உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    باپ کررہا تھا نابالغ بیٹی کا کئی سالوں سےجنسی استحصال ، حاملہ ہو گئی بچی

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    جانچ میں جانکاری ملی کہ نا بالغ حمل سے ہے۔ بچی کی شکایت پر بنگال پولیس نے جمشید پور پولیس کے ساتھ مل کر ملزم باپ کو گرفتار کرلیا ہے۔

    • Share this:
      جھارکھنڈ کی لوہ نگری جمشید ہور میں ایک باپ کا حیران کرنے اور شرم سے شرمسار کر دینے والا واقعہ سامنے آیا ہے۔ یہ باپ اپنی ہی نابالغ بچی کے ساتھ تین چار سال سے جنسی استحصال کر رہا تھا۔ بچی پریشان ہوکر دو دن گھر چھوڑ کر بھاگ گئی۔ متاثربچی بنگال کے ہاوڑہ پہنچی جہاں جی آر پی نے اسے چائلڈ ہوم میں داخل کروا دیا۔ جانچ میں جانکاری ملی کہ نا بالغ حمل سے ہے۔ بچی کی شکایت پر بنگال پولیس نے جمشید پور پولیس کے ساتھ مل کر ملزم باپ کو گرفتار کرلیا ہے۔ پولیس نے معاملے کی جانچ شروع کر دی ہے۔

      ملی جانکاری کے مطابق 10 ویں کلاس میں پڑھنے والی نابالغ لڑکی کے ساتھ تین چار سالوں سے ہی باپ زبردستی جسمانی تعلقات بناریا تھا۔ بچی نے جب اس سے چھٹکاراپاتے ہی گھر سے بھاگر کر بنگال کے ہاوڑہ پہنچی۔ ہاوڑہ جی آر پی نے نابالغ کی حالت دیکھتے ہوئے اسے چائلڈ ہوم میں داخل کروایا۔ جہاں میڈیکل جانچ میں پتہ کہ وہ حاملہ ہے۔
      کاؤنسلنگ میں نابالغ نے اپنی آپ بیتی بتائی۔ نابالغ نے بتایا کہ اس کا ہی باپ گزشتہ تین ۔ چار سال سے اس کا جنسی استحصال کررہا ہے۔ نابالغ کی بات سن کر چائلڈ ہوم مینجمنٹ نے ہاوڑہ مہیلا تھانہ کو اس کی اطلاع دی۔

      حیوانیت کی ہر حد پار : ریپ کے بعد خاتون کے پرائیویٹ پارٹ میں ڈالا اسٹیل کا گلاس

      اس کے بعد مغربی بنگال کے ہاوڑہ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے 20 نومبر کو ایف آئی آر درج کرکے جمشی د پور پہنچی۔ جہاں ہاوڑہ پولیس نے مقامی پولیس کے ساتھ مل کر ملزم والدی کو گرفتار کر لیا۔ ہاوڑہ پولیس ملزم کو اپنے ساتھ لیکر بنگال روانہ ہو گئی۔
      First published: