہ اتنے سارے نغموں کا کلیکشن دیکھ کر ہی عش عش کر اٹھتے ہیں ۔اس میں پشتو زبان میں گایا ہوا محمد رفیع کا ایسا  بھی نغمہ جس کا کیسٹ پانچ ہزار میں خریدا گیا تھا۔ میں نے محمد رفیع کی یاد کو ہمیشہ اپنے ساتھ رکھنے کے لئے اپنے بیٹے کا نام بھی رفیع رکھا ہے اور گھر کا نام بھی محمد رفیع سے معنون کرتے ہوئے رفیع مینسن رکھا ہے۔ خواہش یہی ہے کہ حکومت ان کے نام سے بعد از مرگ بھارت رتن اعزاز کا اعلان کرے ۔

    محمد رفیع میموریل فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام منعقدہ نمائش کا افتتاح ممتاز براڈ کاسٹر راجیش بھٹ نے کیا۔ راجیش بھٹ نے اپنے خطاب میں کہا کہ رفیع صاحب کا نام گلوکاری کی دنیا میں امر ہوگیا ہے ۔ان کا جسم دنیا سے ضرور چلا گیا ہے لیکن انہوں نے جس خاص انداز میں گیت گنگنائے ہیں وہ ہمیشہ کے لئے امر ہوگیا ہے ۔ ایسا نہیں ہے کہ رفیع کے نغموں کے دیوانے وہی لوگ ہیں جو ابھی دنیا میں ہیں بلکہ جو دنیا میں آنے والے ہیں جب وہ محمد رفیع کے نغموں کو سنیں گے تو وہ بھی رفیع کا ہی نام گنگنائیں گے ۔ منصور فاروقی کا کام بے مثال ہے اور اس کو عوام کے سامنے بار بار لانے کا انتظام کیا جانا چاہئے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: دہشت گردی کےخلاف کریک ڈاؤن جاری، IS کےڈیجیٹل واریئرزکی 7 ریاستوں میں تلاشی


    ممتاز شاعر ساجد رضوی نے نمائش دیکھنے کے بعد اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایساکام جسے بڑے سے بڑے ادارے نہیں کر سکے۔ منصور فاروقی نے تنہا کیسے کیا اسے دیکھ کر حیرت ہوتی ہے ۔ میں نے رفیع کے حوالے سے بہت سے کلیکشن دیکھے ہیں بہت سے دیوانوں کو دیکھا اور سنا ہے مگر سب منصور فاروقی کے سامنے بونے نظر آتے ہیں ۔

    نمائش میں محمد رفیع کے نغموں کو انہیں کے انداز میں کئی لوگوں نے گنگنا یا بھی ۔ بھوپال کے سید محمد عارف محمد رفیع کے ایسے دیوانے ہیں جو بصارت سے محروم ہیں مگر انہیں محمد رفیع کے ہزاروں نغمے زبانی یاد ہیں ۔ سید عارف کی یاد داشت کا یہ عالم ہے کہ آپ رفیع کے گیت کا نام لیجیے وہ آپ کو یہ بتائیں گے کہ یہ نغمہ کب لکھا گیا اور اس کے لئے میوزک کس نے کمپوز کی اور کون سا گیت کب ریکارڈ کیاگیا۔

    سید عارف نے نیوز 18 اردو سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ محمد رفیع سے کتنا عشق ہے اسے لفظوں میں تو بیان نہیں کرسکتا ہوں مگر ان کا گایا ہوا شاید ہی کوئی نغمہ ایسا ہو جو انہیں یاد نہ ہو۔ عبادت کے بعد رفیع کے نغموں کو ہی گنگناتا رہتا ہوں اور اس سے تسکین ہوتی ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: