உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : آزادی کا امرت مہو تسو کے تحت بھوپال میں پروگرام کا انعقاد

    مدھیہ پردیش : آزادی کا امرت مہو تسو کے تحت بھوپال میں پروگرام کا انعقاد

    مدھیہ پردیش : آزادی کا امرت مہو تسو کے تحت بھوپال میں پروگرام کا انعقاد

    مولانا برکت اللہ بھوپالی ایجوکیشن سوسائٹی کے صدر حاجی محمد ہارون کا کہنا ہے کہ آزادی سا جھی وراثت کا حصہ ہے اور ہماری کوشش ساجهی وراثت کا تحفظ کرنا ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    بھوپال : برکت اللہ بھوپالی ایجوکیشن سوسائٹی کے زیر اہتمام بھوپال میں آزادی کا امرت مہو تسو کے تحت پروگرام کا انعقاد کیا گیا ۔ پروگرام میں ممتاز ادیبوں نے شرکت کی اور تحریک آزادی میں مسلم مجاہدین آزادی بالخصوص پروفیسر مولانا برکت اللہ بھوپالی کی حیات و خدمات پر تفصیل سے روشنی ڈالی ۔ دانشوروں کا ماننا ہے کہ ایک جانب ملک میں آزادی کا امرت مہوتسو منایا جارہا ہے تو وہیں دوسری جانب حکومت کی جانب سے ہونے والے پروگرام میں ایک منظم سازش کے تحت مسلم مجاہدین آزادی کی قربانیوں کو فراموش کیا جارہا ہے۔

    مولانا برکت اللہ بھوپالی ایجوکیشن سوسائٹی کے صدر حاجی محمد ہارون کا کہنا ہے کہ آزادی سا جھی وراثت کا حصہ ہے اور ہماری کوشش ساجهی وراثت کا تحفظ کرنا ہے ۔ آج ہم لوگ مولانا برکت اللہ بھوپالی کی حیات و خدمات کو یاد کر رہے ہیں اور کل بھگت سنگھ پر سیمنار کا انعقاد کریں گے ۔ تا کہ آزادی کی اصل روح کو نئی نسل تک پہنچا سکیں ۔

    پروگرام کی صدارت کے فرائض انجام دیتے ہوئے ممتاز ادیب پروفیسر محمد نعمان خان نے کہا کہ پروفیسر مولانا برکت اللہ بھوپالی کی حیات و خدمات بہت عظیم ہیں ، لیکن افسوس کی نئی نسل ان کی خدمات سے واقف نہیں ہے۔ حکومت کے ذریعہ برکت اللہ یونیورسٹی ضرور بنائی گئی ہے ، لیکن یہاں بھی ان کی حیات و خدمات نصاب کا حصہ نہیں ہیں ۔ جب تک اتنے عظیم مجاہد کی حیات و خدمات شامل نصاب نہیں ہوں گی ، تب تک نئی نسل اپنے مجاہدین آزادی کی قربانیوں سے واقف نہیں ہوگی۔

    پرگرام میں شامل دانشوروں نے آزادی کے امرت مہو تسو کے ریاست گیر سطح پر چلا نے پر زور دیا ۔ تاکہ مسلم مجاہدین آزادی کے ساتھ دوسری قوموں کے مجاہدین آزادی کی قربانیوں کو منظر عام پر لایا جا سکے۔ اس موقع پر کلیم اختر، مولانا محمد اسمعیل، ڈاکٹرحسنِ، کلیم ایڈوکیٹ، حاجی محمد عمران نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا اور مولانا برکت اللہ بھوپالی کی حیات و خدمات کو نصاب کا حصہ بنانے کے لیے وزیر اعلیٰ اور گورنر سے اعلی سطحی وفد کے ساتھ ملاقات کرنے کا مشورہ دیا۔

    کمیٹی نے مفید مشوروں کو قبول کیا اور جلد ہی اِس سلسلے میں وزیر اعلیٰ اور گورنر سے ملاقات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: