ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

گیتا کو جلد مل سکتا ہے اس کا کنبہ، DNA میچ ہوا تو ماں کو ملے گی بیٹی

پاکستان سے پانچ سال پہلے اپنے ملک آئی معذور گیتا کو اس کی ماں مل گئی۔ مہاراشٹر کی مینا پاندرے نے گیتا کو اپنی بیٹی بتایا ہے۔

  • Share this:
گیتا کو جلد مل سکتا ہے اس کا کنبہ، DNA میچ ہوا تو ماں کو ملے گی بیٹی
پاکستان سے پانچ سال پہلے اپنے ملک آئی معذور گیتا کو اس کی ماں مل گئی۔ مہاراشٹر کی مینا پاندرے نے گیتا کو اپنی بیٹی بتایا ہے۔

پاکستان سے پانچ سال پہلے اپنے ملک آئی معذور گیتا کو اس کی ماں مل گئی۔ مہاراشٹر کی مینا پاندرے نے گیتا کو اپنی بیٹی بتایا ہے۔ مینا اورنگ آباد کے واجول کی رہنے والی ہے۔ ان ک ےمطابق گیتا کا نام رادھا واگھ مارے ہے۔ مینا نے پہلے شوہر کے گزرنے کے بعد دوسری شادی کر لی تھی۔


گیتا نے جمعرات کو مینا پاندرے اور ان کے کنبے سے ملاقات کی۔ مینا کا کہنا ہے کہ گیتا کے پیٹ پر وہی جلے کا نشان ہے جو کبھی ان کی گم ہوئی بیٹی کے پیٹ پر تھا۔ اب ڈی این اے DNA کرایا جائے گا۔ مینا کا گیتا سے DNA میچ ہونے کےبعد قانونی عمل پورا کیا جائے گا۔ اس کے بعد ہی گیتا کو اس کی ماں کو سونپا جا سکے گا۔


گیتا پاکستان میں ایک ریلوے اسٹیشن پر 11-12 سال کی عمر میں ملی تھی۔ پاکستان کے ایدھی ویلفیئر ٹرسٹ نے انہیں اپنے پاس رکھا تھا۔ 26 اکتوبر 2015  کو اس وقت کی وزیر خارجہ سشما سوراج کی پہل پر گیتا کو پاکستان سے ہندستان لایا گیا تھا۔ تب سے اندور کی موک۔بادھروں کی تنظیم میں رکھا گیا تھا۔ یہاں سے اس کے کنبے کی تلاش کی گئی۔ گیتا نہ بول دکتی ہے اور نہ سن پاتی ہے۔ وہ پڑھی لکھی بھی نہیں تھی۔ ایسے میں جانکاری نکلوا پانا مشکل تھا۔


اس طرح کر سکتے ہیں یقین
اندور کے آنند سروس سوسائٹی کے عہدیداروں نے بتایا کہ گیتا بول نہیں پاتی لیکن اس نے اشاروں میں بتایا تھا کہ جہاں وہ رہتی تھی وہاں ایک ندی تھی اور گنے، مونگ پھلی کے کھیت تھے۔ ان کے مطابق یہ سبھی باتیں مہاراشٹر کے اورنگ آباد اور اس کے آس پاس کے علاقوں سے جڑی نظر آتی ہیں۔
Published by: Sana Naeem
First published: Mar 13, 2021 11:13 AM IST