ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

کورونا قہر میں مدد کیلئے بڑھے ہاتھ ، سماجی تنظیموں نے ضرورت مند روزہ داروں کے گھر پہنچایا سامان

ہیومنٹی ویلفیئر آرگنائزیشن کے صدر ندیم خان کہتے ہیں کہ ضرورت مند انسان کی مدد کے لئے ماشا اللہ چھ سال قبل کام شروع کیا تھا اور اللہ کا شکر ہے کہ ہم ہر ماہ کے پہلے اتوار کو غریب ، یتیم ، بیوہ اور ضرورت مندوں کو راشن تقسیم کرتے ہیں ۔ مگر کورونا قہر میں رمضان کی آمد کے پیش نظر آج ہم راشن کے ساتھ ماہ رمضان کی ضرورت کے سامان تقسیم کررہے ہیں ۔

  • Share this:
کورونا قہر میں مدد کیلئے بڑھے ہاتھ ، سماجی تنظیموں نے ضرورت مند روزہ داروں کے گھر پہنچایا سامان
کورونا قہر میں مدد کیلئے بڑھے ہاتھ ، سماجی تنظیموں نے ضرورت مند روزہ داروں کے گھر پہنچایا سامان

بھوپال : کورونا قہرانسانی معاشرے پر اس طرح قہر بن کر ٹوٹا ہے کہ اس سے نہ صرف عوامی رشتے متاثر ہوئے ہیں بلکہ کورونا قہر اور اس سے پیدا ہونے والی مشکلات نے انسانی نفسیات کوبھی بدل کررکھ دیا ہے ۔ اس کے باوجود سماج میں کچھ لوگ ایسے ہیں جو ضرورتمندوں سے یہی کہتے ہیں کہ اپنے دکھ مجھے دیدو۔ راجدھانی بھوپال میں کورونا قہر کے سبب جہاں کورونا کرفیو کا نفاذ جاری ہے ، وہیں سماجی تنظیموں نے کورونا قہر کی مشکلات کے بیچ ضرورت مندوں بالخصوص روزہ داروں کی مدد کے لئے اپنا ہاتھ آگے بڑھایا ہے۔


یوں تو راجدھانی بھوپال میں بہت سے تنظیمیوں کے ذریعہ خدمت کا کام کیا جاتا ہے، لیکن عوام کے بیچ کورونا قہر میں جو مقام  ہیومنٹی ویلفیر آرگنائزیشن نے اپنے منفرد کام سے حاصل کیا ہے ، وہ دوسری سماجی تنظیمیں نہیں حاصل کر سکیں ۔ شہر کے یتیم اور بیوہ خواتین کی مدد کے لئے یوں تو تنظیم کے ذریعہ ہر ماہ کے پہلے اتوار کو سروے کر کے بلا لحاظ قوم وملت راشن پہنچایا جاتا ہے ، مگر ماہ رمضان کی آمد اور شہر میں کورونا کرفیو کا نفاذ ہونے کے سبب سماجی تنظیم نے اپنے شیڈیول میں تبدیل کی ۔ تاکہ یتیموں اور بیوہ خواتین اور ضرورت مند لوگوں تک رمضان کے چاند سے پہلے پہلے راشن پہنچ جائے اور وہ لوگ بھی ماہ رمضان میں سحر اور افطات کا اہتمام کر سکیں ۔


ہیومنٹی ویلفیئر آرگنائزیشن کے صدر ندیم خان کہتے ہیں کہ ضرورت مند انسان کی مدد کے لئے ماشا اللہ چھ سال قبل کام شروع کیا تھا اور اللہ کا شکر ہے کہ ہم ہر ماہ کے پہلے اتوار کو غریب ، یتیم ، بیوہ اور ضرورت مندوں کو راشن تقسیم کرتے ہیں ۔ مگر کورونا قہر میں رمضان کی آمد کے پیش نظر آج ہم راشن کے ساتھ ماہ رمضان کی ضرورت کے سامان تقسیم کررہے ہیں ، ہمارا کام خدمت کرنا ہے ، اللہ ہم سے کام لے رہا ہے اور ہم عوامی خدمت کے ذریعہ خدا کو راضی کرنے کا کام کررہے ہیں ۔


تنظیم کے ذمہ دار عمران خان اور صائم خان کہتے ہیں کہ کسی تک راشن پہنچانے سے قبل ہماری ٹیم پہلے اس کی تصدیق کرتی ہے ۔ تاکہ حق دار کے پاس اس کا حق پہنچ سکے ۔ ایسا نہیں ہے کہ یہ ہم نے پہلی بار کیا ہے بلکہ ہم چھ سال سے یہ کام کر رہے ہیں ، مگر کورونا قہر نے لوگوں کی مشکلات میں جس طرح سے اضافہ کیا ہے اس سے ہماری ذمہ داریاں اور بڑھ گئیں ہیں ۔

کوروناقہر میں ہمارا کام بھی متاثر ہوا ہے ، جو اہل خیر حضرات ہماری مدد کرتے ہیں پچھلے ایک سال میں جس طرح سے ان کا کاروبار متاثر ہوا ہے اس سے سماجی فلاح کے کام میں بھی کچھ کمی ہے ۔اور محنت کریں گے اور جہاں تک ہوگا ضرورت مندوں کی مدد کریں گے ۔ جیسے رمضان کا راشن ہم پہنچا رہے ہیں ، اسی طرح سے عید اور دیوالی پر بھی ہم راشن پہنچاتے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 13, 2021 10:57 PM IST