ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

شاہ رخ کو 'غدار' بتا کر بی جے پی لیڈر چوطرفہ تنقیدوں کی زد میں، ٹویٹ لیا واپس

نئی دہلی۔ بالی ووڈ سپر اسٹار شاہ رخ خان پر بی جے پی جنرل سکریٹری اور مدھیہ پردیش کے سابق وزیر کیلاش وجے ورگی کے متنازعہ بیان کی چوطرفہ مذمت ہو رہی ہے۔

  • IBN7
  • Last Updated: Nov 04, 2015 12:47 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
شاہ رخ کو 'غدار' بتا کر بی جے پی لیڈر چوطرفہ تنقیدوں کی زد میں، ٹویٹ لیا واپس
نئی دہلی۔ بالی ووڈ سپر اسٹار شاہ رخ خان پر بی جے پی جنرل سکریٹری اور مدھیہ پردیش کے سابق وزیر کیلاش وجے ورگی کے متنازعہ بیان کی چوطرفہ مذمت ہو رہی ہے۔

نئی دہلی۔ بالی ووڈ سپر اسٹار شاہ رخ خان پر بی جے پی جنرل سکریٹری اور مدھیہ پردیش کے سابق وزیر کیلاش وجے ورگی کے متنازعہ بیان کی چوطرفہ مذمت ہو رہی ہے۔ کیلاش نے ٹویٹ کرکے لکھا تھا کہ شاہ رخ خان رہتے ہندوستان میں ہیں مگر ان کا دل ہمیشہ پاکستان میں رہتا ہے۔ ان کی فلمیں یہاں کروڑوں کماتی ہیں۔ لیکن انہیں ہندستان عدم برداشت والا ملک نظر آتا ہے۔ اگر یہ غداری نہیں ہے تو کیا ہے؟


ملک میں بڑھتی ہوئی عدم برداشت کو لے کر پہلے سے گھری بی جے پی اور این ڈی اے حکومت کیلاش کے بیان کے بعد اور بڑی مشکل میں آ گئی ہے۔ اپوزیشن نے مودی حکومت پر حملہ تیز کر دیا ہے۔ ماحول کو دیکھتے ہوئے کیلاش نے اپنا ٹویٹ واپس لے لیا۔


اپوزیشن کا حملہ


مہاراشٹر میں این سی پی لیڈر نواب ملک نے ایسے بیانات کو افسوسناک قرار دیا ہے۔ ملک نے کہا، 'شاہ رخ خان کو لے کر جس طرح کے بیانات بی جے پی کی طرف سے آ رہے ہیں وہ بہت المناک ہیں، ان کے خاندان نے آزاد ہند فوج میں ملک کے لئے لڑائی لڑی ہے، 47 میں یہاں کے مسلمانوں نے جناح کو نہیں گاندھی کو اپنا لیڈر منتخب کیا تھا۔


اپوزیشن کی مخالفت کسی ایک پارٹی کی طرف سے نہیں بلکہ تمام جماعتوں کے رہنماؤں کی جانب سے ہو رہی ہے۔ جے ڈی یو لیڈر اجے آلوک نے کہا کہ وزیر اعظم مودی کو اپوزیشن کی ضرورت ہی نہیں ہے، یہ لوگ خود ان کے لئے اپوزیشن کا کام کر رہے ہیں اور یہ سب پاگل لوگ ہیں، پورے پاگل ہیں، انہیں جیل میں ڈال کر تھرڈ ڈگری ٹارچر کرنا چاہئے تبھی یہ ملک کو بچا پائیں گے۔


کانگریس لیڈر منیش تیواری نے کہا کہ اس طرح کا بیان دکھ کی بات ہے۔ شاہ رخ کو پاکستان بھیجنے کے سوال پر منیش تیواری نے کہا کہ یہ سوال مودی سے پوچھا جانا چاہئے کہ شاہ رخ کو پاکستان جانا چاہئے یا ہندستان میں رہنا چاہئے۔ اسی خراب ذہنیت نے 1940 میں ہندوستان کی تقسیم کرائی تھی۔


جے ڈی یو کے ہی راجیہ سبھا ایم پی کیسی تیاگی نے پوچھا کہ ارون جیٹلی بتائیں، کیا سادھوی پراچی اور کیلاش وجے ورگی رواداری کی علامت ہیں؟

First published: Nov 04, 2015 12:46 PM IST