ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کے اعداد و شمار پر شروع ہوئی سیاست

سرکاری اعداد وشمار میں بھوپال میں کورونا کی وبائی بیماری کی ابتدا سے لے کر اب تک چورانوے لوگوں کی موت ہوئی ہے ، لیکن شرح اموات کو لے کر جب سرکاری اعداد وشمار سے قبرستان اور شمشان کے اعداد و شمار کا موازنہ کرتے ہیں تو دونوں میں دو گنے کا فرق دیکھنے کو ملتا ہے ۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش : کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کے اعداد و شمار پر شروع ہوئی سیاست
مدھیہ پردیش : کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کے اعداد و شمار پر شروع ہوئی سیاست

مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال میں کورونا وائرس کے بڑھتے معاملات نے سرکار اور انتظامیہ کے سرمیں درد پیدا کردیا ہے ۔ بھوپال میں کورونا وائرس کے مریضوں کی مجموعی تعداد بڑھ  کر دوہزار سات سو ستر ہوگئی ہے ۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق بھوپال میں کورونا سے ابتک چورانوے لوگوں کی موت ہوچکی ہے جبکہ دوہزار اڑتالیس لوگ اب تک کورونا کی وبائی بیماری سے صحتیاب  بھی ہوچکے ہیں ۔


بھوپال میں کورونا کے معاملات کس تیزی سے بڑھ رہے ہیں ، اس کا اندازہ اس سے لگایا جا سکتا ہے کہ صرف جون کے مہینے میں کورونا کے ایک ہزار چار سو تینتالیس معاملات سامنے آچکے ہیں ۔ سرکاری اعداد وشمار میں بھوپال میں کورونا کی وبائی بیماری کی ابتدا سے لے کر اب تک چورانوے لوگوں کی موت ہوئی ہے ، لیکن شرح اموات کو لے کر جب سرکاری اعداد وشمار سے قبرستان اور شمشان کے اعداد و شمار کا موازنہ کرتے ہیں تو دونوں میں دو گنے کا فرق دیکھنے کو ملتا ہے ۔


واضح رہے کہ بھوپال میں کورونا مریضوں کی  تدفین اور ان کی آخری رسومات کے لئے انتظامیہ کی جانب سے شمشان اور قبرستان کی نشاندہی کی گئی ہے ۔ شہر میں کورونا سے جتنے بھی لوگوں کی موت ہوئی ہے ، ان کی تدفین اور آخری رسومات انہیں قبرستان اور شمشان گھاٹوں میں کی گئی ہے ، جس کی انتظامیہ کے ذریعہ نشاندہی کی گئی ہے۔ اس حوالے سے موازنہ کریں تو ہمیں دیکھنے کو ملتاہے کہ بھوپال کے جھدا قبرستان میں کورونا سے مرنے والے چھیاسی اشخاص کی تدفین کی گئی ہے جبکہ شبھاش نگر وشرام گھاٹ میں سولہ اور بھد بھدا وشرام گھاٹ میں اب تک کورونا سے مرنے والے 80 لوگوں کی آخری رسومات ادا کی گئی ہیں ۔ جبکہ سرکاری اعداد و شمار میں کل شرح اموات چورانوے ہی بتائی جاتی ہے ۔


بھوپال میں کورونا کے معاملات کس تیزی سے بڑھ رہے ہیں ۔
بھوپال میں کورونا کے معاملات کس تیزی سے بڑھ رہے ہیں ۔


جھدا قبرستان کمیٹی کے متولی ریحان گولڈن کہتے ہیں کہ جھدا قبرستان میں انہیں لوگوں کی میت تدفین کے لئے آتی ہے ، جن کی کورونا سے موت ہوئی ہے ۔ اس قبرستان کو ضلع انتظامیہ کے ذریعہ متعین کیا گیا ہے ۔ اب تک جھدا قبرستان میں چھیاسی لوگوں کی تدفین کی جا چکی ہے ۔ کورونا سے اموات زیادہ ہو رہی ہیں ، اس لئے احتیاط کے طور پر ہم نے زیادہ قبریں کھدوا کر رکھ رکھی ہیں ۔ تاکہ بارش میں لوگوں کو پریشان نہ ہونا پڑے ۔ کورونا مہلوکین کی تدفین کے اخراجات کے لئے جو سرکار نے فی مہلوک پانچ ہزار کا وعدہ کیا تھا ، اس کی ادائیگی کے لئے ہم نے بھی اور بھدبھدا وشرام گھاٹ کے لوگوں نے بھی ضلع انتظامیہ کو خط لکھا ہے ۔

وہیں بھوپال سینٹرل ایم ایل اے عارف مسعود نے اس معاملہ کو لیکر سی ایم شیوراج سنگھ کو کٹہرے میں کھڑا کیا ہے ۔ عارف مسعود کہتے ہیں کہ سرکار کورونا کے معاملات میں نہ صرف صوبہ کے لوگوں کو گمراہ کر رہی ہے ، بلکہ کورونا مہلوکین کی آخری رسومات کیلئے جو رقم طے کی گئی ہے ، وہ بھی ادا نہیں کر رہی ہے ۔ بھوپال میں اب تک کل آٹھ مہلوکین کی آخری رسومات کے لئے ادائیگی کی گئی ہے جبکہ سرکار نے کورونا کے قہر میں فی مہلوک کی تدفین  یا ارتھی  کے اخراجات کے لئے پانچ ہزار دینے کا وعدہ کیا تھا ۔ عارف مسعود کہتے ہیں کہ اگر سرکار اپنے وعدے سے ہٹ رہی ہے اور وہ یہ کہہ دیتی ہے کہ اس نے جھوٹا وعدہ کیا تھا تو بھوپال میں کورونا سے مرنے والے ہر شخص کی تدفین اور ارتھی کا انتظام وہ اپنے پاس سے کریں گے ۔

وہیں مدھیہ پردیش بی جے پی کے نائب صدر رامیشور شرما  کورونا مہلوکین کے اخراجات سے حکومت کی چشم پوشی اور شرح اموات میں بڑے فرق کو کانگریس کی سازش سے تعبیر کرتے ہیں ۔ رامیشور شرما کہتے ہیں کہ سرکار کورونا کی وبائی بیماری کے خاتمہ کے لئے اپنے عہد کی پابند ہے ۔ بھوپال سے کل کورونا مہم کا آغاز ہوگیا ہے اور اسی کی کامیابی کی بنیاد پر یکم جولائی سے پورے مدھیہ پردیش میں مہم چلائی جائے گی ۔ کورونا کے ہر پہلو پر سرکار کی گہری نظر ہے۔ کسی چیز کو چھپانا اور بڑھانا یہ کانگریس کا کام ہے ۔ بی جے پی جو کہتی ہے وہ کرتی ہے ۔
First published: Jun 28, 2020 11:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading