உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : شکھر سمان کیلئے بھوپال کے نعیم کوثر اور دیوی سرن کے نام کا اعلان ہونے پر ادیبوں میں خوشی کی لہر

    مدھیہ پردیش : شکھر سمان کیلئے بھوپال کے نعیم کوثر اور دیوی سرن کے نام کا اعلان ہونے پر ادیبوں میں خوشی کی لہر

    مدھیہ پردیش : شکھر سمان کیلئے بھوپال کے نعیم کوثر اور دیوی سرن کے نام کا اعلان ہونے پر ادیبوں میں خوشی کی لہر

    مدھیہ پردیش محکمہ ثقافت کے ذریعہ ادب و ثقافت کے مختلف میدان میں نمایاں کارکردگی کے لئے قومی شکھر اور اقبال سمان سمیت اکیس سمانوں کے لئے بیالیس ادیب و فنکاروں کے نام کا اعلان کئے جانے پر مدھیہ پردیش کے ادیبوں نے خیر مقدم کیا ہے۔

    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش محکمہ ثقافت کے ذریعہ ادب و ثقافت کے مختلف میدان میں نمایاں کارکردگی کے لئے قومی شکھر اور اقبال سمان سمیت اکیس سمانوں کے لئے بیالیس ادیب و فنکاروں کے نام کا اعلان کئے جانے پر مدھیہ پردیش کے ادیبوں نے خیر مقدم کیا ہے۔ محکمہ ثقافت کے ذریعہ کل ہند اقبال سمان کے لئے پٹنہ کی ممتاز ادیبہ ذکیہ مشہدی اور الہ آباد کے ممتاز ادیب و ناقد پروفیسر علی احمد فاطمی کے نام کا جہاں اعلان کیا گیا ہے ۔ وہیں کل ہند شکھر سمان کے لئے بھوپال کی دو اہم شخصیات ممتاز افسانہ نگار نعیم کوثر اور دیوی سرن کے نام کا اعلان کیا گیا ہے ۔ مدھیہ پردیش کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے جب بیک وقت اردو کے شکھر سمان کے لئے بھوپال کے دو ادیبوں کے نام کا ایک ساتھ اعلان کیا گیا ہے ۔ ممتاز افسانہ نگار نعیم کوثر کو سال دو ہزار انیس کے با وقار شکھر سمان اور دیوی سرن کو سال دوہزار بیس کے شکھر سمان سے سرفراز کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

    مدھیہ پردیش محکمہ ثقافت کے ذریعہ امسال سال دوہزار انیس اور دوہزار بیس کے لئے ادب و ثقافت کے میدان میں نمایاں کارکردگی کے لئے اکیس سمانوں کے ساتھ  بیالیس شخصیات کے ناموں کا اعلان کیا گیا ہے۔ ان اعزاز میں جہاں کبیر سمان، کالیداس سمان، کشورسمان، لتا منگیشکر سمان، میتھلی شرن گپت سمان، شرد جوشی سمان، نانا جی دیشمکھ سمان، کمار گندھرو سمان شامل ہے ۔ وہیں حکومت کے ذریعہ سال دوہزار انیس اور بیس کے کے لئے قومی اقبال سمان اور شکھر سمان کا بھی اعلان  کیا گیا ہے۔

    مدھیہ پردیش محکمہ ثقافت کے ذریعہ سال دوہزار انیس کے لئے باوقار شکھر سمان کے لئے بھوپال کے ممتاز افسانہ نگار نعیم کوثرکے نام کا اعلان  کیا گیا ہے ۔ نیوز18 اردو سے خاص ملاقات میں ممتاز افسانہ نگار نعیم کوثر نے شکھر سمان کے لئے حکومت کے اعلان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایوارڈ کے ملنے سے فنکار کو جہاں لکھنے کا نیا حوصلہ ملتا ہے وہیں اس کے مداحوں اور قارئین کے ذریعہ اس کی تحریر کو لے کر جو سند ملتی ہے اس پر مہر لگتی ہے ۔ اسی کے ساتھ فنکار کے لئے چیلنج بھی بڑھتا ہے کہ  اس کے قاری اس کی تحریروں میں مزید نکھار اوروسعت دیکھنا چاہتے ہیں ۔

    واضح رہے کہ نعیم کوثر کا شمار نہ صرف مدھیہ پردیش بلکہ ملک وبیرون ملک کے مستند افسانہ نگاروں میں ہوتا ہے ۔ نعیم کوثر کے افسانوی مجموعوں میں آخری رات، اگنی پریکشا، اقرار نامہ ، خوابوں کے مسیحا، کہرے کا چاند ، کال کوٹھری وغیرہ کے نام  قابل ذکر ہیں ۔ وہیں شکھر سمان دوہزار بیس کے لئے بھوپال کے ادیب دیوی سرن کے نام کا اعلان کیا گیا ہے ۔ دیوی سرن ہمہ جہت شخصیت کے مالک ہیں ۔ دیوی سری کی تعلیم و تربیت بھوپال میں ریاستی عہد میں اردو میں ہوئی تھی۔ وہ مدھیہ پردیش کے مختلف شہروں میں انتظامیہ کے اعلی عہدے پر بھی فائز رہے ہیں ۔

    بھوپال میونسپل کارپوریشن میں بھی دیوی سرن نے بطور کمشنر اپنی خدمات انجام دی ہیں ۔ دیوی سرن کی اردو میں لکھی گئی کتاب یاران مہربان کو اردو کے ادبی حلقوں میں خوب پذیرائی ہوئی تھی ۔ دیوی سرن نے نیوز18 اردو سے خاص ملاقات میں کہا کہ جب انہییں شکھر سمان کی اطلاع نیوز18 اردو کے ذریعہ ملی تو وہ بہت دیر تک اس بارے میں سوچتے رہے ۔ ایوارڈ کے ملنے پر مجھے ازحد خوشی ہے اور میں اب یہ کوشش کروں گا کہ اس اعزاز کا وقار مجروح نہ ہو اور اردو کے لئے اپنی تحریک کو مزید تیز کروں گا۔ جس عہد میں ہماری تعلیم کا سلسلہ شروع ہوا تھا وہ واقعی اردو کا عہد زریں تھا۔ مگر اب اردو کے حالات کو دیکھ کرمایوسی ہوتی ہے ۔ ہماری کوشش ہے کہ اردو کے لئے ماحول کو سازگار کیا جائے ۔ تاکہ اردو کا عظیم ادبی سرمایہ با وقار طریقے سے نئی نسل کو منتقل کیا جا سکے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: