உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش : یوم اردو پر بھوپال میں مختلف تقاریب کا انعقاد

    مدھیہ پردیش : یوم اردو پر بھوپال میں مختلف تقاریب کا انعقاد

    مدھیہ پردیش : یوم اردو پر بھوپال میں مختلف تقاریب کا انعقاد

    بھوپال میں مختلف تقاریب کا انعقاد کرکے نہ صرف علامہ اقبال کو خراج عقیدت پیش کی گئی بلکہ آج کے دن کو یوم احتساب کے طور پر مناتے ہوئے اردو زبان کی بقا، ترویج و اشاعت اور نئی نسل کو اردو رسم الخط سے واقف کرانے کے لئے زمینی سطح پر کام کرنے پر زور دیا گیا۔

    • Share this:
    بھوپال : شاعر مشرق علامہ اقبال کی یوم ولادت کو یوم اردو کے طور پر بھوپال میں منایا گیا۔ بھوپال میں مختلف تقاریب کا انعقاد کرکے نہ صرف علامہ اقبال کو خراج عقیدت پیش کی گئی بلکہ آج کے دن کو یوم احتساب کے طور پر مناتے ہوئے اردو زبان کی بقا، ترویج و اشاعت اور نئی نسل کو اردو رسم الخط سے واقف کرانے کے لئے زمینی سطح پر کام کرنے پر زور دیا گیا۔

    مدھیہ پردیش جمعیت علما اور سد بھاؤنا منچ کے مشترکہ بینرتلے یوم اردو پر سب سے قران خوانی کرکے شاعر مشرق علامہ اقبال کو خراج عقیدت پیش کیا گیا اس کے بعد سماجی تنظیموں کے ذریعہ بھوپال اقبال میدان کی خستہ حالی کو لیکر خاموش احتجاج کیا۔ سماجی تنظیموں کے ذمہ داران نے حکومت سے اقبال میدان کی خستہ حالی کو دور کرنے اور اس عظیم یاد گار کی تزئین کاری کرنے کا مطالبہ کیا۔ایم پی جمیعت علما کے پریس سکریٹری حاجی محمد عمران کہتے ہیں کہ شاعر مشرق علامہ اقبال نے اپنی شاعری سے حب الوطنی ، امن اور یکجہتی کا جو پیغام صدی پہلے دیا تھا ، موجودہ وقت میں اس کی معنویت اور بڑھ گئی ہے ۔اقبال کے پیغام خود سے نئی نسل کو واقف کرانے کی ضرورت ہے۔ سدبھاؤنا منچ کے صدر حافظ محمد اسمعیل کہتے ہیں کہ اقبال کی شاعری میں جو فلسفہ اور حکمت ہے اس کی روشنی میں قوموں اور ملکوں کا مقدر سنوارا جا سکتا ہے ۔اس کے لئے اقبالیات کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔

    یوم اردو پرمجلس اقبال کے زیر اہتمام  مولانا آزادی نینشل اردو یونیورسٹی کے اشتراک سے مذاکرہ کا انعقاد کیا گیا۔ بھوپال میں مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے ریجنل سینٹر میں منعقدہ مذاکرہ دانشوروں نے اردو کے حق کے لئے تحریک چلانے پر زور دیا۔ ممتاز ادیب و ناقد ڈاکٹر محمد نعمان کہتے ہیں مادری زبان کے تئیں جو لوگوں کا اگنورنس ہے وہ حالات کے لئے ذمہ دار ہے۔ سب سے بڑی بات یہ ہے کہ ہم نئی نسل کو بتائیں کی مادری زبان کی اہمیت کیا ہوتی ہے اور مادری زبان ضرور ی کیوں ہے اور جس دن ہم اسے بتانے میں کامیاب ہوجائیں گے اس دن ہم اپنی زبان اور تہذیب کے تشخص کو بچا لیں گے۔

    مجلس اقبال کے سکریٹری اقبال مسعود نے پروگرام سے خطا ب کرتے ہوئے کہا کہ یوم اردو   در اصل اردو والوں کے لئے یوم احتساب ہے۔ احتساب اس لئے کرنا ہوگا کہ اردو اپنی اندرونی طاقت سے دنیا بھر میں مشہور ہو رہی ہے  اور ان لوگوں کے سرپر جادو بن کر بول رہی ہے جو زندگی بھر اردو کی مخالفت کرتے رہے۔ا ن ساری زبانوں کی لغت کا حصہ بن رہی ہے جو اردو کی مخالفت کرتے رہےہیں۔لیکن اہم سوال یہ ہے کہ اردو والےکیوں بے حس ہیں۔ مطلب یہ کہ اردو میڈیم اسکول ختم ہوتے جا رہے ہیں لیکن اردو اس کے حق کے لئے سامنے نہیں آرہے ہیں ۔ جب اپنے حق کے لئے اپنی زبان کے لئے آگے آئیں گے تو سرکاریں ضرور دیں گی مگر اردو والے ایسا نہیں کررہے ہیں۔

    ڈاکٹر محمد احسن کہتے ہیں کہ جب تک اردو کو نصاب سے نہیں جوڑا جائے گا تب تک اردو کا فروغ نہیں ہوگا۔ جب نصاب سے جوڑا جائے گا تب اس میں سماجی ، سیاسی ، منطقی اور دوسرے ادب اس کا حصہ بنیں گے۔ نصاب سے میری مراد رسم الخط کے سکھانے سے ہے۔ ادب لکھا جا رہا ہے لیکن اس کا پڑھنے والا قاری کہاں ہے۔ جب تک ہم نئی نسل تک زبان نہیں پہنچائیں گے تب تک ہم اپنی زبان اور اس کے رسم الخط کو محفوظ نہیں کرسکیں گے ۔

    ڈاکٹر محمداعظم کہتے ہیں کہ میں اردو کو لے کر مایوسی کی باتیں نہیں کرتا ہے میرے نزدیک اردو کا فروغ ہو رہا ہے اور اب تو آن لائن جو سہولیات سامنے آئی ہیں اس سے اردو کا فروغ بڑھ رہا ہے ۔ میں اس شعر کے ساتھ اپنی بات کہتا ہوں ۔

    ستم کے بعد بھی یہ سخت جان باقی ہے

    نحفیب ہوکے بھی اردو زبان باقی ہے

    یوم اردو کے موقع پر بینظیر انصار ایجوکیشن سوسائٹی کے ذریعہ نمائش کا اہتمام کیا گیا۔ بھوپال کوہ فضا کے ارسیہ ریسورٹ میں منعقدہ نمائش میں اردو کے فروغ میں نمایاں کردار ادا کرنے والے فنکاروں کی خدمات کو تصویر کے ذریعہ پیش کیا گیا تھا۔ بینظیر انصار ایجوکیشن سو سائٹی کے صدر ایم ڈبلیو انصاری کہتے ہیں کہ ہندستان کی تعمیر و ترقی اور تحریک آزادی میں اردو زبان کا جو کردار وہ کسی زبان کا نہیں ہے ۔

    تحریک آزادی میں ہندوستان کی تمام زبانوں کے کردار کو ایک جانب رکھا جائے اور دوسری جانب اردو زبان کو رکھا جائے تو اردو زبان کا پلہ بھاری رہے گا۔ دو ہزار بائیس اردو صحافت کی روشن تاریخ کے دوسوسال ہوں گے ۔ یہاں پر اردو صحافیوں کی بھی تصاویر کونمایاں کیا گیا ہے تاکہ نئی نسل یوم اردو کے موقع پر اردو کے عظیم فنکاروں کے ساتھ اردو صحافیوں کی عظیم خدمات سے واقف ہو سکے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: