உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : عوامی تعاون سے مثالی قبرستان بنایا گیا ، خستہ حال قبرستان خوبصورت گارڈن میں تبدیل

    مدھیہ پردیش : عوامی تعاون سے مثالی قبرستان بنایا گیا ، خستہ حال قبرستان خوبصورت گارڈن میں تبدیل

    مدھیہ پردیش : عوامی تعاون سے مثالی قبرستان بنایا گیا ، خستہ حال قبرستان خوبصورت گارڈن میں تبدیل

    راج گڑھ ضلع کے پچور کا قبرستان آٹھ بیگھہ زمین پر پھیلا ہوا ہے ۔ مقامی لوگوں کے ذریعہ قبرستان کی خستہ حالی کو دور کرنے کے لئے مدھیہ پردیش وقف بورڈ سے کئی بار رابطہ کیا گیا ، لیکن جب ان کی جانب سے کوئی مالی تعاون نہیں دیا گیا تو مقامی لوگوں نے آپسی تعاون سے قبرستان کی صورت کو بدلنے کا فیصلہ کیا۔

    • Share this:
    راج گڑھ : عام طور پر مسلمانوں کے قبرستان کی جب بھی بات کی جاتی ہے تو ان کی خستہ حالی اور گندگی کا منظر نامہ ہی پیش کیا جاتا ہے ۔ بات سچ بھی ہے اور مسلمانوں کے بیشتر قبرستان ایسے ہیں بھی عام طور پر لوگ ان کے پاس سے گزرنا بھی پسند نہیں کرتے ہیں  ۔ لیکن مدھیہ پردیش کے ضلع راج گڑھ کے پچور میں ایک ایسا قبرستان قائم کیا گیا ہے جو نہ صرف اپنی صفائی اور ماحولیات کے لئے بے مثل ہے ، بلکہ جس مقام پر چند سال قبل تک لوگ دن کے اجالے میں آتے ہوئے گھبراتے تھے اب اس شکستہ حال قبرستان کو مقامی لوگوں نے اپنی محنت اور ویزن سے ایک خوبصورت گارڈن میں تبدیل کردیا ہے ۔

    راج گڑھ ضلع کے پچور کا قبرستان آٹھ بیگھہ زمین پر پھیلا ہوا ہے ۔ مقامی لوگوں کے ذریعہ قبرستان کی خستہ حالی کو دور کرنے کے لئے مدھیہ پردیش وقف بورڈ سے کئی بار رابطہ کیا گیا ، لیکن جب ان کی جانب سے کوئی مالی تعاون نہیں دیا گیا تو مقامی لوگوں نے آپسی تعاون سے قبرستان کی صورت کو بدلنے کا فیصلہ کیا۔ پچور قبرستان سمیتی کے نائب صدر اشرف علی قریشی کہتے ہیں کہ دوہزار گیارہ تک یہاں پر لوگ اپنی میت کو بڑی کراہیت کے ساتھ لاتے تھے ، مگر مقامی انجمن اسلام کمیٹی کے تعاون سے اب قبرستان کو خوبصورت گارڈن میں تبدیل کردیا گیا ہے۔ جو لوگ پہلے یہاں آنے سے گھبراتے تھے اب وہی لوگ اپنے مہمانوں کو یہاں قبرستان اور اس کے گارڈن کو دکھانے کے لئے لاتے ہیں ۔ قبرستان آخری آرام گاہ ہوتی ہے اور آخری آرام گاہ اگر شکستہ ہو اور وہاں آنے جانے والوں کو تکلیف ہو تو یہ اچھی بات نہیں ہے۔

    انجمن اسلام پچور کے نائب صدر انیس خان پٹھان کہتے ہیں کہ صفائی نصف ایمان کا حصہ ہے ، مگر افسوس ہے کہ مسلمان آج صفائی کو بھول گیا ہے ۔ یہ جو خوبصورت گارڈن آپ دیکھ رہے ہیں اسے فروغ دینے میں کئی سال لگے ہیں ۔ پورے قبرستان میں سایہ دار درختوں کے ساتھ پھل دار پیڑ بھی لگائے ہیں گئے ہیں ۔ جگہ جگہ پر سمینٹیڈ کرسیاں بھی لگائی گئی ہیں ، وضو خانہ اور نماز جنازہ کے لئے علاحدہ انتظام کیا گیا ہے ۔ پھولوں کے پیڑ لگائے گئے ہیں تاکہ قبرستان جب کوئی آئے تو ایسے خوشگوار ماحول مل سکے ۔ اللہ کا شکرہے کہ پہلے لوگ اسے دیوانے کا خواب کہتے تھے اور اب وہی لوگ کام دیکھ کر تعریف کرتے ہیں ۔ کاش کہ سبھی جگہوں پر قبرستان کو خوبصورت گارڈن میں تبدیل کرد یا جائے تو قبرستان کے معنی بدل جائیں گے ۔

    مسلم سماج میں پکی قبر بنانے کا چلن بھلے ہی عام ہو رہا ہو ، مگر پچور میں کسی کو بھی پکی قبر بنانے کی اجازت نہیں ہے ۔ ان کا ماننا ہے کہ مسلمان کو اپنا ایمان پختہ کرنا چاہئے اور ایسا پختہ ایمان تیار کرکے وہ دنیا سے جائے کہ جب اس کا حساب کتاب اللہ کے سامنے پیش کیا جائے تو وہ شرمندہ نہ ہو۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: