ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

دو نوجوانوں کے ساتھ کمرے میں یہ کام کررہی تھی بیوی ، اچانک پہنچ گیا شوہر، پھر ہوا کچھ ایسا ، جان کر اڑجائیں گے ہوش

Indore News: اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ ہمانشو رتلام میں نوکری کرتا ہے ۔ اس کو اپنی بیوی پر شک تھا تو وہ اس سے ملنے کیلئے اندور پہنچ گیا ۔ بیوی نے جیسے ہی دروازہ کھولا تو وہ حیران رہ گیا ۔ اس کی بیوی دیگر دو نوجوانوں کے ساتھ کمرے میں تھی۔

  • Share this:
دو نوجوانوں کے ساتھ کمرے میں یہ کام کررہی تھی بیوی ، اچانک پہنچ گیا شوہر، پھر ہوا کچھ ایسا ، جان کر اڑجائیں گے ہوش
دو نوجوانوں کے ساتھ کمرے میں یہ کام کررہی تھی بیوی ، اچانک پہنچ گیا شوہر، پھر ہوا کچھ ایسا ، جان کر اڑجائیں گے ہوش ۔ فائل فوٹو ۔

اندور : مدھیہ پردیش کے اندور سے عجیب و غریب خبر سامنے آئی ہے ۔ یہاں ایک بیوی نے اپنے ہی شوہر کو جان سے مارنے کی کوشش کی ۔ بیوی نے دو لوگوں کے ساتھ مل کر شوہر کو چوتھی منزل سے دھکا دیدیا ۔ زخمی شخص کو مہاراجا یشونت راو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ۔ نوجوان موت کے ڈر سے بیان بھی بدل رہا ہے ۔ پولیس نے اس معاملہ میں کیس درج کرلیا ہے ۔


پولیس کے مطابق زخمی شخص کا نام ہمانشو چوہان ہے ۔ وہ اندور کے کناڑیا تھانہ علاقہ کے بھوری ٹیکری پر رہتا ہے ۔ اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ ہمانشو رتلام میں نوکری کرتا ہے ۔ اس کو اپنی بیوی پر شک تھا تو وہ اس سے ملنے کیلئے اندور پہنچ گیا ۔ بیوی نے جیسے ہی دروازہ کھولا تو وہ حیران رہ گیا ۔ اس کی بیوی دیگر دو نوجوانوں کے ساتھ کمرے میں تھی۔ ہمانشونے مخالفت کی تو بیوی اور دونوں نوجوانوں نے ہمانشو کے ساتھ جم کر مار پیٹ کی اور اس کو چوتھی منزل سے پھینک دیا ۔ ہمانشو کو منہ ، پیر اور کمر میں فریکچر ہے ۔ اس کی حالت سنگین ہے ۔


چیخ پکار سن کر بلڈنگ کے لوگ باہر آئے اور نوجوان کو زخمی حالت میں دیکھا ۔ انہوں نے ہمانشو کو 108 ایمبولینس کی مدد سے اسپتال میں بھرتی کرایا ۔ حادثہ کی اطلاع ملنے پر جب پولیس ہمانشو کا بیان لینے کیلئے پہنچی تو اس نے کہا کہ پاوں پھسلنے کی وجہ سے گرگیا ۔ وہیں اہل خانہ نے بیوی اور دیگر نوجوانوں پر بلڈنگ سے نیچے پھینکنے کا الزام لگایا ہے ۔


پولیس اہل خانہ کے بیان کی بنیاد کی سنگین جانچ کررہی ہے ۔ اہل خانہ نے ملزمین کے نام چھوٹو اور پرویز بتائے ہیں ۔ اہل خانہ کے مطابق ہمانشو کے منہ میں کپڑا ٹھونس کر اس کی پٹائی کی گئی ، جس کی وجہ سے اس کی آواز کسی کو سنائی نہیں پڑی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 25, 2021 09:24 AM IST