உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    MP News: یوم عاشورہ کے موقع پر بھوپال میں جلوس کے ساتھ بلڈ ڈونیشن کیمپ کا کیا گیا انعقاد

    MP News: یوم عاشورہ کے موقع پر بھوپال میں جلوس کے ساتھ بلڈ ڈونیشن کیمپ کا کیا گیا انعقاد

    MP News: یوم عاشورہ کے موقع پر بھوپال میں جلوس کے ساتھ بلڈ ڈونیشن کیمپ کا کیا گیا انعقاد

    Yaum-e-Ashura 2022 : نوابوں کی نگری ،تصوف اورعزاداری کے شہر بھوپال میں یوم عاشورہ کے موقع پر موسلہ دھار بارش کے بیچ سرکار سید الشہدا اور اصحاب کی قربانیوں کو یاد کرنے کے لئے حسینی علم کے ساتھ جلوس نکالا گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh | Bhopal | Bhopal
    • Share this:
    بھوپال : نوابوں کی نگری ،تصوف اورعزاداری کے شہر بھوپال میں یوم عاشورہ کے موقع پر موسلہ دھار بارش کے بیچ سرکار سید الشہدا اور اصحاب کی قربانیوں کو یاد کرنے کے لئے حسینی علم کے ساتھ جلوس نکالا گیا۔ جلوس بھوپال کے فتح گڑھ امام باڑہ سے شروع ہوا اور شہر کے مختلف راستوں سے ہوتا ہوا پیر گیٹ پہنچا جہاں پر شہر کے دوسرے مقامات سے آنے والے جلوس شامل ہوئے اور پھر اس مقام پر مجلس کا انعقاد کرنے کے بعد جلوس کربلا کو روانہ ہوااور وہیں اختتام پزیرہوا۔

    سخت حفاظتی انتظامات کے بیچ نکالے گئے جلوس میں بھوپال میں جہاں پچاس ہزار سے زائد عزاداروں نے جلوس میں شرکت کی تو وہیں پولیس انتظامیہ کی جانب سے سخت حفاظتی انتظامات بھی کئے گئے تھے۔ سماجی تنظیمیوں کی جانب سے شہر میں جگہ جگہ پر سبیل بھی قائم کی گئی اور جلوس میں شامل لوگوں کو شربت بھی پلا گیا۔ کورونا قہر کے سبب گزشتہ دو سالوں کے بعد نکلنے والے ماتمی جلوس میں عزا داروں کا جوش و جذبہ قابل تقلید تھا۔

     

    یہ بھی پڑھئے: کرناٹک کے ایک گاؤں میں محرم کا ایسا اہتمام، جس میں ایک بھی مسلمان نہیں!


    ممتاز شعیہ عالم دین مولانا ڈاکٹر سید رضی الحسن حیدری نے نیوز 18 اردو سے خاص بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہمارے لئے سعادت کی بات ہے کہ ہمارے حصہ میں غم حسین آیا ہے ۔ حضرت امام حسین علیہ السلام اور ان کے باہتر ساتھیوں نے چودہ سو سال قبل جو قربانی دی تھی وہ دین کی حفاظت ،انسانیت کی بقا کے لئے تھی یہی وجہ ہے کہ حضرت امام حسین علیہ السلام کے چاہنے والوں میں صرف مسلمان ہی نہیں بلکہ دوسری قوموں کے لوگ بھی بڑی تعداد میں شامل ہیں ۔جیسے جیسے انسانیت بیدار ہوگی  حضرت امام حسین علیہ السلام اور شہدائے کربلا کی تعلیمات کی معنویت عیاں ہوتی جائے گی۔

     

    یہ بھی پڑھئے: پی ایم مودی نے یوم عاشورہ پر حضرت امام حسینؓ کی قربانیوں کوکیایاد


    وہیں بھوپال پیر گیٹ پر اپنے تعزیہ کے ساتھ انل اگروال بتاتے ہیں کہ انہیں شہدائے کربلا کا غم اپنے بزرگوں سے وراثت میں ملا ہے ۔ ہم تعزیہ کے لئے محرم کے ایک ماہ پہلے سے کردیتے ہیں اور یہ دس دن ہمارے لئے ایسے ہیں، جس میں ہم صرف اور صرف حضرت امام حسین علیہ السلام اور اہل بیت کی قربانیوں کا ذکر کرتے ہیں ۔ سچ مانیئے تو دہشت گردی کا خاتمہ کرنے کے لئے حضرت امام حسین علیہ السلام نے چودہ سو سال پہلے کربلا کے میدان سے جو نسخہ کیمیا دیا تھا اگر اس کا نفاذ کردیا جائے تو دنیا سے دہشت گردی ہمیشہ ہمیش کے لئے ختم ہو جائے گی۔

    سماجی کارکن  سید عابد حسین اور محسن نقوی کے ذریعہ ہر سال کی طرح امسال بھی کربلا پر خون عطیہ کیمپ کا انعقاد کیا گیا۔ سید عابد حسین کہتے ہیں کہ دنیا کا سب سے بڑا شخص وہ ہے جسے امام حسین علیہ السلام کا غم ملا ۔ کربلا کے میدان سے حضرت امام حسین علیہ السلام نے انسانیت کی بقا کے لئے قربانی دی تھی اور ہم اسی کی روشنی میں بلڈ ڈونیشن کیمپ کا انعقاد کرتے ہیں ۔ ہمارے خون سے اگر کسی کو نئی زندگی ملتی ہے تو اس سے بڑھ کو دوسری خوشی اور کیا ہوگی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: