உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    منظر بھوپالی کے احتجاج پر حکومت نے ایوارڈ کی جانچ کرائے جانے کا دلایا یقین

     وزیر ثقافت کی سنجیدگی پر منظر بھوپالی نے شکریہ ادا کرتے ہوئے حق دار کو ایوارڈ دینے اور بد عنوان افسران کے خلاف کاروائی کئے جانے کی مانگ کی ہے۔

    وزیر ثقافت کی سنجیدگی پر منظر بھوپالی نے شکریہ ادا کرتے ہوئے حق دار کو ایوارڈ دینے اور بد عنوان افسران کے خلاف کاروائی کئے جانے کی مانگ کی ہے۔

    وزیر ثقافت کی سنجیدگی پر منظر بھوپالی نے شکریہ ادا کرتے ہوئے حق دار کو ایوارڈ دینے اور بد عنوان افسران کے خلاف کاروائی کئے جانے کی مانگ کی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh, India
    • Share this:
    ممتاز شاعر منظر بھوپالی کے ذریعہ مدھیہ پردیش محکمہ ثقافت کے با وقار ایوارڈ میں بد عنوانی کے خلاف احتجاج کئے جانے پر ایم پی کی وزیر ثقافت اوشا ٹھاکر نے اپنی سنجیدگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ اوشا ٹھاکر نے ادیبوں کو دیے جانے والے با وقار ایوارڈ میں بدعنوانی کے معاملے میں نہ صرف اپنی سنجیدگی کا مظاہرہ کیا ہے بلکہ منظر بھوپالی کو اس کی جانچ کرکے ٹھیک کئے جانے کا بھی یقین دلایا ہے ۔ وزیر ثقافت کی سنجیدگی پر منظر بھوپالی نے شکریہ ادا کرتے ہوئے حق دار کو ایوارڈ دینے اور بد عنوان افسران کے خلاف کاروائی کئے جانے کی مانگ کی ہے۔

    نیوز ایٹین اردو سے بات چیت کرتے ہوئے ممتاز شاعر منطر بھوپالی نے کہا کہ ہمیں وزیر ثقافت کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے میری آواز کو سنجیدگی سے سنا اور معاملے کی جانچ کرکے کاروائی کرنے کا یقین دلایا ہے ۔میں نے پہلے وزیر اعلی،گورنر صاحب کو خط لکھا تھا اور اب اس تعلق سے ایک تفصیلی خط وزیرثقافت کو بھی لکھونگا اور انہیں بتاؤں گا کہ کس طرح سے کچھ بد عنوان افسران کے ذریعہ جیوری کے فیصلہ کے خلاف کچھ لے دےکے ایسے لوگوں کو ایوارڈ دیا گیا جو اس کے اہل نہیں ہیں۔ یہ احتجاج میں اپنے لئے نہیں بلکہ ان لوگوں کے لئے کر رہا ہوں جنہوں نے اردو ادب کی خدمت میں اپنا سب کچھ قربان کردیا ہے۔ جب اہل لوگوں کو نظر انداز کرکے ،جیوری میں نام اتفاق رائے سے پاس ہونے کے بعد انہیں کاٹ کر کسی اور کو دیا جاتا ہے تو تکلیف ہوتی ہے ۔

    بد عنوان افسران کے سبب نہ صرف ادب کے نام پر دیئے جانے والے با وقار ایوارڈ کی شبیہ مجروح ہوئی ہے بلکہ مدھیہ پردیش اور یہاں کی حکومت کی امیج کو بھی داغ لگاہے۔وزیر ثقافت کو یہ بھی دیکھنے کی ضرورت ہے کہ محکمہ ثقافت کے تحت چلنے والے ادبی اداروں میں کیسے کچھ افسران کی اجارہ داری جاری ہے اور پروگرام کے نام پر برسوں سے صرف چند لوگوں کو بلاکر خانہ پوری کی جا رہی ہے ۔میں چاہتاہوں کہ ایوارڈ کے معاملے میں شفافیت آئے اور کرپٹ افسران کے خلاف کاروائی کی جائے ۔

    پڑوسی کے پالتو کتے نے شخص کو بری طرح نوچا، پرائیویٹ پارٹ پر بھی کیا حملہ

    PM MODI نے بتائی سائنس میں ہندوستان کی طاقت، گلوبل انوویشن انڈیکس میں 81سے 46ویں نمبرپہنچا

    وہیں اس تعلق سے جب مدھیہ پردیش کی وزیر ثقافت اوشا ٹھاکر سے نیوز ایٹین اردو نے بات کی تو انہوں نے کہا کہ بد عنوانیوں کو لیکر منظر بھوپالی کا کوئی خط انہیں نہیں ملا ہے اگروہ کچھ بھیجیں گے تو اس کی جانچ کی جائے گی۔جب انہیں بتایا گیا کہ منظر بھوپالی نے اس تعلق سے سی ایم اور گورنر کو خط لکھا ہے تو انہوں نے کہا کہ اس کو دیکھوا لیں گے اور جو بھی غلطی ہوگی اس کا سدھار کیا جائے گا۔یہاں پر کرپشن کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: