உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Madhya Pradesh: کھرگون تشد د کو لے کر بی جےپی اور کانگریس میں چھڑا سیاسی گھمسان

    Madhya Pradesh: کھرگون تشد د کو لے کر بی جےپی اور کانگریس میں چھڑا سیاسی گھمسان

    Madhya Pradesh: کھرگون تشد د کو لے کر بی جےپی اور کانگریس میں چھڑا سیاسی گھمسان

    Khargone violence : مدھیہ پردیش کے کھرگون میں دس اپریل کو ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کو لیکر بی جے پی اور کانگریس کے درمیان سیاسی گھمسان چھڑ گیا ہے۔ کھرگون تشدد اور انتظامیہ کی یکطرفہ کاروائی کے خلاف مدھیہ پردیش کانگریس کے سابق صدر و سابق مرکزی وزیر اعلی ارون یادو کی قیادت میں مدھیہ پردیش کے ڈی جی پی کو میمورنڈم پیش کرکے یکطرفہ کاروائی کوروکنے اور پورے معاملے کی اعلی سطحی جانچ کر کے خاطیوں پر کاروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔

    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش کے کھرگون میں دس اپریل کو ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کو لیکر بی جے پی اور کانگریس کے درمیان سیاسی گھمسان چھڑ گیا ہے۔ کھرگون تشدد اور انتظامیہ کی یکطرفہ کاروائی کے خلاف مدھیہ پردیش کانگریس کے سابق صدر و سابق مرکزی وزیر اعلی ارون یادو کی قیادت میں مدھیہ پردیش کے ڈی جی پی کو میمورنڈم پیش کرکے یکطرفہ کاروائی کوروکنے اور پورے معاملے کی اعلی سطحی جانچ کر کے خاطیوں پر کاروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔ بھوپال کانگریس ایم ایل اے عارف مسعود نے کھرگون تشدد کو بی جے پی کی سازش کا حصہ بتاتے ہوئے منہدم کئے گئے گھروں ک فہرست بی جے پی آفس سے جاری کئے جانے کا الزام لگایا تو مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا نے ڈی جی پی سے ملاقات کرنے والے کانگریس کے وفد کو دگ وجے سنگھ کا شاگرد اور تکڑے تکڑے گینگ کے سلیپر سیل سے تعبیر کیا ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے :  مہنت بجرنگ منی کو پولیس نے کیا گرفتار، مسلم خواتین کو دی تھی آبروریزی کی دھمکی


    سینئر کانگریس لیڈرو ایم پی کانگریس کے سابق صدر و سابق مرکزی وزیر ارون یادو نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے کھرگون تشدد کو لیکر ایک میمورنڈم ڈی جی پی صاحب کو دیا ہے اور ان سے گزارش کی ہے کہ مدھیہ پردیش کو بچائیں ۔ مدھیہ پردیش میں جو قانون کی دھجیاں اڑ رہی ہیں اس پر روک لگائیں ۔ یہ مدھیہ پردیش میں پہلی بار دیکھنے کو مل رہا ہے کہ یہاں پر دہرا قانون چلتا ہے ۔ اوما بھارتی پھتر پھینکتی ہیں ان پر کوئی کارروائی نہیں ہوتی ہے ۔ بیرسیہ میں سیکڑوں گائیں مار دی جاتی ہیں اور ملزمان پر کوئی کارروائی نہیں ہوتی، اسی طرح ریوا میں ایک بھگوا دھاری مہاراج سرعام ایک نا بالغ بچی کے ساتھ بیہودہ کام کرتے ہیں اور ان پر کوئی کارروائی نہیں ہوتی ہے اور حکومت خاموش رہتی ہے ۔ انہوں نے ہمیں یقین دلایا ہے کہ تمام انتظام بہتر ہوں گے۔ کھرگون میں جو کچھ ہوا ہے وہ شرمناک ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : اکبر الدین اویسی کو بڑی راحت، عدالت نے دو معاملات میں کیا بری


    وہیں بھوپال ایم ایل اے عارف مسعود نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سرکار سازش کے تحت دنگا کرانا چاہتی ہے لیکن مدھیہ پردیش کے لوگوں یہ صوبہ سب کا ہے اور ہم سب لوگوں کو مل کر اس مدھیہ پردیش کو امن کا ٹاپو بنائے رکھنا ہے ۔پہلے کہیں بھی کوئی تشدد ہوتا تھا تو ضلع انتظامیہ پہلے امن قائم کرنے کو لیکر کام کرتا تھا مگر یہاں ایسا نہیں ہورہا ہے ۔رات میں جھگڑا شروع ہوا اور ابھی یہ بھی طے نہیں ہوا کہ جھگڑا کے لئے ذمہ دار کون ہے اور صبح سے ہی بھارتیہ جنتا پارٹی کے دفتر سے لسٹ  جاری کی جاتی ہے اور مکان توڑنے کا کام شروع کردیا جاتا ہے ،یہ کہاں کا انصاف ہے ۔ہم کانگریس کے لوگ مدھیہ پردیش میں امن چاہتے ہیں ۔صاف بات یہ ہے کہ سرکار سبھی معاملوں میں فیل ہے ۔وزیر اعلی اور وزیر داخلہ کا جو بیان ہے اس سے مدھیہ پردیش میں امن قائم کرنے میں مجھے نہیں لگتا ہے کہ کوئی مدد مل رہی ہے بلکہ ایسا لگ رہا کہ معاملے کو یکطرفہ بڑھانے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔مہر بانی کرکے مدھیہ پردیش میں مظلوم لوگوں کے گھروں کو منہدم کرنے کی جو کاروائی ہے اسے بند کیا جائے ۔

    وہیں جب اس تعلق سے مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ آپ کانگریس سے اور کیا امید کرتے ہیں ۔آخر سب ہیں دگ وجے سنگھ کے شاگرد ہی نا۔جیسے دگ وجے سنگھ نے مسجد کا فرْی فوٹو جاری کیا ہے ویسے اس نے اس کا جاری کردیا ہے۔یہ وہ لوگ ہیں جو ہر حال میں شانتی کو بھنگ کرنا چاہتے ہیں مدھیہ پردیش اور ملک کی۔کانگریس کا سوچا سمجھا یہی ایجنڈا ہے ۔در اصل سلیپر سیل ہیں یہ تکڑے تکڑے گینگ کے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: