ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

بھوپال: بورڈ امتحانات سے قبل مسلم طلبا کو اسسمنٹ کے ذریعہ امتحانات کی تیاری مکمل کرانے کی کوشش

مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سو سائٹی کے زیر اہتمام بھوپال میں رکھے گئے اسسمنٹ امتحان میں بڑی تعداد میں طلبا اور ان کے والدین نے شرکت کی اور سو سائٹی کے اقدام کو وقت کی ضرورت سے تعبیر کیا۔

  • Share this:
بھوپال: بورڈ امتحانات سے قبل مسلم طلبا کو اسسمنٹ کے ذریعہ امتحانات کی تیاری مکمل کرانے کی کوشش
بورڈ امتحانات سے قبل مسلم طلبا کو اسسمنٹ کے ذریعہ امتحانات کی تیاری مکمل کرانے کی کوشش

بھوپال۔ مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سوسائٹی نے بورڈ امتحانات سے قبل مسلم طلبا کے مسئلہ کو کم کرنے کے لئے بڑا قدم اٹھایا ہے۔ سو سائٹی مسلم طلبا کو اسکالرشپ دینے کا کام تو اسی کی دہائی سے کر رہی ہے لیکن بورڈ امتحانات سے قبل کم وقت میں طلبا کو ان کے مضامین کی تیاری کیسے کرائی جائے سو سائٹی کے سامنے یہ ایک بڑا سوال تھا۔ سو سائٹی نے اس کے لئے طلبا کے مضامین کا سیلف اسسمنٹ امتحان لیا اور امتحان کے مطابق جو طلبا جس مضمون میں کمزور ہیں ان کو انہیں مضامین میں ماہرین کے ذریعہ تعلیم دینے کا فیصلہ کیا ہے۔


ڈاکٹر ظفر حسن،جنرل سکریٹری، مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سو سائٹی کا کہنا ہے کہ امتحانات بورڈ کے ہوں یا دوسرے امتحانات ان کے نزدیک آتے ہی طلبا ڈپریشن کا شکار ہو جاتے ہیں اور جب طلبا ڈپریشن میں رہتے ہیں تو اس کا اثر والدین اور گھر کے دوسرے افراد پر بھی پڑتا ہے۔ تو سو سائٹی نے یہ فیصلہ کیا کہ طلبا کو اسکالرشپ دینے کے ساتھ ان کا اسسمنٹ بھی کیا جائے تاکہ ان کی روشنی میں بہتر ڈھنگ سے ان کی تعلیم کے نظم کو آگے بڑھایا جا سکے۔




مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سو سائٹی کے زیر اہتمام بھوپال میں رکھے گئے اسسمنٹ امتحان میں بڑی تعداد میں طلبا اور ان کے والدین نے شرکت کی اور سو سائٹی کے اقدام کو وقت کی ضرورت سے تعبیر کیا۔ طالبہ سمن خان نے کہا کہ میں اپنے امتحان کی تیاری کو لیکر بہت ڈری ہوئی تھی لیکن یہاں آنے کے بعد نہ صرف میرا ڈپریشن دور ہوا بلکہ مجھے اسسمنٹ کے ذریعہ میری کمیاں بھی معلوم ہوئی ہیں۔ اب میں اساتذہ کی نگرانی میں بہتر ڈھنگ میں امتحان کی تیاری کر سکوں گی۔

وہیں، زینب بتاتی ہیں کہ امتحان کی تیاری کو سوچ کر ہی سر میں درد شروع ہو جاتا تھا لیکن یہاں پر ماہرین نے نہ صرف امتحان کی تیاری کرنے بلکہ ٹائم مینجمنٹ کا طریقہ بھی بتایا۔ اس سے ہماری بڑی ضرورت پوری ہو گئی ہے۔ بھوپال میں مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریر پروموشن سوسائٹی کا قیام اسی کی دہائی میں عمل میں آیا تھا تاکہ تعلیم کو لیکر مسلم معاشرے میں بیداری پیدا کی جا سکے اور جو طلبا غربت کے سبب علم کی روشنی سے محروم ہوتے ہیں انہیں اسکالرشپ دیکر انہیں تعلیم کے مواقع فراہم کئے جا سکیں۔ اس موقع پر مسلم طلبا میں سائنسی ذوق پیدا کرنے کی غرض سے سائنس کی نمائش کا بھی اہتمام کیا گیا۔
First published: Feb 19, 2020 01:31 PM IST