உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : فیس کو لے کر پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن اور شیوراج حکومت کے درمیان بڑھا ٹکراو، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

    مدھیہ پردیش : فیس کو لے کر پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن اور شیوراج حکومت کے درمیان بڑھا ٹکراو، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

    مدھیہ پردیش : فیس کو لے کر پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن اور شیوراج حکومت کے درمیان بڑھا ٹکراو، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

    Madhya Pradesh News : پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن نے کورونا قہر میں دیڑھ سال سے اسکول بند ہونے کے سبب مالی خستہ حالی کا حوالہ دیتے ہوئے اسکول فیس میں اضافہ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ فیس میں اضافہ نہیں کئے جانے کی صورت میں حکومت سے خصوصی پیکج دینے کی مانگ کی تھی ۔

    • Share this:
    بھوپال : مدھیہ پردیش میں پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن اور ایم پی حکومت کے درمیان ٹکراؤ بڑھتا ہی جارہا ہے ۔ حکومت کے رویہ سے ناراض ہوکر پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن نے آج آن لائن کلاسوں کو ریاست گیر سطح پر بند کرتے ہوئے اپنے مطالبات کو لے کر احتجاج بلند کیا تھا ، لیکن حکومت نے پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن کے احتجاج پر کوئی دھیان نہیں دیا ۔ حکومت کے رویہ سے نارض ہوکر اندور میں پرائیویٹ اسکول کے مالکان نے کلکٹریٹ پہنچ کر اپنے اپنے اسکولوں کی کنجیاں ضلع کلکٹر کو پیش کی ۔ وہیں پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن نے اب اپنے مطالبات کو لے کر ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

    واضح رہے کہ پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن نے کورونا قہر میں دیڑھ سال سے اسکول بند ہونے کے سبب مالی خستہ حالی کا حوالہ دیتے ہوئے اسکول فیس میں اضافہ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ فیس میں اضافہ نہیں کئے جانے کی صورت میں حکومت سے خصوصی پیکج دینے کی مانگ کی تھی ۔

    مدھیہ پردیش پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ ہماری حکومت جمہوری نظام میں یقین رکھتی ہے ۔ بات چیت کی سلسلہ جاری ہے اور جلد ہی بہتر نتائج نکلیں گے ۔ مطالبات کو لے کر پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن کے ساتھ محکمہ تعلیم اور محکمہ مالیات سے بھی بات چیت جاری ہے ۔

    وہیں مدھیہ پردیش پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن کے سکریٹری  ونی راج مودی کہتے ہیں کہ حکومت ہمارے مطالبات کو لے کر مسلسل جھوٹ بو ل رہی ہے۔ طلبہ کا کریئر خراب نہ ہو اس لئے طلبہ کے وسیع مفاد میں ہم لوگوں نے کل سے آن لائن کلاسوں کو شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اسی کے ساتھ ہم لوگ ہائی کورٹ بھی جائیں گے ۔ حکومت کو یہ سمجھنا ہوگا کہ جب اسکول نہیں کھولے جا رہے ہیں اور ہم پر آن لائن کلاس جاری رکھنے کا دباؤ ہے ، تو ہم  اساتذہ کو اگر اسکول بلاتے ہیں تو ہمیں اساتذہ کے ساتھ دیگر اسٹاف کو تنخواہ ادا کرنا ہوتی ہے ۔

    انہوں نے کہا کہ کورونا قہر میں جب پچھلے دیڑھ سال سے اسکول نہیں کھلے ہیں اور لوگ فیس جمع نہیں کر رہے ہیں ، تو ایسے میں اسکول اساتذہ کو تنخواہ کہاں سے ادا کرے ۔ ہم نے اسکولوں کی مالی خستہ حالی کو دیکھتے ہوئے حکومت سے پرائیویٹ اسکولوں کے لئے حصوصی پیکج دینے کا مطالبہ کیا تھا ، لیکن حکومت کی جانب سے ہمیں کوئی جواب نہیں دیا گیا بلکہ یہ احکام جاری کردیا گیا کہ پرائیویٹ اسکول ٹیوشن فیس کے علاوہ کوئی فیس نہیں لے سکیں گے ۔ اب ہمارے سامنے عدالت سے رجوع کرنے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: