உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مدھیہ پردیش میں اپوزیشن جماعتوں نے کھولا سرکار کے خلاف محاذ

    Youtube Video

    راجدھانی بھوپال سے تحریک کا نہ صرف آغاز کیا گیا ہے بلکہ انیس سیاسی جماعتوں کے متحدہ محاذ کے ذریعہ بھوپال نیلم پارک میں دھرنا دیکر حکومت کے خلاف اپنے سیاسی اتحاد کا بھی مظاہرہ کیاگیاہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    مدھیہ پردیش میں بی جے پی حکو مت کی عوام مخالف پالیسی کے خلاف اپوزیشن جماعتوں نے متحد ہوکر تحریک شروع کردی ہے ۔ راجدھانی بھوپال سے تحریک کا نہ صرف آغاز کیا گیا ہے بلکہ انیس سیاسی جماعتوں کے متحدہ محاذ کے ذریعہ بھوپال نیلم پارک میں دھرنا دیکر حکومت کے خلاف اپنے سیاسی اتحاد کا بھی مظاہرہ کیاگیاہے۔ اپوزیشن جماعتیں عوامی مسائل کو لیکر متحدہ محاذکو جہاں وقت کی ضرورت سے تعبیر کر رہی ہیں وہیں حکومت نے اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد کو حاشیہ پر کھڑے لوگوں کی جماعت سے تعبیر کیا ہے ۔ مدھیہ پردیش میں یہ پہلا موقعہ ہے جب حکومت کے خلاف سیاسی طور پر اتنے بڑے محاذ کی تشکیل دی گئی ہے ۔کانگریس کے ساتھ اتحاد میں شامل سیاسی جماعتوں نے بھوپال نیلم پارک میں منعقدہ دھرنے میں شامل ہوکر حکومت کی عوام مخالف پالیسی کے خلاف اپنی ناراضگی کا اظہار کیا۔ سینئر کانگریس لیڈر ومدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلی دگ وجے سنگھ کہتے ہیں کہ یہ اتحاد مہنگائی ،بے روزگاری،سرکاری املاک یا ادارے کو فروحت کرنااور ہر طرح سے آئینی اداروں پر دباؤ ڈال کرفیصلہ کو متاثر کرنا اور اپنے من کی بات کرنے کے ہم سبھی خلاف ہیں ۔یہ دھرنا اسی لئے دیا گیا ہے تاکہ حکومت کو بتایا جاسکے کہ وہ جو کچھ من مانی کر رہے ہیں وہ نہ صرف آئین بلکہ ملک کی عوام کے وسیع مفادات کے بھی خلاف ہے۔
    بھوپال ایم ایل اے عارف مسعود کہتے ہیں کہ ہمیں خوشی ہے کہ کانگریس حکومت کی من مانی کے خلاف جو تحریک چلا رہی تھی اب اس میں دوسری سیاسی جماعتیں بھی شامل ہوگئی ہیں ۔ یہ جھوٹوں کی سرکار ہے ۔ یہ من کی بات تو کرتے ہیں مگر ڈھنگ کا کوئی بھی کام نہیں کرتے ہیں ۔آج نہ صرف آئین اور آئینی اداروں کا وجود خطرے میں ہے بلکہ ملک انکی من مانی کے سبب اتنا خستہ حال ہوگیا ہے کہ سرکاری اداروں کو فروخت کرکے گھی پیا جا رہا ہے ۔
    کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا مدھیہ پردیش کے سکریٹری شیلندر شیلی کہتے ہیں کہ عوام کو گمراہ کرکے اس سرکار نے اپنی جتنی من مانی کی ہے اتنا کبھی نہیں ہواہے۔ غریب اور مزدور طبقے کے لئے عرصہ حیات تنگ ہوگیا ہے ۔ ہجومی تشدد کے ذریعہ ایک خاص طبقہ بلکہ مسلم کشی کی جا رہی ہے ۔ملک میں آئین کی بحالی ہو،بے روزگاری کا خاتمہ ہو،پیٹرول ،ڈیزل اور رسوئی گیس کی بڑھی ہوئی قیمتیں واپس لی جائیں اس کے خلاف یہ دھرنا شروع کیاگیا ہے ۔ یہ دھرنا تیس ستمبر تک الگ الگ مرحلے میں جاری رہے گا ۔ کسانوں کے مسائل کو لیکر ستائیس ستمبر کو ملک گیر بند کا اعلان کیاگیا ہے ۔آپ سبھی بھی اپیل ہے کہ اس بند میں شامل ہوں کیونکہ یہ زرعی قانون صرف کسانوں ہی نہیں بلکہ عوام کے بھی خلاف ہے ۔

    وہیں مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے پیں کہ یہ ان سیاسی جماعتوں کا اتحاد ہے جنہیں ملک کی عوام نے ان کے پاکھنڈ کے لئے ٹھکرادیا ہے ۔ یہ سیاسی جماعتیں حاشیہ پر ہیں اور اب عوام کو گمراہ کرکے یہ اپنا سیاسی وجود بچانا چاہتی ہیں ۔ملک میں مہنگائی بڑھنے کا سبب کانگریس حکومتوں کی غلط پالیسی رہی ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: