ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

لاک ڈاون کے دوران سیاسی دعوے اور بے بس مزدور ، یہ ایک تصویر آپ کے رونگٹے کھڑے کردے گی

ہائی وے پر پیدل جانے والا رامو اکیلا نہیں ہے ، بلکہ ایسے ہزاروں کی تعداد میں لوگ ہیں ۔ کوئی سائیکل سے تو کسی نے بیلوں کی جوڑی مکمل نہ ہونے پر بیل کے ساتھ خود کو لگایا اور منزل کی جانب نکل پڑا ۔

  • Share this:
لاک ڈاون کے دوران سیاسی دعوے اور بے بس مزدور ، یہ ایک تصویر آپ کے رونگٹے کھڑے کردے گی
لاک ڈاون کے دوران سیاسی دعوے اور بے بس مزدور ، یہ ایک تصویر آپ کے رونگٹے کھڑے کردے گی

حکومتوں کے ذریعہ مزدوروں کو لانے کے بڑے بڑے دعوی تو کئے جا رہے ہیں ، اس کے برخلاف آپ ہائی وے پر جائیے تو آپ کو پیدل جانے والے بے بس مزدوروں کا امنڈتا کارواں نظر آئے گا ۔ مدھیہ پردیش حکومت نے کل بارڈر سے بارڈر تک تین سو پچھہتر بسوں کو چلانے کا اعلان کیا تھا ۔ اب سوال یہ اٹھتا ہے کہ اگر حکومت بسیں چلا رہی ہے ، تو ان بسوں میں کون سفر کر رہا ہے اور یہ پیدل جانے والے کون لوگ ہیں ۔


رامو نام کا ایک شخص حیدر آباد میں روٹی کی تلاش میں گھر چھوڑکر نکلا تھا ، لیکن جب وہاں پر پیٹ کی آگ بجھانے کے لئے روٹی مشکل ہوگئی اور حکومت کی جانب سے کوئی مدد نہیں ملی ، تو رامو نے اپنے ہاتھوں سے گاڑی بنائی اور اس گاڑی میں حاملہ بیوی اور دو سال کے بیٹے کو بیٹھاکر گاڑی کو کھینچتا ہوا پیدل ہی منزل کی جانب نکل پڑا ۔ رامو کا کہنا ہے کہ آٹھ سو کلومیٹر کے سفر میں کسی نے اس کی مدد نہیں کی ۔ راستہ میں ایک جگہ کھانا دیا گیا ، لیکن وہ ایسا نہیں تھا ، جسے کھایا جا سکے ۔ رامو بالا گھاٹ تک کا سفر طے کر چکا ہے ابھی اسے آگے اور گریڈیہہ تک جانا ہے ۔




ہائی وے پر پیدل جانے والا رامو اکیلا نہیں ہے ، بلکہ ایسے ہزاروں کی تعداد میں لوگ ہیں ۔ کوئی سائیکل سے تو کسی نے بیلوں کی جوڑی مکمل  نہ ہونے پر بیل کے ساتھ خود کو لگایا اور منزل کی جانب نکل پڑا ۔

ادھر مدھیہ پردیش کے سابق وزیر کمل ناتھ نے بھی بیل گاڑی کے ساتھ اپنا کندھا لگائے جا رہے کسان کا فوٹو ٹویٹ کر کے شیوراج سنگھ حکومت سے پوچھا ہے کہ پیدل مزدوروں کیلئے جو انتظامات کئے گئے ہیں ، وہ کہاں ہیں ۔ یہ جو لو گ پیدل جا رہے ہیں ، سرکار نے ان کے لئے کیا اتنظام کیا ہے ۔ کمل ناتھ نے شیوراج سنگھ کومنترالیہ کے اے سی کمروں سے باہر آنے اور بے بس مزدوروں کے لئے ٹھوس انتظام کرنے کی اپیل کی ہے ۔ کمل ناتھ نے شیوراج سنگھ سرکار پر یہ بھی الزام لگایا کہ پیدل جانے والے مزدوروں کی اسکریننگ کا بھی کوئی انتظام نہیں ہے اور نہ ہی ان کے لئے کسی قسم کی طبی سہولیات ہیں اور سوشل ڈسٹنس کا بھی نفاذ نہیں ہور ہا ہے ۔



وہیں دوسری جانب سی ایم شیوراج سنگھ نے کمل ناتھ کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ کھلی آنکھوں سے دیکھیں تو مزدوروں کے لئے کام کیا گیا ہے اور آگے بھی کام جاری ہے ۔ شیوراج سنگھ نے کانگریس کو مشکل وقت میں سیاست نہیں بلکہ عملی اقدامات کرنے کی صلاح دی ۔

سیاست کی بات تو سیاست کے لوگ جانیں ، لیکن اتنا تو سچ ہے کہ حکومتوں کے انتظامات کافی نہیں ہیں ۔ اگر انتظامات کافی ہوتے ، تو سڑکوں پر پیدل جانے والے مزدوروں کی یہ قطار ہمیں دکھائی نہیں دیتی ۔ اس کے ساتھ یہ بھی سچ ہے کہ سرکاروں نے بسوں اور ٹرینوں کو چلانے کا جو انتظام کیا ہے وہ ان کے لئے ہے ، جو ٹکٹ کی ادائیگی کرسکتے ہیں ان کے لئے نہیں ہے جن کی جیب خالی ہے۔
First published: May 15, 2020 12:22 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading