ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

سی اے اے پر وزیر اعظم مودی نے کہا : اس قانون سے ملک کے کسی بھی مسلمان کی شہریت پر خطرہ نہیں

وزیر اعظم نریندرمودی نے کہا کہ اس قانون سے ملک میں ہندو، مسلمان ، سکھ ، عیسائی اور پارسی کسی بھی فرقہ کے لوگوں کی شہریت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 17, 2019 08:11 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سی اے اے پر وزیر اعظم مودی نے کہا : اس قانون سے ملک کے کسی بھی مسلمان کی شہریت پر خطرہ نہیں
وزیر اعظم مودی جھارکھنڈ کے دمکا میں ایک ریلی کے دوران ۔ تصویر : اے این آئی ٹویٹر ۔

وزیر اعظم نریندرمودی نے کانگریس اور بایاں محاذ پر شہریت ترمیمی قانون ( سی اے اے ) کی وجہ سے مسلمانوں کو خوف زدہ کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ اس قانون سے ملک میں ہندو، مسلمان ، سکھ ، عیسائی اور پارسی کسی بھی فرقہ کے لوگوں کی شہریت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ وزیر اعظم مودی نے جھارکھنڈ کے برہیٹ اسمبلی حلقہ کے بھوگنا ڈیہہ میں انتخابی تشہیرکیلئے اپنی آخری انتخابی ریلی کو خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کانگریس اور بایاں محاذ نے سی اے اے کی وجہ سے مسلمانوں کو خوف زدہ کرنے میں اپنی پوری طاقت جھونک دی ہے ۔ لیکن میں جھارکھنڈ میں بہاردوں کی اس سرزمین سے ملک اور ہر ایک شہری کو پھر سے یقین دلاتا ہوں کہ اس قانون کے اثر انداز ہونے سے ملک کے کسی بھی فرقہ کے شہری چاہے وہ ہندو، مسلمان ، سکھ ، عیسائی یا پارسی ہوں کی شہریت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا ۔


وزیر اعظم مودی نے کہا کہ شہریت ترمیمی قانون پاکستان ، افغانستان اور بنگلہ دیش میں مذہبی تشدد کے شکار ہوئے ہندو، سکھ ، عیسائی ، پارسی ، بودھ اور جین فرقہ کے لوگوں کے ہندوستان آنے کیلئے بنایا گیا ہے ۔ یہ قانون ان کے لئے بنایا گیا ہے جو ان ملکوں میں سالوں سے قابل رحم حالت میں ہیں اور ان کے پاس کوئی راستہ نہیں بچا ہے ۔ انہوں نے سوالیہ لہجے میں کہاکہ میں پوچھنا چاہتا ہوں کہ اس سے مسلمان یا ملک کے کسی بھی شہری کے حقوق کو کہا چھینا جارہا ہے ۔ یہ قانون کسی ہندوستانی کا حق نہیں چھینتا ، لیکن پھر بھی کانگریس اور اس کے حامی مسلمانوں کو خوف زدہ کر کے سیاسی کھچڑی پکانا چاہتے ہیں۔


وزیراعظم نے لوگوں کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس کی تقسیم کرو اور سیاست کرو کی پالیسی سے ملک ایک بار تقسیم ہوچکا ہے ۔ یہ وہی کانگریس ہے جس نے لاکھوں دراندازوں کو ہندوستان میں داخل ہونے دیا اور ان کا ووٹ بینک کی طرح استعمال کیا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے لوگوں کو ڈرانے اور جھوٹ بات پھیلانے کو ہی اپنی سیاست کی بنیاد بنا لیا ہے ۔ وہ عوام کی خدمت کرنا نہیں بلکہ لوگوں کو ڈراکر اور جھوٹ پھیلا کر سیاست کرنے کی اپنی عادت پر آج بھی قائم ہے ۔


وزیر اعظم مودی نے سی اے اے کی مخالفت میں طلبہ و طالبات کے مظاہرے پر کانگریس اور اس کے حامیوں پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ جس غریب ماں  باپ نے محنت اور مزدوری کر کے اپنے بچوں کو پڑھانے کیلئے بھیجا ہے ان کے خوابوں کو تہس نہس کیوں کررہے ہو ۔ کانگریس ملک کے نوجوانوں کو برباد کرنے والا کھیل کھیلنا بند کردے ۔ اس سے کسی کا بھلا نہیں ہوگا۔

وزیراعظم نے مظاہرہ کر رہے طلبہ سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ میں ملک کی یونیورسیٹیوں اور کالجوں میں پڑھنے والے طلبہ و طالبات سے گذارش کرتا ہوں کہ آپ اپنی زندگی کے مقصد اور اپنے مقام کی اہمیت کو سمجھیں ۔ حکومت کی پالیسیوں کو لے کر آپ بحث کریں ۔ اگر آپ کو کچھ غلط لگتا ہے تو اس سے جمہوری طریقے سے حکومت تک پہنچائیں ۔ حکومت آپ کے مسائل کو سنے گی بھی اور اسے سمجھے گی بھی ۔ لیکن آپ کو یہ بھی سمجھنا ہوگا کہ کہیں کچھ جماعت مبینہ اربن نکسل اور اپنے آپ کو اسکالر کہنے والے لوگ آپ کے کندھے پر بندوق رکھ کر اپنا سیاسی الو تو سیدھا نہیں کر رہیں ۔ آپ کی بربادی کے پیچھے یہ سازش تونہیں ہے ۔
First published: Dec 17, 2019 08:11 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading